உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لیپ ٹاپ۔کمپیوٹر میں وائرس ڈال کر کی 170 کروڑ روپئے کی ٹھگی، فرضی کال سینٹر کے 10لوگ گرفتار

     یہ جانکاری دیتے ہوئے ایس ٹی ایف کے ایک اہلکار نے بتایا کہ جمعہ کو بی-36، سیکٹر-59، نوئیڈا میں واقع مبینہ کال سینٹر پر چھاپہ مارا اور گینگ کے سرغنہ سمیت 10 لوگوں کو گرفتار کرلیا۔

    یہ جانکاری دیتے ہوئے ایس ٹی ایف کے ایک اہلکار نے بتایا کہ جمعہ کو بی-36، سیکٹر-59، نوئیڈا میں واقع مبینہ کال سینٹر پر چھاپہ مارا اور گینگ کے سرغنہ سمیت 10 لوگوں کو گرفتار کرلیا۔

    یہ جانکاری دیتے ہوئے ایس ٹی ایف کے ایک اہلکار نے بتایا کہ جمعہ کو بی-36، سیکٹر-59، نوئیڈا میں واقع مبینہ کال سینٹر پر چھاپہ مارا اور گینگ کے سرغنہ سمیت 10 لوگوں کو گرفتار کرلیا۔

    • Share this:
      اسپیشل انویسٹی گیشن ٹیم (ایس ٹی ایف) نے راجدھانی دہلی سے متصل اتر پردیش کے نوئیڈا میں ایک فرضی بین الاقوامی کال سینٹر کا پردہ فاش کیا ہے اور 10 لوگوں کو گرفتار کیا ہے۔ ان لوگوں نے غیر ملکیوں کے لیپ ٹاپ کمپیوٹر میں وائرس ٹھیک کروانے کے نام پر 170 کروڑ روپے سے زیادہ کی دھوکہ دہی کی تھی۔ یہ جانکاری دیتے ہوئے ایس ٹی ایف کے ایک اہلکار نے بتایا کہ جمعہ کو بی-36، سیکٹر-59، نوئیڈا میں واقع مبینہ کال سینٹر پر چھاپہ مارا اور گینگ کے سرغنہ سمیت 10 لوگوں کو گرفتار کرلیا۔ ملزمین نے سیکڑوں لوگوں کو امریکہ سے دبئی لے جانے کا جھانسہ دینے کا اعتراف کیا ہے۔

      یوپی ایس ٹی ایف کے انچارج، سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس وشال وکرم سنگھ نے بتایا کہ گرفتار ملزمان کی شناخت سیکٹر 44 کے رہنے والے کرن موہن، بیگم گنج گونڈا کے رہنے والے ونود سنگھ، سیکٹر کے رہنے والے دھرو نارنگ کے طور پر کی گئی ہے۔ 92، سیکٹر-49 کے رہنے والے مینک گوگیا، اسیکٹر-15A کے رہنے والے اکشے ملک، گڑھی چوکنڈی کے رہنے والے دیپک سنگھ، گور سٹی کے رہائشی آہوجا پوڈوال، دہلی کے رہنے والے اکشے شرما، جینت سنگھ اور مکل راوت۔

      سنگھ نے کہا کہ تفتیش کے دوران یہ معلوم ہوا ہے کہ ملزمان نے جعلی دستاویزات کی بنیاد پر مختلف ناموں سے کمپنیاں بنائی تھیں۔ کال سینٹر سے غیر ملکی شہریوں سے رابطہ کر کے کمپیوٹر لیپ ٹاپ لگا کر وائرس ٹھیک کرنے کا جھانسہ دیا جا رہا تھا۔ ملزمان ٹیکنیکل اسپورٹ کے نام پر مختلف سافٹ وئیر سے لیپ ٹاپ کمپیوٹرز ہیک کرتے تھے اور غیر ملکیوں کے آن لائن اکاؤنٹ یا کریڈٹ کارڈ کی تفصیلات چرا کر کرائے کے غیر ملکی اکاؤنٹس میں رقم ٹرانسفر کرتے تھے۔

       اس نئی بیماری سے پھیلی دہشت! 15 اور زد میں، جانئے کیا ہیں علامات اور بچاؤ کے طریقے


      راجدھانی دہلی میں ہوگی اربن فارمنگ، دہلی حکومت کر رہی ہے پلاننگ


      ایس ٹی ایف افسر نے بتایا کہ ملزمان نے بتایا کہ وہ حوالات کے ذریعے ہندوستانی کرنسی میں نقدی حاصل کرتے تھے۔ پیسے کرائے کے کھاتے میں ڈالروں میں جاتے تھے۔ پھر کرایہ پر اکاؤنٹ فراہم کرنے والا کمیشن کاٹ کر رقم ہندوستان منتقل کرتا تھا۔

      انہوں نے بتایا کہ جعلی کال سینٹرز کا نیٹ ورک دنیا کے کئی ممالک میں ہے۔ ملزمان امریکہ، کینیڈا، لبنان، آسٹریلیا، دبئی سے لے کر کئی مغربی ممالک میں لوگوں کو دھوکہ دے چکے ہیں۔ نوئیڈا کے کال سینٹر میں روزانہ پچاس سے زیادہ لوگ کام کرتے تھے۔ باقی ملزمان کی تلاش جاری ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: