உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    خواتین کے Periods کو لیکر سی ایم اروندی کیجریوال نے کیا یہ ٹویٹ، ہو رہا ہے وائرل

    #AbPataChalneDo:  سماجی تصورات کو توڑنے اور ذہنیت کو بدلنے کرنے کیلئے 5 فروری کو ہیپی پیریڈس ڈے  Happy Periods day  منایا گیا اس دن کا سبھی نے استقبال کیا اور اس پر اپنے خیالات بھی ظاہر کئے۔

    #AbPataChalneDo: سماجی تصورات کو توڑنے اور ذہنیت کو بدلنے کرنے کیلئے 5 فروری کو ہیپی پیریڈس ڈے Happy Periods day منایا گیا اس دن کا سبھی نے استقبال کیا اور اس پر اپنے خیالات بھی ظاہر کئے۔

    #AbPataChalneDo: سماجی تصورات کو توڑنے اور ذہنیت کو بدلنے کرنے کیلئے 5 فروری کو ہیپی پیریڈس ڈے Happy Periods day منایا گیا اس دن کا سبھی نے استقبال کیا اور اس پر اپنے خیالات بھی ظاہر کئے۔

    • Share this:
      دہلی: وقت کے ساتھ ساتھ لوگوں کی سوچ بہت ایڈوانس ہوتی جا رہی ہے لیکن اس وقت بھی معاشرے میں کچھ ایسے موضوعات ہیں جن پر بات کرنے سے پھر بھی ہچکچاہٹ محسوس ہوتی ہے۔ ایسا ہی ایک موضوع خواتین کی ماہواری Periods ہے۔ اس موضوع پر کھل کر بات کرنا شرم محسوس کی جاتی ہے جس کی وجہ سے لڑکیوں اور خواتین کو بھی کئی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس پہر سماجی تصورات کو توڑنے اور ذہنیت کو بدلنے کرنے کیلئے 5 فروری کو ہیپی پیریڈس ڈے  Happy Periods day  منایا گیا اس دن کا سبھی نے استقبال کیا اور اس پر اپنے خیالات بھی ظاہر کئے۔ اس پر سی ایم اروند کیجریوال اور آئی اے ایس سجن یادو نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے۔ اس کے بعد سے دونوں کے ٹویٹس وائرل ہو رہے ہیں۔ آئیے آپ کو بتاتے ہیں کہ انہوں نے اپنے ٹویٹ میں کیا لکھا ہے۔
      Periods  ایک taboo subject نہیں ہونا چاہئے
      سی ایم کیجریوال نے اس مہم کی تعریف کرتے ہوئے لکھا، 'پیریڈس سے متعلق سماجی ٹیبوز کو توڑنا ہوگا اور ہمیں حیض کے دوران صفائی اور حفظان صحت کے بارے میں بات کرنی ہوگی۔ لوگوں کو آگاہ کرنا ہوگا۔ Periods کو معاشرے میں ممنوعہ موضوع  taboo subject  نہیں ہونا چاہیے۔



      یہ ناپاک خون نہیں ہے۔
      دوسری طرف آئی اے ایس سجن یادو نے لکھا ہے، 'اگر حیض کی مدت کے دوران نکلنے والے خون کو کوئی  ناپاک سمجھتا ہے، تو ہم پاک ہونے کے دعوے سے کافی دور ہیں۔ ہمیں یاد رکھنا چاہیے کہ ہمارا وجود اسی خون کی وجہ سے ممکن ہے۔ اس نے ہمیں پیٹ میں پالا ہے۔ اسی لیے آج ہم ہیں۔ اس ٹیبو کو ختم کریں اور خاموشی توڑیں۔ اہم بات یہ ہے کہ سجن یادو حکومت ہند کی وزارت خزانہ میں ایڈیشنل سکریٹری کے طور پر کام کر رہے ہیں۔


      دونوں بڑے عہدوں پر موجود ان لوگوں کے ٹویٹس کو ہر طرف سراہا جا رہا ہے۔ سب کا ماننا ہے کہ جب اعلیٰ عہدوں پر فائز لوگ خواتین کے مسئلے پر کھل کر بات کریں گے تو یقیناً غلط فہمیاں ٹوٹیں گی۔

      بتا دیں کہ دہلی کمیشن فار پروٹیکشن آف چائلڈ رائٹس نے ایک پہل کے تحت اس دوران صفائی ستھرائی اور اس سے متعلق سماجی ممنوعات پر بحث شروع کی ہے۔ 5 فروری کو 'ہیپی پیریڈ ڈے' منایا گیا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: