ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جاٹ پرتشدد تحریک : تین ایچ سی ایس اور دس ڈی ایس پی معطل

چنڈی گڑھ : ہریانہ میں گزشتہ فروری کے مہینے میں جاٹ تحریک کے دوران فسادات میں انتظامیہ / پولس کے حکام اور ملازمین کی لاپرواہی کی تحقیقات کے لیے تشکیل شدہ پرکاش سنگھ کمیٹی کی رپورٹ موصول ہونے کے بعد ریاستی حکومت نے اب کارروائی کرناشروع کر دیا ہے

  • UNI
  • Last Updated: May 20, 2016 10:46 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جاٹ پرتشدد تحریک : تین ایچ سی ایس اور دس ڈی ایس پی معطل
چنڈی گڑھ : ہریانہ میں گزشتہ فروری کے مہینے میں جاٹ تحریک کے دوران فسادات میں انتظامیہ / پولس کے حکام اور ملازمین کی لاپرواہی کی تحقیقات کے لیے تشکیل شدہ پرکاش سنگھ کمیٹی کی رپورٹ موصول ہونے کے بعد ریاستی حکومت نے اب کارروائی کرناشروع کر دیا ہے

چنڈی گڑھ :  ہریانہ میں گزشتہ فروری کے مہینے میں جاٹ تحریک کے دوران فسادات میں انتظامیہ / پولس کے حکام اور ملازمین کی لاپرواہی کی تحقیقات کے لیے تشکیل شدہ پرکاش سنگھ کمیٹی کی رپورٹ موصول ہونے کے بعد ریاستی حکومت نے اب کارروائی کرناشروع کر دیا ہے اور اس کے تحت اس نے آج ریاستی سول سروس (ایچ سی ایس) اور دس پولس ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ (ڈی ایس پی) کو فوری طور پر معطل کر دیا۔

سرکاری ترجمان نے آج یہاں بتایا کہ معطل ہونے والے ایچ سی ایس افسر دھرمیندر سنگھ، پنکج کمار اور جگدیپ سنگھ ہیں۔ یہ افسر ان معطلی کی مدت کے دوران چنڈی گڑھ میں چیف سکریٹری کے دفتر کی سروس برانچ کورپورٹ کریں گے اور چیف سکریٹری کی اجازت کے بغیر ہیڈکوارٹر چھوڑ کر نہيں جائیں گے۔

ترجمان کے مطابق ریاستی کرائم برانچ کے معطل ڈی ایس پی سکھبیر سنگھ اور سریندر سنگھ، ڈی ایس پی روہتک وجیندر سنگھ اور ڈی ایس پی روہتک پون کمار ہیں۔ دیگر ایسے افسران میں جگت سنگھ ڈ ی ایس پی بیری، سندیپ ملک ڈی ایس پی سی آئی ڈی، راجبير سنگھ ڈی ایس پی لوهارو، ونود کمار اے سی پی فرید آباد، سنیل کمار ڈی ایس پی سونی پت اور ستیش کمار ڈی ایس پی كھركھودا ہیں۔

First published: May 20, 2016 10:46 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading