ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

عام آدمی پارٹی کو 50-50 لاکھ روپے کا چندہ دینے والی چار کمپنیوں کے خلاف ایف آئی آر درج

نئی دہلی : دہلی پولیس کی اقتصادی جرائم شاخ نے عام آدمی پارٹی کو چندہ دینے والی چار کمپنیوں کے خلاف شکنجہ کسنا شروع کر دیا ہے۔ ان چاروں فرضی کمپنیوں کے خلاف پولیس نے ایف آئی آر درج کر لی ہے۔ خیال رہے کہ عوام نامی ایک تنظیم نے اس معاملے کا انکشاف کیا تھا، جسے عام آدمی پارٹی نے بے بنیاد قرار دیا تھا ۔

  • IBN7
  • Last Updated: Jan 21, 2016 08:40 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
عام آدمی پارٹی کو 50-50 لاکھ روپے کا چندہ دینے والی چار کمپنیوں کے خلاف ایف آئی آر درج
نئی دہلی : دہلی پولیس کی اقتصادی جرائم شاخ نے عام آدمی پارٹی کو چندہ دینے والی چار کمپنیوں کے خلاف شکنجہ کسنا شروع کر دیا ہے۔ ان چاروں فرضی کمپنیوں کے خلاف پولیس نے ایف آئی آر درج کر لی ہے۔ خیال رہے کہ عوام نامی ایک تنظیم نے اس معاملے کا انکشاف کیا تھا، جسے عام آدمی پارٹی نے بے بنیاد قرار دیا تھا ۔

نئی دہلی : دہلی پولیس کی اقتصادی جرائم شاخ نے عام آدمی پارٹی کو چندہ دینے والی چار کمپنیوں کے خلاف شکنجہ کسنا شروع کر دیا ہے۔ ان چاروں فرضی کمپنیوں کے خلاف پولیس نے ایف آئی آر درج کر لی ہے۔ خیال رہے کہ عوام نامی ایک تنظیم نے اس معاملے کا انکشاف کیا تھا، جسے عام آدمی پارٹی نے بے بنیاد قرار دیا تھا ۔


مرکزی حکومت کی کمپنی امور کی وزارت کی شکایت پر دہلی پولیس کی اقتصادی جرائم شاخ نے دھوکہ دہی، جعل سازی اور مجرمانہ سازش کی دفعات کے تحت چاروں کمپنیوں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔ اس معاملے کا انکشاف کرنے والی تنظیم عوام کے مطابق وہ شروع سے کہتی رہی ہے کہ عام آدمی پارٹی کو غلط طریقے سے فنڈنگ ​​ہو رہی ہے ، جس کے لئے اس نے پختہ ثبوت بھی دیے تھے۔ یہ ثبوت اتنے پختہ تھے کہ ان کی بنیاد پر ہی ان کمپنیوں اور عام آدمی پارٹی کے خلاف پہلے ہی کارروائی ہو جانی چاہئے تھی۔


عوام کا الزام تھا کہ ان چاروں کمپنیوں نے گزشتہ سال دہلی اسمبلی انتخابات سے پہلے 50-50 لاکھ روپے کا چندہ عام آدمی پارٹی کو دیا تھا۔ عوام نے اس کی شکایت الیکشن کمیشن، اقتصادی کرائم برانچ، آر بی آئی اور کمپنی کے معاملات کی وزارت میں کی تھی۔ وزارت نے انکوائری کی اور کمپنیوں کے اکاؤنٹس کی جانچ پڑتال کی ، تو عوام کے الزامات پہلی نظر میں صحیح پائے گئے۔


عوام کا الزام تھا کہ عآپ کو چندہ دینے والی کمپنیوں کے ایڈریس فرضی ہیں۔ یہ بھی الزام لگایا گیا تھا کہ چاروں میں سے ایک کمپنی کے اکاؤنٹ بک پر جس چارٹیڈ اکاؤنٹنٹ کے دستخط ہیں ، وہ بھی فرضی ہیں۔ کچھ کمپنیوں کے تو ایڈریس جھگیوں میں ملے۔

First published: Jan 21, 2016 08:40 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading