உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل

    دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل-(تصویر:نیوز18اردوگرافکس)۔

    دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل-(تصویر:نیوز18اردوگرافکس)۔

    نیوز18 اردو کے ہاتھ لگے ہیں اہم دستاویزات۔ دہلی اقلیتی کمیشن کی جانچ کمیٹی نے بھی جاری کی اپنی رپورٹ

    • Share this:
      دہلی میں غیر قانونی طریقے سے عبادت گاہیں تعمیر کرنے کے معاملے میں نیوز18 اردو کے ہاتھ اہم دستاویزات لگے ہیں۔ حق جانکاری قانون کے ذریعہ ایم سی ڈی سے حاصل کی گئی جانکاری کے مطابق دہلی کے شاہدرا زون میں پارکوں پر قبضہ کرکے 184 مندر بنائے گئے ہیں۔ اسکے علاوہ پارکوں پرغیر قانونی قبضہ کر کے11 مساجد اور مزار،2 گرجا گھر اور4 گرودوارے بھی بنائے گئے ہیں۔

      دہلی میں غیر قانونی طریقے سےبنائےگئے مذہبی عبادت گاہوں کا انکشاف ہوگیاہے۔واضح رہے کہ اس پہلے مغربی دہلی میں سرکاری زمین پرمساجد کی مبینہ تعمیرکا الزام لگاتےہوئے بی جے پی رکن پارلیمان پرویش صاحب سنگھ ورما نے دہلی کے لیفٹنٹ گورنر انل بیجل کو خط لکھاتھا ۔جس کے بعد اس پورے معاملے پرعام آدمی پارٹی ۔ کانگریس اور مسلم تنظیمیں پرویش صاحب سنگھ ورما کی مخالفت میں آگے آئی تھیں۔

      دہلی اقلیتی کمیشن نے بی جے پی ممبر پارلیمنٹ پرویش ورما کے دعوے کی جانچ کے لیے ایک تحقیقاتی کمیٹی مقرر کی تھی۔  ورما نے دعویٰ کیا تھا کہ مغربی دہلی میں سرکاری زمینوں پر مسجدیں بن رہی ہیں۔ کمیشن نے اس معاملہ میں ایک پانچ رکنی کمیٹی بنائی تھی۔ جس کے صدر معروف حقوق انسانی کے ایکٹیو سٹ اویس سلطان خان ہیں اور ممبران گور میندر سنگھ مٹھارو (ممبر سکھ گردوارہ پربندھک کمیٹی)، ڈاکٹر ڈنزیل فرنانڈیز(سوشل سائنٹسٹ)، انکور اوٹو (ایکٹیوسٹ حقوق انسانی) اور رئیس احمد (صحافی) ہیں۔ کمیٹی نے دہلی کے مختلف علاقوں اور بالخصوص مغربی دہلی کے علاقوں کا جائزہ لیاہے اور جلدہی اس کی رپورٹ بھی منظرعام پرآگئی ہے۔

      دہلی اقلیتی کمیشن کے چیئرمین ڈاکٹر ظفر الاسلام خان نے کہا کہ دہلی میں سرکاری زمینوں پر غیر قانونی تعمیرات کا مسئلہ پرانا ہے لیکن اسے کسی مذہب سے جوڑنا بالکل غلط ہے۔ کمیشن سرکاری زمینوں پر کسی غیر قانونی قبضے کی تایید نہیں کرتا لیکن مسئلے کو جس طرح سے اٹھایا گیا ہے اس سے ایک خاص سماج کے خلاف ماحول بنانے کی کوشش کی گئی ہے جو کہ قابل قبول نہیں ہے

      دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل-(تصویر:نیوز18اردو)۔
      دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل-(تصویر:نیوز18اردو)۔


      دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل-(تصویر:نیوز18اردو)۔
      دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل-(تصویر:نیوز18اردو)۔


      دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل-(تصویر:نیوز18اردو)۔
      دہلی : غیر قانونی طریقے سے تعمیر کی گئی عبادت گاہیں۔ 184 منادر اور11 مساجد بھی شامل-(تصویر:نیوز18اردو)۔
      First published: