உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: ملازمین اور پنشنروں کے ڈی اے میں 3فیصد کا اضافہ، جولائی 2107 سے ہوگا نافذ العمل

    جموں وکشمیر حکومت نے جمعرات کو اپنے ملازمین اور پنشنروں کے حق میں جولائی 2017ء سے تین فیصد اضافے ڈی اے کی ادائیگی کے احکامات صادر کئے۔

    جموں وکشمیر حکومت نے جمعرات کو اپنے ملازمین اور پنشنروں کے حق میں جولائی 2017ء سے تین فیصد اضافے ڈی اے کی ادائیگی کے احکامات صادر کئے۔

    جموں وکشمیر حکومت نے جمعرات کو اپنے ملازمین اور پنشنروں کے حق میں جولائی 2017ء سے تین فیصد اضافے ڈی اے کی ادائیگی کے احکامات صادر کئے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      جموں: جموں وکشمیر حکومت نے جمعرات کو اپنے ملازمین اور پنشنروں کے حق میں جولائی 2017ء سے تین فیصد اضافے ڈی اے کی ادائیگی کے احکامات صادر کئے۔ پرنسپل سیکرٹری فائنانس نوین کمار چودھری کی طرف سے جاری کئے گئے ایک حکمنامے میں کہا گیا ہے کہ یہ تین فیصد مہنگائی بھتہ جولائی 2017ء سے واگزار کیا جائے گا اور اور ڈی اے شرح اب 139فیصد تک پہنچ گئی ہے ۔ ایک اہم فیصلے میں محکمہ خزانہ نے اعلان کیا ہے کہ جولائی 2017سے دسمبر 2017 تک اضافی تین فیصد ڈی اے کے ایئیر ملازمین کو نقد اد ا کئے جائیں گے جبکہ جنوری 2018ء سے یہ ملازمین کی تنخواہوں میں شامل کیا جائے گا۔
      حکم نامے کے مطابق ڈی اے میں اضافہ ورک چارج و ہول ٹائم ایسے کنٹنجنٹ پیڈ ملازمین پربھی لاگو ہو گا جو ریگولر ٹائم سکیل میں کام کر رہے ہیں ۔ واضح رہے کہ وزیر خزانہ ڈاکٹر حسیب اے درابو نے ا س سال 11جنوری کو ریاستی اسمبلی میں اپنے بجٹ خطاب میں التوا میں پڑے ڈی اے کی واگزار ی اور ریاست ملازمین کے حق میں ساتویں تنخواہ کمیشن کی سفارشات لاگو کرنے کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے ریاستی قانون ساز یہ کے اجلاس کے دوران اوور ٹائم کام کرنے والے ملازمین کے ریفرشمنٹ چارجز کو 7500 روپے سے بڑھا کر 10,000 روپے کرنے کااعلان کیا ہے ۔
      ڈاکٹر درابو نے کہا کہ پچھلی چند دہائیوں میں یہ پہلی مرتبہ ہوا کہ مالی استحکام کی بدولت ڈی اے ایئرس نقد ادا کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کی طرف سے پچھلے تین برسوں کے دوران مالی نظامت کے حوالے سے کئے جارہے اقدامات کی بدولت وسائل پوزیشن میں بھی استحکام پیدا ہوا ہے اور محکمہ خزانہ اپنے ملازمین کو مالی فوائد دینے میں کامیاب ہوا ہے ۔
      First published: