اپنا ضلع منتخب کریں۔

    مرکز نظام الدین: بنگلہ والی مسجد کی ملکیت کس کی ہے؟ دہلی پولیس نے طلب کی تفصیلات، دہلی ہائی کورٹ سےرجوع

    دہلی وقف بورڈ نے 2021 میں اس بنیاد پر احاطے کو دوبارہ کھولنے کی ہدایت مانگتے ہوئے عدالت سے رجوع کیا تھا

    دہلی وقف بورڈ نے 2021 میں اس بنیاد پر احاطے کو دوبارہ کھولنے کی ہدایت مانگتے ہوئے عدالت سے رجوع کیا تھا

    دہلی پولیس نے یہ درخواست بورڈ کی طرف سے مسجد، مدرسہ کاشف العلوم اور اس سے منسلک ہاسٹل پر مشتمل مرکز نظام الدین کو دوبارہ کھولنے کی درخواست پر دائر کی ہے جو کورونا وبا کے بعد بند تھا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Jammu | Delhi | Lucknow | Hyderabad
    • Share this:
      دہلی سٹی پولیس نے دہلی ہائی کورٹ سے رجوع کیا ہے اور دہلی وقف بورڈ کو نظام الدین بنگلہ والی مسجد (Nizamuddin Banglewali Masjid) کی ملکیت سے متعلق دستاویزات پیش کرنے کی ہدایت دی ہے جہاں مارچ 2020 میں عالمی وبا کورونا وائرس (COVID-19) کے دوران تبلیغی جماعت کا اجتماع ہوا تھا۔ دہلی پولیس نے یہ درخواست بورڈ کی طرف سے مسجد، مدرسہ کاشف العلوم اور اس سے منسلک ہاسٹل پر مشتمل مرکز نظام الدین کو دوبارہ کھولنے کی درخواست پر دائر کی ہے جو کورونا وبا کے بعد بند تھا۔

      مئی میں ہائی کورٹ نے تبلیغی جماعت کے اجتماع کے بعد بند کیے گئے مرکز کے بعض علاقوں کو دوبارہ کھولنے کی اجازت دیتے ہوئے ایک عبوری حکم جاری کیا تھا۔ مرکزی حکومت نے اپنے حلف نامے میں احاطے کو مکمل طور پر دوبارہ کھولنے کی مخالفت کی۔ پولیس نے اپنی درخواست میں کہا کہ درخواست وقف بورڈ کی طرف سے دائر کی گئی تھی جس میں متولی کی حیثیت سے جائیداد پر قبضے کا دعویٰ کیا گیا تھا لیکن درخواست گزار کی طرف سے لوکس کا دعویٰ کرنے کے لیے کوئی معاون دستاویز داخل نہیں کی گئی ہے یا یہ کہ جائیداد وقف جائیداد ہے؟ اس بارے میں بھی کچھ نہیں کہا گیا۔

      اس میں کہا گیا ہے کہ عرضی کو نمٹانے سے پہلے یہ جائز اور ضروری ہے کہ مقبوضہ وقف املاک کے صحیح مالک یا دعویدار کو ریکارڈ پر لایا جائے تاکہ املاک کی دیکھ بھال کے سلسلے میں مناسب احکامات جاری کیے جا سکیں۔ درخواست میں اس معاملے میں ایک اور درخواست دہندہ کو بھی ہدایت دی گئی ہے، جو کہ احاطے کی مینیجنگ کمیٹی کا ایک رکن ہے۔

      درخواست میں کہا گیا ہے کہ یہ عرض کیا جاتا ہے کہ آج تک نہ تو درخواست گزار نے مذکورہ نوٹس کا جواب دیا ہے اور نہ ہی عدالت کے سامنے کوئی دستاویز پیش کی ہے جس میں یا تو ان کا لوکس اسٹینڈ/قبضہ کا عنوان یا مذکورہ وقف پر قبضہ کرنے اور ان کا انتظام کرنے کا حق دکھایا گیا ہے۔ درخواست میں جائیداد کی منظوری کے منصوبے کے ساتھ ساتھ دہلی میونسپل کارپوریشن کی طرف سے بلڈنگ پلان کی خلاف ورزی یا غیر قانونی تعمیرات کے حوالے سے جاری کردہ نوٹس کی کاپی بھی طلب کی گئی ہے۔ اس میں یہ رپورٹ بھی طلب کی گئی ہے کہ ساختی استحکام اور دیگر حفاظتی اصولوں کے لحاظ سے عمارت کتنی مضبوط اور محفوظ ہے۔

      نظام الدین مرکز میں منعقدہ تبلیغی جماعت کے پروگرام اور کورونا لاک ڈاؤن کے دوران وہاں غیر ملکیوں کے قیام کے سلسلے میں وبائی امراض ایکٹ، ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ، فارنرز ایکٹ اور تعزیرات کی مختلف دفعات کے تحت 2020 میں کئی ایف آئی آر درج کی گئیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: