உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Rural India: آسمانی بجلی گرنے سے سخت خطرات، سیلاب سے زیادہ اموات کا خدشہ!

    Youtube Video

    رپورٹ کے مطابق ملک میں آسمانی بجلی گرنے کے واقعات میں 34 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا، جو 2019 تا 2020 میں 1.38 کروڑ سے بڑھ کر 2020 تا2021 میں 1.85 کروڑ ہو گیا، ایک سال میں ملک بھر میں 46.83 لاکھ کا اضافہ ہوا۔

    • Share this:
      شمالی ہندوستان میں مانسون کے آغاز کے ساتھ ہی بہار میں آسمانی بجلی گرنے اور گرج چمک سے متعلق واقعات کی وجہ سے گزشتہ ہفتے 17 افراد ہلاک ہو گئے۔ بھاگلپور ضلع میں چھ اموات ریکارڈ کی گئیں، ویشالی، بنکا اور کھگڑیا میں تین اموات کی اطلاع ملی۔ مونگیر، کٹیہار، مدھے پورہ اور سہرسہ میں ایک ایک موت کی اطلاع ملی۔

      اگرچہ آسمانی بجلی گرنے سے ہونے والی اموات کو الگ تھلگ واقعات کے طور پر رپورٹ کیا جاتا ہے، تاہم مانسون کے دوران عام ہونے والا قدرتی واقعہ دیہی علاقوں میں سیلاب اور طوفان سے زیادہ ہلاکتوں اور یہاں تک کہ بے حساب اموات کا باعث بنتا ہے۔

      آسمانی بجلی کی وجہ سے 2020 اور 2021 کے درمیان 1,697 اموات ہوئیں، جن میں سے زیادہ تر اموات شمالی ہندوستانی ریاستوں میں ہوئی ہیں۔

      وزارت ارتھ سائنسز، ہندوستانی محکمہ موسمیات اور دیگر سرکاری ایجنسیوں کے ذریعے مشترکہ طور پر شائع کی گئی سالانہ لائٹنگ رپورٹ 2020 تا 2021 کے مطابق شمالی ہندوستان میں تین ریاستیں ہمارے لیے ایک چیلنج بن گئی ہیں ۔ جس میں اتر پردیش، بہار اور مدھیہ پردیش شامل ہے، جہاں آسمانی بجلی گرنے سے 1500 سے زیادہ لوگ مرتے ہیں۔

      کلائمیٹ ریسیلینٹ آبزروینگ سسٹمز پروموشن کونسل (CROPC) سنجے سریواستو کا کہنا ہے کہ یہ سرکاری ڈیٹا ہے کیونکہ انہیں معاوضہ ملتا ہے۔ یہ تعداد زیادہ ہو سکتی ہے۔

      رپورٹ کے مطابق بہار میں 401، اتر پردیش میں 238، مدھیہ پردیش میں 228 اور اوڈیشہ میں 156 اموات ہوئیں۔ یہ اموات آسمانی بجلی گرنے کی بڑھتی ہوئی تعدد کا نتیجہ ہیں، ایک ایسی تبدیلی جس کا حکومتی اعداد و شمار میں بھی اعتراف کیا گیا ہے۔

      مزید پڑھیں: آلٹ نیوز کے صحافی محمد زبیر کو دہلی پولیس نے کیا گرفتار، فرقہ وارانہ بدامنی پھیلانے کا الزام

      رپورٹ کے مطابق ملک میں آسمانی بجلی گرنے کے واقعات میں 34 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا، جو 2019 تا 2020 میں 1.38 کروڑ سے بڑھ کر 2020 تا2021 میں 1.85 کروڑ ہو گیا، ایک سال میں ملک بھر میں 46.83 لاکھ کا اضافہ ہوا۔

      مزید پڑھیں: Explained: اسرائیل میں صرف تین سال میں پانچویں بار انتخابات کیوں؟ کیا ہے اصل راز؟

      اگرچہ حکومتی ایجنسیاں جیسے لائٹننگ ریسیلینٹ کمپین انڈیا اور نیشنل کرائم ریکارڈ بیورو (این سی آر بی) آسمانی بجلی گرنے کی وجہ سے اموات ریکارڈ کرتی ہیں، ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ تعداد کم بتائی جاتی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: