ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مخالفت پر بولے اروند کیجریوال، لالو نے زبردستی میرا ہاتھ پکڑ کر اٹھایا

نئی دہلی۔ بہار میں مہاگٹھ بندھن کی تشہیر کرنے اور نتیش حکومت کی حلف برداری کی تقریب میں لالو پرساد یادو سے گلے مل کر اپنوں کے ہی نشانے پر آئے دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے قومی کونسل کے اجلاس میں اپنا موقف واضح کرنے کی کوشش کی۔

  • IBN7
  • Last Updated: Nov 23, 2015 01:33 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
مخالفت پر بولے اروند کیجریوال، لالو نے زبردستی میرا ہاتھ پکڑ کر اٹھایا
نئی دہلی۔ بہار میں مہاگٹھ بندھن کی تشہیر کرنے اور نتیش حکومت کی حلف برداری کی تقریب میں لالو پرساد یادو سے گلے مل کر اپنوں کے ہی نشانے پر آئے دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے قومی کونسل کے اجلاس میں اپنا موقف واضح کرنے کی کوشش کی۔

نئی دہلی۔ بہار میں مہاگٹھ بندھن کی تشہیر کرنے اور نتیش حکومت کی حلف برداری کی تقریب میں لالو پرساد یادو سے گلے مل کر اپنوں کے ہی نشانے پر آئے دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے قومی کونسل کے اجلاس میں اپنا موقف واضح کرنے کی کوشش کی۔ قومی کونسل کی میٹنگ میں کیجریوال نے کہا کہ ہم ہمیشہ لالو کے بدعنوان ریکارڈ کے خلاف رہیں گے اور ان کی مخالفت کرتے رہیں گے۔ ہم ان کی خاندانی سیاست کے بھی خلاف ہیں۔


کیجریوال نے کہا کہ میں بہار گیا تھا۔ نتیش جی اچھے آدمی ہیں۔ عوام نے ہی مجھے ان کے اچھے کاموں کے بارے میں بتایا ہے۔ ہم نے وہاں بی جے پی کے خلاف کام کیا اور مہاگٹھ بندھن کی حمایت کی۔ نتیش کمار کی حلف برداری میں میں منچ پر تھا۔ لالو نے ہی زبردستی میرا ہاتھ پکڑ کر اٹھا دیا اور مجھے گلے بھی لگایا۔  دہلی کے وزیر اعلی کے لالو کے گلے ملنے پر مخالفین نے انہیں خوب نشانے پر لیا۔


عام آدمی پارٹی کے کنوینر اروند کیجریوال نے کہا کہ ہم لالو کی ہمیشہ مخالفت کرتے رہیں گے۔ ہم ان کی خاندانی سیاست کے خلاف ہیں۔ ان کے دو بیٹے وزیر ہیں۔


پیر کو عام آدمی پارٹی کی قومی کونسل کے اجلاس میں ہنگامہ برپا ہے۔ دہلی کے علی پور میں جاری قومی کونسل اجلاس کے باہر ہنگامہ کر رہے کارکنوں کی مخالفت اس بات پر تھی کہ آخر کس طرح بدعنوانی کی مخالفت سے سیاست میں قدم رکھنے والے کیجریوال ایک سزا یافتہ (لالو یادو) سے گلے مل سکتے ہیں؟


بتا دیں کہ قومی کونسل کی میٹنگ چل رہی ہے جبکہ باہر کچھ خواتین سمیت کچھ لوگ جم کر ہنگامہ کر رہے ہیں۔ ان کا الزام ہے کہ یہ لوگ قومی کونسل کے رکن تھے لیکن انہیں غلط طریقے سے باہر کیا گیا ہے۔ ہنگامہ کر رہے لوگوں نے الزام لگایا ہے کہ وہ پارٹی کے بانی ارکان میں تھے لیکن اب پارٹی پر قبضہ ہو گیا ہے۔


اس سے پہلے، پارٹی کے بانی رکن شانتی بھوشن کو ملاقات کے لئے دعوت بھیجا گیا تھا لیکن انہوں نے پارٹی کے کام کاج پر سوال اٹھاتے ہوئے اروند کیجریوال پر حملہ بولا۔ شانتی اور پرشانت بھوشن نے پریس کانفرنس میں کہا کہ اجلاس میں باؤنسر لگائے جائیں گے اور گزشتہ اجلاس جیسا ہی حال ہوگا۔ شانتی بھوشن نے کہا کہ عام آدمی پارٹی میں صرف ایک ہی آدمی کی چلتی ہے۔ پارٹی کو کھاپ کی طرح چلایا جا رہا ہے۔ پارٹی کے بانی رکن شانتی بھوشن نے اس اجلاس کو غیر قانونی قرار دیا۔


سابق وزیر قانون اور سینئر وکیل شانتی بھوشن نے بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار کی حلف برداری تقریب میں کیجریوال کے لالو سے گلے ملنے پر کہا کہ کیجریوال نے بدعنوانی کو گلے لگایا، جبکہ پارٹی بدعنوانی کو ختم کرنے کے لئے بنی تھی۔


قومی کونسل کے اجلاس کے باہر مظاہرہ کر رہے نوشين نے کہا، 'ہم نے خون پسینہ ایک کرکے پارٹی کو کھڑا کیا، انتخابات میں سارے کام کئے، اب ہمیں نکال رہے ہیں۔ بانی ارکان میں شامل ارچنا شریواستو نے بتایا کہ ہمیں 19 تاریخ کو نوٹس ملا، ہمارے 100 ساتھیوں کو نکال دیا گیا۔ ہم 'عام آدمی پارٹی' کوانتشار سے روکنے کا کام کر رہے تھے۔


First published: Nov 23, 2015 01:32 PM IST