உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    یوپی میں 19 سالہ مسلمان لڑکےکو گولی مارکر کیاگیاہلاک، دوملزمان گرفتار، آخرکیاہےمعاملہ؟

    اس معاملے میں مزید تفتیش جاری ہے۔

    اس معاملے میں مزید تفتیش جاری ہے۔

    Muslim boy shot dead in UP: سہارنپور کے وپن ٹاڈا کہا کہ اطلاع ملتے ہی پولیس موقع پر پہنچی اور لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے بھیج دیا۔ پولیس نے رات ہی میں دونوں ملزمان کو گرفتار کر لیا۔ جن کی شناخت دھرم ویر اور اومپال کے طور پر کی گئی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Uttar Pradesh | Mumbai | Delhi | Lucknow | Hyderabad
    • Share this:
      Muslim boy shot dead in UP: مکتوب میڈیا کی ایک رپورٹ کے مھابق اتر پردیش میں ضلع سہارنپور کے پارولی گاؤں میں ایک 19 سالہ لڑکے شاہ رخ (Shahrukh) کو کچھ نامعلوم افراد نے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ بتایا گیا ہے کہ مظفر نگر کا رہنے والا شاہ رخ مزدوری کا کام کرکے واپس آرہا تھا کہ راستہ میں ہی ان افراد نے اس کا قتل کردیا۔

      متوفی کے والد کی شکایت کی بنیاد پر دو ملزمین دھرم ویر اور اومپال کو گرفتار کیا گیا۔ اراکین خاندان نے مکتوب میڈیا کو بتایا کہ شاہ رخ کو ہندو ہجوم نے چور قرار دیا اور شاہ رخ اور اس کے دوست کو حملہ آوروں نے نشانہ بنایا۔ لواحقین نے چوری کے دعووں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ یہ منصوبہ بند حملہ ہے۔

      شاہ رخ کے کزن دلشاد نے مذکورہ میڈیا ادارہ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میرا بھائی ایک مزدور تھا جو لوہے کی سلاخیں باندھنے کا کام کرتا تھا۔ وہ بدھ کی رات میراگ پور گاؤں سے واپس آ رہے تھے۔ راستے میں کچھ لوگ پہلے سے ہتھیار لیے کھڑے تھے۔ انہوں نے شاہ رخ اور دوستوں کو روکا اور گالیاں دینا شروع کر دیں۔ ان میں سے ایک نے فائرنگ بھی کی۔ گولی چلانے والے دو آدمی تھے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      کرناٹک میں کم عمر کی شادی کا رواج، لڑکیوں میں تعلیم کے فقدان کا سبب، نیشنل کرائم ریکارڈ بیورو کی رپورٹ جاری

      یہ بھی پڑھیں: 

      مقامی مساجد میں جمعہ کی نماز ادا کریں، حیدرآباد میں علماء اور تنظمیوں کے ذمہ داران کی اپیل

      سہارنپور کے وپن ٹاڈا کہا کہ اطلاع ملتے ہی پولیس موقع پر پہنچی اور لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے بھیج دیا۔ پولیس نے رات ہی میں دونوں ملزمان کو گرفتار کر لیا۔ جن کی شناخت دھرم ویر اور اومپال کے طور پر کی گئی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: