ہوم » نیوز » وطن نامہ

نیوز18- آئی پی ایس اوایس کاایگزٹ پول: جنوبی ہند میں کس ریاست میں کس کوملی کتنی سیٹیں ۔ دیکھیں یہاں

ملک کی سیاست میں جنوبی ہند کی ریاستیں بھی اہم رول ادا کرتی ہے۔جنوبی ہندمیں پانچ ریاستیں ہیں جن میں آندھراپردیش۔ تلنگانہ ۔ کرناٹک۔ تمل ناڈو اور کیرالاشامل ہے

  • Share this:
نیوز18- آئی پی ایس اوایس کاایگزٹ پول: جنوبی ہند میں کس ریاست میں کس کوملی کتنی سیٹیں ۔ دیکھیں یہاں
نیوز 18 اپسوس ایگزٹ پول 2019


ملک کی سیاست میں جنوبی ہند کی ریاستیں بھی اہم رول ادا کرتی ہے۔جنوبی ہندمیں پانچ ریاستیں ہیں جن میں آندھراپردیش۔ تلنگانہ ۔ کرناٹک۔ تمل ناڈو اور کیرالاشامل ہے۔ تمل ناڈو میں 38، آندھراپردیش میں 25، تلنگانہ میں 17،کرناٹک میں 28 اورکیرالا میں 20 لوک سبھا سیٹیں ہیں۔ آندھراپردیش میں خصوصی درجہ کے مطالبہ کو لیکرووٹ ڈالے گئے ہیں۔


وہیں تلنگانہ میں وزیراعلیٰ کے چندرشیکھرراؤ نے غیرکانگریس اور غیربی جے پی والے تیسرے محاذ تشکیل دینے پرروزدیتے ہوئے انتخابات میں حصہ لیاہے۔ یہاں مہنگائی، بے روزگاری، اور کسانوں کے مسائل پر انتخابات ہوئے ۔جبکہ پڑوسی ریاست وہیں کرناٹک میں خشک سالی، بے روزگاری اور کسانوں کے مسائل انتخابات اثراندازہوئے۔اسطرح تمل ناڈو کے 38 سیٹوں پرپہلی بارکرونانندھی اورجےلیلیتا کے بغیرانتخابات ہوئے ہیں۔ یہاں ڈی ایم کے، سی پی آئی، سی پی ایم سمیت دیگرپانچ علاقائی پارٹیوں نے کانگریس کے اتحادکیاہے۔ وہیں اے آئی اے ڈی ایم کے نے بی جے پی کی قیادت والے این ڈی اے کے ساتھ انتخابی مفاہمت کی ہے۔ وہیں کیرالا میں لفٹ ڈیموکرٹیک فرنٹ ،کانگریس کی قیادت والےیونائیٹیڈ ڈیموکریٹک فرنٹ کے علاوہ این ڈی اے کے درمیان سہ رخی مقابلہ ہوا۔


جنوبی ہند کی 128 سیٹوں پرہوئے لوک سبھا انتخابات میں تمام پارٹیوں نے زیادہ سے زیادہ سیٹیں حاصل کرنے کے لیے جدوجہد کی ۔17ویں لوک سبھا انتخابات کو لے کراس بار آندھراپردیش میں چندرابابونائیڈو کی قیادت میں تلگودیشم اور جگن موہن ریڈی کی وائی ایس آرکانگریس کے درمیان کڑی ٹکر ہوئی ہے۔ وہیں بی جے پی اورکانگریس نے بھی آندھراپردیش میں مقابلہ کیاہے۔


جبکہ تلنگانہ میں ٹی آرایس۔ کانگریس اور بی جے پی کے درمیان مقابلہ ہواہے۔ وہیں حیدرآباد کی ایک سیٹ پرمجلس اتحادالمسلمین نے بھی اپنا امیدواراتارا ہے۔ اسی طرح کرناٹک میں جے ڈی ایس ۔ کانگریس اتحاد کا بی جے پی سے مقابلہ ہواہے۔ وہیں تاملناڈو میں ڈی ایم کے، سی پی آئی، سی پی ایم سمیت دیگرپانچ علاقائی پارٹیوں نے کانگریس کی قیادت میں انتخابات میں حصہ لیاہے۔ جبکہ کیرالا میں لفٹ ڈیموکرٹیک فرنٹ یونائیٹیڈ ڈیموکریٹک فرنٹ اور بی جے پی کے انتخابی جنگ ہوئی ہے ۔ وہیں تاملناڈو میں ڈی ایم کے سربراہ اسٹالن کے علاوہ


یہ ہیں جنوبی ہند کی ہاٹ سیٹیں اوربڑے چہرے


اس الیکشن میں جنوبی ہند سے کئی اہم سیاسی لیڈروں کی قسمت داؤ پرہے۔ جن میں سے سب سے بڑا نام کانگریس صدراہل گاندھی کاہے جو کیرالا کی وائناڈ کی سیٹ سے اپنی قسمت آزمارہے ہیں ۔ وہیں کرناٹک سے سابق وزیراعظم ایچ ڈی دیوگوڑ حلقہ پارلیمان تمکورسے اپنی قسمت آزمارہے ہیں۔ جبکہ حیدرآباد سے مجلس اتحادالمسلمین کے صدر اسدالدین اویسی انتخابی جنگ لڑرہے ہیں۔


وہیں آندھراپردیش میں وزیراعلیٰ این چندرابابونائیڈو کے فرزند نارا لوکیش نائیڈو انتخابی میدان میں ہے۔ وہیں تلنگانہ میں وزیراعلیٰ کے چندرشیکھرراؤ کی بیٹی کے کویتاراؤ حلقہ پارلیمنٹ نظام آباد سےاپنی قسمت آرمارہی ہیں۔جبکہ تمل ناڈو میں ڈی ایم کےبانی سی این انادورائی، سابق مرکزی وزیر آروینکٹ رامن اور فلم اداکار وجئنتی مالابالی کے علاوہ ٹی آربالو نے انتخابات میں حصہ لیاہے۔وہیں تاملناڈو میں فلم اسٹاکمل ہاسن کی پارٹی کے امیدواروں نے بھی اپنی قسمت آزمائی ہے۔


کس ریاست میں کس کو کتنی سیٹں ملیں گی۔


تمل ناڈو


کْل سیٹیں : 38


اے آئی اے ڈی ایم کے واتحاد : 14سے 16سیٹیں 


ڈی ایم کے واتحاد : 22 سے 24 سیٹیں


کرناٹک 


کْل سیٹیں : 28


بی جے پی : 21 سے 23 


کانگریس اورجے ڈی ایس : 05 سے 07


آندھراپردیش 


کْل سیٹیں : 25


ٹی ڈی پی : 10 سے 12


کانگریس : 0


وائی ایس آر کانگریس : 13 سے 14 


بی جے پی : 01


تلنگانہ 


کْل سیٹیں : 17


ٹی آرایس : 11 سے 13


بی جے پی : 01 سے 02


کانگریس : 01 سے 02


مجلس اتحادالمسلمین : 01


کیرالا


ایل ڈی ایف : 11 سے 13


یوڈی ایف : 07 سے 09 (کانگریس04 سے 07، آئی یو ایم ایل 01 سے 03

First published: May 19, 2019 06:49 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading