ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

آئی ایم اےدھوکہ دہی کامعاملہ :سرمایہ کاروں کوکب ملے گا انصاف؟ کتنے اورکب ملیں گے پیسے ؟

بنگلورو کی آئی ایم اے کمپنی کی دھوکہ دہی کے بعد ہزاروں خاندان ان دنوں بے حد پریشان ہیں۔ متاثرہ خاندانوں کو اُنکا پیسہ کب ملےگا؟ کتنا ملے گا؟کیسے ملے گا؟

  • Share this:
آئی ایم اےدھوکہ دہی کامعاملہ :سرمایہ کاروں کوکب ملے گا انصاف؟ کتنے اورکب ملیں گے پیسے ؟
بنگلورو کی آئی ایم اے کمپنی کی دھوکہ دہی کے بعد ہزاروں خاندان ان دنوں بے حد پریشان ہیں۔ متاثرہ خاندانوں کو اُنکا پیسہ کب ملےگا؟ کتنا ملے گا؟کیسے ملے گا؟

بنگلورو کی آئی ایم اے کمپنی کی دھوکہ دہی کے بعد ہزاروں خاندان ان دنوں بے حد پریشان ہیں۔ متاثرہ خاندانوں کو اُنکا پیسہ کب ملےگا؟ کتنا ملے گا؟کیسے ملے گا؟ اس سلسلے میں ابھی کوئی فیصلہ نہیں ہواہے۔ آئی ایم اے کیس کیلئے تشکیل دی گئی کامپٹنٹ اتھاریٹی کے خصوصی افسر ہرش گپتا نے اب تک کی صورتحال کا جائزہ پیش کیا۔ ہرش گپتا نے کہاکہ سی بی آئی کی رپورٹ کے مطابق آئی ایم اے کمپنی کوتقریبا 2 ہزار 800کروڑروپئے عوام کے پیسے ادا کرنےہیں۔


کئی لوگ امید بھی کھو بیٹے ہیں۔ اس معاملے میں چند سرکاری افسران اورسیاستدانوں پر قانون نے اپنا شکنجہ ضرورکساہے
کئی لوگ امید بھی کھو بیٹے ہیں۔ اس معاملے میں چند سرکاری افسران اورسیاستدانوں پر قانون نے اپنا شکنجہ ضرورکساہے


لیکن اب تک ای ڈی ، سی بی آئی کی جانب سے ضبط کئے گئے آئی ایم اے کمپنی کے اثاثہ جات کی قیمت صرف 450کروڑروپئے ہورہی ہے۔ہرش گپتا نے کہاکہ یہ ابھی کچا حساب ہے پکے حساب میں کمپنی کے ضبط کردہ اثاثوں کی مجموعی قیمت زیادہ کم بھی ہوسکتی ہے۔آئی اے ایس افسر ہرش گپتا نے کہاکہ ایس آئی ٹی، انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ اورسی بی آئی تینوں تحقیقاتی ایجنسیوں نے آئی ایم اے کے اثاثوں کو ضبط کیا ہے اور تمام پراپرٹیوں کی فہرست تیارکی ہے۔ تینوں چانچ ایجنسیوں کے تحت صبط کردہ پراپرٹیوں کی مارکیٹ ولیو تقریبا450 کروڑروپئے بن رہی ہے۔


آئی اے ایس افسر ہرش گپتا
آئی اے ایس افسر ہرش گپتا


ہرش گپتا نے کہا کہ اس پورے معاملے میں آئی ایم اے اِنویسٹروں کو مزید انتظار کرنے کی ضرورت ہے۔ عوام کو اُنکا پیسہ کب ملے گا؟ سرمایہ کی کُل رقم میں سے کتنا فیصد واپس لوٹایاجائےگا؟۔ عوام کو کیا کیا دستاویزات جمع کرنے ہونگے؟۔ کورٹ کی کارروائی مکمل ہونے کے بعد ہی ان تمام باتوں کی وضاحت ہوگی۔واضح رہے کہ حلال سرمایہ کاری کے نام پر عوام کوز بردست دھوکہ دینے والی بنگلورو کی آئی ایم اے کمپنی میں کئی ہزار خاندانوں نے اپنا سرمایہ لگایاتھا۔ نہ صرف چھوٹے اور متوسط تاجر بلکہ ملازمت پیشہ اور اعلی تعلیم یافتہ خاندانوں سے تعلق رکھنے والے لوگ بھی اس دھوکہ دہی کا شکار ہوئے ہیں۔ ہزاروں کی تعداد میں متاثرین اپنی محنت،مزدوری کا پیسہ حاصل کرنے کیلئے فکر مند ہیں۔

سرمایہ کاری کے نام پر عوام کوز بردست دھوکہ دینے والی بنگلورو کی آئی ایم اے کمپنی میں کئی ہزار خاندانوں نے اپنا سرمایہ لگایاتھا
سرمایہ کاری کے نام پر عوام کوز بردست دھوکہ دینے والی بنگلورو کی آئی ایم اے کمپنی میں کئی ہزار خاندانوں نے اپنا سرمایہ لگایاتھا


کئی لوگ امید بھی کھو بیٹے ہیں۔ اس معاملے میں چند سرکاری افسران اورسیاستدانوں پر قانون نے اپنا شکنجہ ضرورکساہے۔ لیکن اب تک متاثرین کو کوئی بڑی راحت ملتی ہوئی دکھائی نہیں دے رہی ہے۔ ہرش گپتا کی فراہم کردہ جانکار ی کے مطابق سرمایہ کاروں کو2800کروڑروپئے لوٹانے ہیں۔ جبکہ کمپنی کے اثاثہ جات کی قیمت صرف450کروڑ۔ یعنی لین دین میں زمین وآسمان کا فرق نظر آرہاہے۔
First published: Feb 09, 2020 08:28 PM IST