உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لال قلعہ پر حملہ کے الزام میں گرفتار بلال کاوا کی ضمانت منظور ، دہلی اور گجرات اے ٹی ایس نے پکڑا تھا

    فائل فوٹو

    فائل فوٹو

    لال قلعے پر 2000 میں حملے کے الزام میں گرفتار بلال احمد کاوا کو آج یہاں کی پٹیالہ ہاؤس کی عدالت نے ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : لال قلعے پر 2000 میں حملے کے الزام میں گرفتار بلال احمد کاوا کو آج یہاں کی پٹیالہ ہاؤس کی عدالت نے ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا۔ ایڈیشنل سیشن جج سدھارتھ شرما نے کاوا کی ضمانت کی درخواست پر دہلی پولیس کو نوٹس جاری کرکے آج تک جواب دینے کے لئے کہا تھا۔ فی الحال عدالتی حراست میں قید کاوا نے اپنی ضمانت کی درخواست میں کہا تھا کہ اسے مزید حراست میں رکھنے سے کسی مقصد کی تکمیل نہیں ہوگی۔ کاواکو 50 ہزار روپے کا مچلکے پر ضمانت منظوری کی گئی ہے۔
      کاوا کو دہلی پولیس اور گجرات انسداد دہشت گردی دستے کے مشترکہ آپریشن میں اسی سال 10 جنوری کو قومی دارالحکومت سے گرفتار کیا تھا۔ پولیس کا دعوی ہے کہ کاوا کو لال قلعہ پر حملہ کرنے کے لئےساڑھے 25 لاکھ روپے رقم دی گئی۔
      بائیس دسمبر 2000 کو لال قلعے پر ہونے والے حملے میں فوج کے تین جوان شہید ہوگئے تھے۔ اس حملے کا اہم ملزم پاکستان کے ایبٹ آباد کے محمد عارف سمیت 11 کو سزا بھی سنائی گئی تھی جبکہ کاوافرار تھا۔ تحقیق میں یہ معلوم ہوا کہ عارف نے کاوا کے بینک اکاؤنٹ میں یہ رقم جمع کی تھی، جس کا استعمال لال قلعہ پر حملہ کرنے اور کشمیر میں دہشت گردوں کو مہیا کرانے میں کیا گیا تھا۔
      First published: