உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Organ Transport: اعضاء کی فوری منتقلی کیلئے ڈرون ٹیکنالوجی سے چلنے والا نیا پروٹوٹائپ لانچ، جانیے تفصیلات

    مرکزی وزیر نتن گڈکری (Nitin Gadkari)

    مرکزی وزیر نتن گڈکری (Nitin Gadkari)

    Organ Transplantation: گڈکری نے کہا کہ ہمیں جلد ہی اعضاء کی نقل و حمل کی لاجسٹکس میں جدت کی ضرورت ہوگی اور ایسی ہی ایک خوش آئند تجویز ڈرون کا استعمال ہے۔ یہ نقل و حمل کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے بہت ہی جدید طریقہ ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Hyderabad | Mumbai | Kolkata [Calcutta] | Jammu
    • Share this:
      Organ Transplantation: مرکزی وزیر برائے روڈ ٹرانسپورٹ اور ہائی ویز نتن گڈکری (Nitin Gadkari) نے ہفتے کے روز اسپتالوں میں انسانی اعضاء کی فوری پیوند کاری (transportation of human organs) کی سہولت کے لیے ہندوستان کے پہلے پروٹو ٹائپ کی نقاب کشائی کی ہے، جو کہ ڈرون سے انسانی اعضاء کی منتقلی میں مدد فراہم کرے گا۔ اس پروٹو ٹائپ کے تحت کٹے ہوئے اعضاء کو ہوائی اڈے سے اسپتال منتقل کرنے کے لیے ڈرون کا استعمال کیا جائے گا۔ یہ عمل جتنی جلد ممکن ہو، اس کو کیا جانا ضروری ہے۔ جب کہ سڑک کے ذریعہ یا طیارے سے منتقلی کی وجہ سے دیر لگ سکتی ہے۔

      ایم جی ایم ہیلتھ کیئر کے ڈائریکٹر ڈاکٹر پرشانت راجگوپالن (Dr Prashanth Rajagopalan) نے پروٹوٹائپ ڈرون ٹیکنالوجی کو مشترکہ طور پر تیار کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ فی الحال ڈرون کا استعمال اعضاء پر مشتمل باکس کو 20 کلومیٹر کی دوری تک لے جانے کے لیے کیا جا سکتا ہے۔ اعضاء کی منتقلی کے لیے شہر میں قائم ڈرون کمپنی کے ساتھ معاہدہ کیا گیا ہے۔ اس کا مقصد اعضاء کی آخری میل تک نقل و حمل میں انقلاب لانا ہے۔

      گڈکری نے نشاندہی کی کہ اعضاء کی نقل و حمل کے لیے لاجسٹکس کا مسئلہ بہتر زمینی اور ہوائی رابطے کے ذریعے حل کیا جا سکتا ہے اور انھوں نے کہا کہ ان کی وزارت نے پہلے ہی بنیادی ڈھانچے کو بہتر بنانے کے لیے اقدامات شروع کر دیے ہیں۔ سڑک کے بنیادی ڈھانچے کے منصوبے جیسے بھارت مالا پریوجنا، ہائی ویز سیکٹر کے لیے یہ پروگرام پورے ہندوستان میں اعضاء کی نقل و حمل کے لیے ایک بہت بڑا اثاثہ ہوگا۔

      یہ بھی پڑھیں:

      ’’نصیر الدین شاہ، شبانہ اعظمی اور جاوید اختر ٹکڑے ٹکڑے گینگ کے سلیپر سیل کے ممبر‘‘ Narottam Mishra

      گڈکری نے کہا کہ ہمیں جلد ہی اعضاء کی نقل و حمل کی لاجسٹکس میں جدت کی ضرورت ہوگی اور ایسی ہی ایک خوش آئند تجویز ڈرون کا استعمال ہے۔ یہ نقل و حمل کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے بہت ہی جدید طریقہ ہے۔ میں اس تحقیق اور ترقی کا حصہ بننے کے لیے ایم جی ایم ہیلتھ کیئر کی خدمات کا اعتراف کرتا ہوں۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Pakistani Taliban: اسلام آبادکےساتھ پاکستانی طالبان نےجنگ ​​بندی کی ختم، معاہدےکی خلاف ورزی کالگایاالزام

       

      وزیر نے کہا کہ ہم دہلی سے دہرادون تک ایکسپریس وے پروجیکٹ کو شروع کرنے کے عمل میں ہیں، جس سے سفر کا وقت کم ہو جائے گا۔ میں اعضاء کی نقل و حمل کے بارے میں بہت زیادہ محتاط اور حساس ہوں اور میں اس پر آپ کے لیے کس طرح مددگار ہو سکتا ہوں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: