ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مدھیہ پردیش میں گئوکشی کے ملزمین کے خلاف این ایس اے لگائے جانے پر امانت اللہ خان نے کانگریس پر سادھا نشانہ

مدھیہ پردیش میں کمل ناتھ حکومت کے ذریعہ گئوکشی کے تین ملزموں کے خلاف این ایس اے لگائے جانے کا معاملہ طول پکڑتا جارہا ہے اور اس معاملہ کو لے کر کانگریس کی شدید تنقید کی جارہی ہے ۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش میں گئوکشی کے ملزمین کے خلاف این ایس اے لگائے جانے پر امانت اللہ خان نے کانگریس پر سادھا نشانہ
امانت اللہ خان: فائل فوٹو۔

مدھیہ پردیش میں کمل ناتھ حکومت کے ذریعہ گئوکشی کے تین ملزموں کے خلاف این ایس اے لگائے جانے کا معاملہ طول پکڑتا جارہا ہے اور اس معاملہ کو لے کر کانگریس کی شدید تنقید کی جارہی ہے ۔ خیال رہے کہ ریاست کے کھنڈوا ضلع کی انتظامیہ نے گئوکشی کے معاملہ میں تین ملزمین کے خلاف این ایس اے کے تحت کارروائی کی ہے ۔ ریاست میں کانگریس کی حکومت بننے کے بعد گئوکشی پر این ایس اے لگائے جانے کی یہ پہلی کارروائی ہے ۔


عام آدمی پارٹی کے لیڈر امانت اللہ خان نے راہل گاندھی سے معافی مانگنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کانگریس پر شدید حملہ بولا ہے ۔ امانت اللہ خان نے نیوز 18 سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ایسا ملک میں پہلی مرتبہ ہوا ہے جب گئو کشی کے ملزمین پر این ایس اے لگایا گیا ہو ۔ امانت اللہ خان نے کہا کہ ابھی الزام ثابت بھی نہیں ہوا ہے، پھر بھی ایسی کارروائی کی جارہی ہے ، جو بی جے پی نے بھی نہیں کی ۔


قابل ذکر ہے کہ کھنڈوا کے کھرکلی گاوں میں ندی کنارے گئوونش کاٹنے اور اس کا گوشت نکالنے کی اطلاع پولیس کو ملی تھی ۔ اس کے بعد موگھٹ پولیس نے جائے واقعہ پر دبش دے کر ملزمین کو گرفتار کیا ۔ کھنڈوا کے ایس پی سدھارتھ بہوگنا کی پہل پر کھنڈوا کلیکٹر نے تینوں ملزمین کے خلاف این ایس اے کے تحت کارروائی کی ۔

First published: Feb 07, 2019 09:45 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading