உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سکھ مخالف فسادات میں "راجیو گاندھی کے رول "کا جگدیش ٹائٹلر نے کیا انکشاف ، کہی یہ بات ؟

    جگدیش ٹائٹلر۔فائل فوٹو

    جگدیش ٹائٹلر۔فائل فوٹو

    سابق مرکزی وزیر اور 1984 سکھ مخالف فسادات کے ملزم جگدیش ٹائٹلر نے اپنی خاموشی توڑی ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : سابق مرکزی وزیر اور 1984 سکھ مخالف فسادات کے ملزم جگدیش ٹائٹلر نے اپنی خاموشی توڑی ہے ۔ انہوں نے پہلی مرتبہ بتایا کہ اس وقت کے وزیر اعظم راجیو گاندھی نے فسادات کے وقت حالات کا جائزہ لینے کیلئے ان کے ساتھ شمالی دہلی کے کئی چکر لگائے تھے۔ خیال رہے کہ راجیو گاندھی کی والدہ اور سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی کا ان کے سکھ سیکورٹی گارڈ کے ذریعہ قتل کے بعد دہلی سمیت ملک کے مختلف حصوں میں سکھ مخالف فسادات بھڑک گئے تھے۔
      ٹائٹلر نے ان فسادات کو لے کر نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے کہا کہ راجیو گاندھی نے ان کی کار میں علاقوں کا دورہ کیا تھا ، وہ دہلی کے پارٹی کے ممبران پارلیمنٹ سے کافی غصہ تھے ، انہوں نے سبھی ممبران پارلیمنٹ کو اپنے علاقہ میں جاکر حالات کو پرامن بنانے کی بھی ہدایت دی تھی ۔
      ان فسادات کی جانچ کیلئے تشکیل دی گئی ناناوٹی کمیشن نے اپنی رپورٹ میں سابق مرکزی وزیر ٹائٹلر کو اہم سازشیوں میں سے ایک بتایا تھا ۔ ٹائٹلر پر فسادات کے دوران پل بنگش گرودوارہ میں تین سکھوں کے قتل کا بھی الزام لگا تھا۔ ان معاملوں میں ابھی سی بی آئی جانچ کی جارہی ہے اور ٹائٹلر کے خلاف عائد کیا گیا کوئی بھی الزام اب تک ثابت نہیں ہوسکا ہے۔
      سکھ مخالف فسادات کی جانچ کے سلسلہ میں سی بی آئی نے ٹائٹلر کا لائی ڈیٹیکٹر ٹسٹ کرانے کا مطالبہ کیا ہے ، وہیں 74 سالہ اس لیڈر کا کہنا ہے کہ وہ اس کیلئے پابند نہیں ہیں ، لیکن اگر سی بی آئی یہ تسلیم کر لیتی ہے کہ اس سے پہلے کی مختلف جانچوں میں انہیں کلین چٹ دینے میں ایجنسی نے غلطی کی تھی ، تو میں لائی ڈیٹیکٹر ٹسٹ کرا لوں گا۔
      First published: