ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

این پی آر پر وزارت داخلہ نے پیش کی وضاحت ، دستاویز اور بایومیٹرک کو لے کر بتائی یہ بڑی بات  

مرکزی وزارت داخلہ نے کہا کہ رجسٹر کو اپ ڈیٹ کرنے کے دوران کاغذات یا بایومیٹرک کی جانکاری دینے کیلئے نہیں کہا جائے گا ۔

  • Share this:
این پی آر پر وزارت داخلہ نے پیش کی وضاحت ، دستاویز اور بایومیٹرک کو لے کر بتائی یہ بڑی بات  
مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ ۔ فائل فوٹو ۔

نیشنل پاپولیشن رجسٹر پر مغربی بنگال سمیت کئی ریاستوں اور اپوزیشن لیڈروں کے ذریعہ تشویش کا اظہار کئے جانے کے دوران مرکزی وزارت داخلہ نے بدھ کو کہا ہے کہ رجسٹر کو اپ ڈیٹ کرنے کے دوران کاغذات یا بایومیٹرک کی جانکاری دینے کیلئے نہیں کہا جائے گا ۔ وزارت داخلہ کے افسران نے بتایا کہ این پی آر کارروائی کے تحت مختلف سوالات پر مشتمل فارم کو جلد ہی حتمی شکل دیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ کارروائی کے دوران کوئی بھی دستاویز دینے کیلئے نہیں کہا جائے گا اور بایومیٹرک جانکاری بھی نہیں لی جائے گی ۔


حالانکہ رجسٹرار جنرل اور مردم شماری کمیشن کے دفتر کی ویب سائٹ پر دستیاب معلومات کے مطابق این پی آر ڈیٹا بیس میں ڈیموگرافی کے ساتھ بایومیٹرک تفصیلات بھی ہوں گی ۔ اس میں کہا گیا ہے کہ این پی آر کا مقصد ملک میں رہنے والے ہر شخص کا ڈیٹا بیس تیار کرنا ہے ۔ ڈیٹا بیس میں ڈیموگرافی کے ساتھ ساتھ بایومیٹرک تفصیلات بھی ہوں گی ۔




خیال رہے کہ شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ملک کے مختلف حصوں میں احتجاج کے دوران مغربی بنگال اور کیرالہ نے این پی آر کو اپ ڈیٹ کرنے کا کام بھی فی الحال روک دیا ہے ۔ تاہم وزارت کے افسران نے بتایا کہ زیادہ تر ریاستوں نے این پی آر سے متعلق پروویزن کو نوٹیفائی کردیا ہے ۔

قابل ذکر ہے کہ این پی آر ملک میں رہنے والے لوگوں کا رجسٹر ہے ۔ شہریت قانون 1955 اور شہریت ( شہریوں کا رجسٹریشن اور قومی شناختی کارڈ ) قانون 2003 کے تحت مقامی ، سب ڈسٹرکٹ ، ضلع ، ریاست اور قومی سطح پر تیار کیا جاتا ہے ۔ قانون میں اس کی خلاف ورزی کرنے والے پر ایک ہزار روپے کے جرمانہ کا بھی بندوبست ہے ۔
First published: Jan 16, 2020 12:02 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading