உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    NEP: جموں و کشمیر میں 22-2021 کے دوران اسکولوں کے اندراج میں 14.5 فیصد اضافہ، آو اسکول چلیں مہم

    محکمہ اسکول ایجوکیشن کے منفرد اقدام کے تحت سروے کا آغاز کر دیا گیا۔

    محکمہ اسکول ایجوکیشن کے منفرد اقدام کے تحت سروے کا آغاز کر دیا گیا۔

    National Education Policy: لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے مزید بتایا کہ یونین ٹیریٹری جموں و کشمیر کے مختلف اسکولوں میں کل 1,65,000 طلبہ کا داخلہ کیا گیا ہے۔ محکمہ اسکول ایجوکیشن کے منفرد اقدام کے تحت سروے کا آغاز کر دیا گیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Hyderabad | Mumbai | Delhi | Jammu | Karnataka
    • Share this:
      لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا (Manoj Sinha) نے اتوار کو کہا کہ قومی تعلیمی پالیسی (National Education Policy) کے ایک حصے کے طور پر ’’آو اسکول چلیں مہم‘‘ (Aao School Chalein Campaign) کے تحت بچوں کے اسکولوں میں اندراج کے لیے ایک نئی انرولمنٹ مہم شروع کی گئی۔ جس کے نتیجے میں 2020-2021 کے مقابلے میں 22-2021 میں جموں و کشمیر کے اسکولوں کے داخلوں میں 14.5 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

      لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ اسکول سے باہر بچوں کو مناسب عمر کے اسکولوں میں مرکزی دھارے میں لانے کا آغاز کیا گیا ہے۔ ہم تمام ہونہار طلبہ کو تعلیم فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔ انھوں نے کہا کہ پری پرائمری اور پرائمری کلاسوں میں طلبہ کے اندراج کے لیے کمزور طبقات پر بھی توجہ مرکوز کی گئی ہے جس میں خانہ بدوش بچے، دور دراز علاقوں کے بچے، لڑکیاں اور درج فہرست ذات اور درج فہرست قبائل کے زمرے شامل ہیں۔

      لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے مزید بتایا کہ یونین ٹیریٹری جموں و کشمیر کے مختلف اسکولوں میں کل 1,65,000 طلبہ کا داخلہ کیا گیا ہے۔ محکمہ اسکول ایجوکیشن کے منفرد اقدام کے تحت سروے کا آغاز کر دیا گیا۔ اس اقدام کے ذریعے 20 لاکھ بچوں کا سروے کیا گیا ہے اور ان میں سے 93,508 طلبہ اسکولوں سے باہر پائے گئے ہیں یا ان کا داخلہ نہیں ہوا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      Relationship:نئے لوگوں سے دوستی کرنے کیلئے ایسے شروع کریں بات چیت، ہر کوئی ہوجائے گا متاثر

      یہ بھی پڑھیں: 

      Mohali fair: موہالی میلے میں ہر جگہ خوف ہی خوف! جوئرائیڈ ہوا تباہ، 5 بچوں سمیت 10 افراد زخمی

       

      انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کے کم از کم 100 بہترین اساتذہ اور لیکچراروں کو اس سال جموں و کشمیر سے باہر ٹریننگ کے لیے بھیجا جا رہا ہے، جو ماسٹر ٹرینرز اور سرپرست اساتذہ کے طور پر کام کریں گے۔ لیفٹیننٹ گورنر نے مزید کہا کہ اساتذہ کی استعداد کار میں اضافے کے لیے یو ٹی میں طالب علم اور اساتذہ کی مشغولیت کے لیے ایک اسٹوڈنٹ مینٹرشپ پروگرام شروع کیا گیا ہے جو تعلیمی اداروں میں طلبہ کی کارکردگی اور سیکھنے کے نتائج کو مضبوط بنانے پر توجہ مرکوز کرتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: