உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    News18 India Chaupal: رندیپ سرجے والا نے کہا- پارٹیوں کو لے کر بدلتی رہتی ہے ممتا بنرجی کی پسند

    رندیپ سرجے والا نے کہا- پارٹیوں کو لے کر بدلتی رہتی ہے ممتا بنرجی کی پسند

    رندیپ سرجے والا نے کہا- پارٹیوں کو لے کر بدلتی رہتی ہے ممتا بنرجی کی پسند

    News18 India Chaupal: اترپردیش اسمبلی انتخابات کے پیش نظر کانگریس ترجمان رندیپ سرجے والا نے کہا کہ یوپی کی عوام کیا فیصلہ کرے گی، نہیں پتہ، لیکن گزشتہ پانچ سال سے اپوزیشن کا کردار کانگریس اور پرینکا گاندھی واڈرا ہی نبھا رہی ہیں۔ سرجے والا نے کہا کہ کانگریس کی واپسی کی شروعات اترپردیش سے ہوگی۔

    • Share this:
      نیوز 18 کے خاص پروگرام چوپال (News18 India Chaupal) میں کانگریس ترجمان رندیپ سرجے والا (Randeep Surjewala) نے مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی (West Bengal CM Mamata Banerjee) پر جم کر تنقید کی۔ رندیپ سرجے والا نے کہا کہ پارٹیوں کو لے کر ممتا بنرجی کی پسند بدلتی رہتی ہے۔ واضح رہے کہ ممتا بنرجی ان دنوں پارٹی کی توسیع اور تیسرے محاذ کی تشکیل کے سلسلے میں ممبئی کے دورے پر ہیں، جہاں انہوں نے این سی پی سربراہ اور سابق مرکزی وزیر شرد پوار سمیت تمام لیڈروں سے ملاقات کی ہے۔ رندیپ سرجے والا نے کہا کہ ’ممتا جی نے 1999 سے کئی بار این ڈی اے کی حکومت میں بھی حصہ لیا اور تب کہا کہ این ڈی اے ختم، پھر یوپی اے میں آئیں اور اب انہیں یوپی اے ٹھیک نہیں لگتی۔ سیاست میں متحرک ہونا ضروری ہے‘۔ ممتا بنرجی نے بدھ کو ہی شرد پوار سے ملاقات کے بعد کہا ہے کہ یوپی اے کا وجود ختم ہوگیا ہے۔

      مہنگائی ہٹاو ریلی کرے گی کانگریس

      رندیپ سرجے والا نے چوپال میں بتایا کہ حکومت نے کانگریس کی مہنگائی ہٹاو ریلی کی اجازت واپس لے لی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہلی میں اجازت نہیں ملی، تو جے پور میں کریں گے اور 12 دسمبر کو ہی کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پورا ملک سڑک پر، کسان قرض معافی کے لئے، نوجوان روزگار کے لئے، گھریلو خاتون رسوئی گیس کے لئے اور ہم ملک کے لئے سڑکوں پر ہیں۔ سرجے والا نے کہا کہ تانا شاہ جھکتا ہے، جھکانے والا چاہئے۔

      اترپردیش میں کانگریس ہی اہم اپوزیشن پارٹی

      وہیں اترپردیش اسمبلی انتخابات کے پیش نظر کانگریس ترجمان رندیپ سرجے والا نے کہا کہ یوپی کی عوام کیا فیصلہ کرے گی، نہیں پتہ، لیکن گزشتہ پانچ سال سے اپوزیشن کا کردار کانگریس اور پرینکا گاندھی واڈرا ہی نبھا رہی ہیں۔ سرجے والا نے کہا کہ کانگریس کی واپسی کی شروعات اترپردیش سے ہوگی۔ ہر آدمی میں کانگریس کے نظریہ کو بیدار کرنے کی کوشش تاکہ ہمیں بیساکھی کی ضرورت نہ پڑے۔ انہوں نے کہا کہ ہر الیکشن میں حالات مختلف ہوتے ہیں، یوپی میں لڑکی ہوں لڑسکتی ہوں، کا نعرہ اثر دکھا رہا ہے، پرینکا گاندھی کی موجودگی اب لوگوں کو بھی نظر آرہی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      کانگریس میں نظم وضبط کے ساتھ آزادی

      وہیں جی-23 کو لے کر رندیپ سرجے والا نے کہا کہ کوئی بھی خط لکھے، اس کی آزادی، لیکن پارٹی کے نظم و ضبط سے متلعق باتوں پر تبادلہ خیال ٹی وی پر نہیں، پارٹی کے اندر ہی ہوسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس ملک کے لئے لڑائی لڑ رہی ہے۔ ملک اچھا رہے، یہ طے کر رہی ہے۔ کانگریس سے بڑا ملک ہے۔ انہوں نے کہا کہ پالیسی پر اختلافات کو عام کیا جا سکتا ہے، یہ ڈسپلن نہیں ہے۔ رندیپ سرجے والا نے کہا کہ ملک کو راستہ بنانا ہے، کانگریس سے بڑا ملک ہے، جن لوگوں نے ملک کی آزادی کی لڑائی نہیں لڑی اور 50 سال تک ترنگے کا احترام بھی نہیں کیا، وہ ملک کی بات کرنے لگے، یہ کانگریس کی دین ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: