ہوم » نیوز » وطن نامہ

ذاکرنائک نے کیوں کہا تھا دنیا کا ہرمسلمان ہے دہشت گرد؟ این آئی اے کررہی ہے جانچ

سری لنکا میں موجود ڈاکٹرذاکرنائک کے حامیوں کی نشاندہی کی جارہی ہے:این آئی اے

  • Share this:
ذاکرنائک نے کیوں کہا تھا دنیا کا ہرمسلمان ہے دہشت گرد؟ این آئی اے کررہی ہے جانچ
ڈاکٹر ذاکر نائیک ۔ فائل فوٹو

متنازع مبلغ ڈاکٹرذاکرنائک کے خلاف انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ یعنی (ای ڈی) نے بڑی کارروائی  کی ہے۔ ای ڈی نے ذاکر نائک کے خلاف قانونی کاروائی کرنے کے مقصد سے شکایت درج کروائی ہے۔ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی جانب سے ڈاکٹرذاکرنائک کی 193.06 کروڑروپئے کی جائیداد کی نشاندہی کرلی گئی ہے۔ اس کے علاوہ ای ڈی نے میوچول فنڈ اور ممبئی میں کئی فلیٹس کوضبط کیا۔ ای ڈی کے حکام نے بتایاکہ متنازع مبلغ ڈاکٹرذاکرنائک نے دبئی میں سرمایہ کاری کی ہے۔


دوسری جانب این آئی اے نے بھی ذاکرنائک کے خلاف تحقیقات میں تیزی لائی ہے۔ این آئی اے کے ذرائع نے نیوز18 کو بتایا کہ قومی تحقیقاتی ایجنسی کی جانب سے ذاکرنائک کے ویڈیوز اور خطابات کا جائزہ لیاگیاہے۔ این آئی اے کا کہناہے کہ ڈاکٹرذاکرنائک نے اپنی تقریر میں کہا تھا کہ اگر برائی کے خلاف لڑنے  والا دہشت گرد ہے تو دنیا کا ہرمسلمان دہشت گرد ہے۔ ذاکر نے نائک نے مثال بھی دی ہے کہ اگرکوئی چور، چوری کررہاہے اور وہاں پولیس والا پہنچ جائے تو اس چور کے لیے پولیس والا دہشت گرد ہے۔ اس لیے میری نظرمیں سماجی برائیوں کے خلاف لڑنے والا ہرمسلمان دہشت گرد ہے۔ این آئی اے ذرائع کی جانب سے فراہم کردہ جانکاری کے مطابق ڈاکٹرذاکرنائک نے اسامہ بن لادن کودہشت گرد نہیں ماناتھا۔


zakir_one


اس کے علاوہ این آئی اے نے بتایاکہ ذاکرنائک نے مسلم ممالک میں منادراورگرجا گھروں کی تعمیر کی بھی مخالفت کی تھی ۔ اور افغانستان میں گوتم بدھ کے مجسموں کے انہدام کوبھی درست قراردیاتھا۔ ذرائع نے یہ بھی بتایاکہ این آئی اے کی جانب سے سری لنکا میں موجود ڈاکٹرذاکرنائک کے حامیوں کی نشاندہی کی جارہی ہے۔


zakir_naik2


ایک خصوصی این آئی اے عدالت نے متنازع مبلغ ڈاکٹر ذاکر نائک کی جنوبی ممبئی میں واقع پانچ جائیداد وں کو ضبط کرنے کا حکم دیاتھا۔ ان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ ہندوستان سے مفرورہے۔این آئی اے کی خصوصی عدالت کے حکم بعد نائک کے خلاف 2016میں مقدمہ دائر کیا گیا ہے۔عدالت کے حکم کے باوجود حاضر نہ ہونے پر جون 2017میں نائک کو مفرور قراردیا گیا تھا اور عدالت نےغیر ضمانتی وارنٹ بھی جاری کیا تھا۔ جس پر این آئی اے کی جانب سے انہیں ملک لانے کی کاررو ائی کی جارہی ہے

First published: May 02, 2019 05:41 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading