ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

روی شنکرپرساد اور ششی تھرور کےاکاؤنٹس کولاک کرنے پرٹویٹراب تک نہیں دیا کوئی جواب:پارلیمانی کمیٹی

پارلیمانی پینل نے کہا کہ تاحال ٹوئٹر کی طرف سے کوئی جواب موصول نہیں ہوا ہے۔ تھرور کی سربراہی میں پارلیمنٹری اسٹینڈنگ کمیٹی برائے انفارمیشن اینڈ ٹکنالوجی (Parliamentary Standing Committee on Information and Technology) نے 30جون کو نوٹس جاری کرکے 48 گھنٹوں کے اندر ٹویٹر سے جواب طلب کیا تھا۔

  • Share this:
روی شنکرپرساد اور ششی تھرور کےاکاؤنٹس کولاک کرنے پرٹویٹراب تک نہیں دیا کوئی جواب:پارلیمانی کمیٹی
ٹویٹر کے ترجمان نے کہا کہ ٹویٹر ہندوستان کے ساتھ گہری وابستگی رکھتا ہے

پارلیمانی پینل نے کہا ہے کہ ٹویٹر (Twitter) نے اس بات کا کوئی جواب نہیں دیا ہے کہ اس نے مرکزی وزیر روی شنکر پرساد (Ravi Shankar Prasad ) اور کانگریس کے رکن پارلیمنٹ ششی تھرور (Shashi Tharoor) کو ان کے اکائنٹس تک رسائی سے کیوں روک دیاتھا؟ پارلیمانی پینل نے کہا کہ تاحال ٹوئٹر کی طرف سے کوئی جواب موصول نہیں ہوا ہے۔ تھرور کی سربراہی میں پارلیمنٹری اسٹینڈنگ کمیٹی برائے انفارمیشن اینڈ ٹکنالوجی (Parliamentary Standing Committee on Information and Technology) نے 30جون کو نوٹس جاری کرکے 48 گھنٹوں کے اندر ٹویٹر سے جواب طلب کیا تھا۔


یہ بات مائیکروبلاگنگ پلیٹ فارم ٹوئٹر اور مرکزی حکومت کے مابین آئی ٹی کے نئے قواعد (New IT rules) سمیت مختلف امور پر مستقل جھگڑے کے درمیان سامنے آئی ہے۔ اس پینل کو تھرور نے ہدایت دی تھی کہ وہ اپنے پلیٹ فارم پر پرساد اور دیگر کے اکاؤنٹس تک رسائی سے روکنے پر ٹویٹر سے جواب طلب کریں۔


ٹویٹر کا دفتر۔(تصویر:shutterstock)۔


پچھلے ہفتے ٹویٹر نے مرکزی انفارمیشن اور ٹکنالوجی کے وزیرروی شنکر پرساد کو ان کے اکاؤنٹ تک رسائی سے روک دیا تھا جس نے حکومت کے ساتھ تناؤ کو بڑھاوا دیا تھا کیونکہ یہ مقامی قوانین پر عمل نہ کرنے کی وجہ سے پابندی کے زد میں آیا تھا۔

ٹویٹر نے کہناتھاکہ روی شنکر پرساد کو ان کے اکاؤنٹ تک قریب ایک گھنٹہ تک رسائی سے انہیں اس لیے روک دیاگیاتھا کیوں کہ انہوں نے امریکی ڈیجیٹل ملینیم کاپی رائٹ ایکٹ (US Digital Millennium Copyright Act) کی خلاف ورزی کی ہے ، لیکن وزیر نے کہا کہ مائکروبلاگنگ پلیٹ فارم نے آئی ٹی کے نئے قواعد کی خلاف ورزی کی ہے جس میں صارف کے مواد کی میزبانی کرنے کی ضرورت ہے۔ لاک رسائی سے قبل پیشگی اطلاع آئی ٹی وزیر نے بہادری سے متعلق صوابدیدی اور اپنا ایجنڈا چلانے پر ٹویٹر کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

اس مسئلے کے فورا بعد ہی کانگریسی رہنما ششی تھرور نے ٹویٹ کیا کہ انہیں بھی اسی طرح کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ میرے ساتھ بھی ایسا ہی ہوا تھا۔ واضح طور پر ڈی ایم سی اے انتہائی متحرک ہو رہا ہے۔ اس ٹویٹ کو ٹویٹر نے حذف کردیا ہے کیونکہ اس کے ویڈیو میں کاپی رائٹ شدہ بونی ایم (BoneyM) گانا ‘رسپوتین’ (Rasputin) شامل ہے۔

تھرور نے مزید کہا کہ پارلیمنٹری اسٹینڈنگ کمیٹی برائے انفارمیشن ٹکنالوجی کے چیئرمین کی حیثیت سے ، میں یہ بیان کرسکتا ہوں کہ ’’ہم @TwitterIndia سے @rsprasad اور ان قوانین اور طریقہ کار کو جو ہندوستان میں کام کرتے ہیں ان کو لاک کرنے کے لئے وضاحت طلب کریں گے‘‘۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jul 03, 2021 09:36 AM IST