உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: جموں و کشمیر میں دواہم سرنگوں کےپروجیکٹوں کی تیاری کامنصوبہ، عالمی ٹینڈرزکوکیاگیامدعو

    تاہم، 2027 کی آخری تاریخ کے ساتھ اب ٹینڈرز کو مدعو کرنے میں دو سال لگے ہیں۔

    تاہم، 2027 کی آخری تاریخ کے ساتھ اب ٹینڈرز کو مدعو کرنے میں دو سال لگے ہیں۔

    سرنگوں کے یہ منصوبے ایک دہائی قبل تجویز کیے گئے تھے۔ نیشنل ہائی وے 244 چنانی سے خانابل تک جموں و کشمیر میں 274 کلومیٹر کا ایک اسٹریٹجک منصوبہ ہے۔

    • Share this:
      ایک دہائی قبل ایک ایسے متبادل شاہراہ کے ذریعے جموں اور سری نگر (Jammu and Srinagar) کے درمیان ہمہ موسمی رابطہ فراہم کرنے کا تصور کیا گیا تھا، جس سے عوام کے ساتھ فوجی نقل و حرکت میں آسانی آسکے۔ آخر کار حکومت نے جموں و کشمیر (Jammu and Kashmir) میں دو اہم سرنگوں کے پروجیکٹوں کے لیے عالمی ٹینڈرز طلب کیے ہیں جن کی لاگت تقریباً 6,000 کروڑ روپے ہوگی۔

      نیوز 18 نے 1 اگست کو 10.3 کلومیٹر طویل سنگھ پورہ-وائلو ٹنل (Singhpora-Vailoo Tunnel) اور تقریباً 8 کلومیٹر لمبی سدھمہادیو-درنگا ٹوئن ٹیوب ٹنل (Sudhmahadev–Dranga Twin Tube Tunnel) کے لیے مدعو بین الاقوامی بولیوں تک رسائی حاصل کی ہے، جس کی لاگت بالترتیب 3,253 کروڑ روپے اور 2,598 کروڑ روپے ہونے کی توقع ہے۔ پہلے کی تکمیل کی آخری تاریخ پانچ سال ہے اور بعد کے لیے یہ چار سال ہے۔ پہلی ٹنل کے لیے 38 کلومیٹر اور دوسری ٹنل کے لیے پانچ کلومیٹر کی اپروچ سڑکیں بنائی جائیں گی۔

      کلیدی پروجیکٹس

      یہ سرنگیں مجوزہ نیشنل آئی وے 244 کو ہر موسم کی سڑک بننے میں مدد دیں گی۔ نیوز 18 کو معلوم ہوا ہے کہ ڈائریکٹوریٹ جنرل آف ملٹری آپریشن نے گزشتہ سال 11 جنوری کو حکومت کو لکھے گئے ایک خط میں نیشنل آئی وے 244 کو ترجیحی بنیاد پر ترقی دینے کی درخواست کی تھی تاکہ فوجی ٹریفک کی آسانی سے نقل و حرکت کو ممکن بنایا جا سکے۔

      نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی نے 2020 میں یہ بھی درخواست کی تھی کہ ہائی وے کو اگلے تین سال میں اس سڑک پر موجود تمام سرنگوں سمیت فاسٹ ٹریک موڈ پر مکمل کیا جائے۔ تاہم 2027 کی آخری تاریخ کے ساتھ اب ٹینڈرز کو مدعو کرنے میں دو سال لگے ہیں۔

      جموں و کشمیر میں سرنگ کے پچھلے منصوبے:

      وزیر اعظم نریندر مودی نے 2 اپریل 2017 کو جموں اور کشمیر میں چنانی-ناشری سرنگ (Chenani-Nashri tunnel) کو قوم کے نام وقف کیا۔ یہ جموں اور کشمیر میں ادھم پور اور رامبن کے درمیان ہندوستان کی سب سے طویل 9 کلومیٹر دو طرفہ ہائی وے سرنگ ہے، جس سے جموں کے درمیان سفر کا وقت کم ہو گیا ہے۔ اور سری نگر 2 گھنٹے تک تقریباً 41 کلومیٹر سڑک کی لمبائی کو نظرانداز کرتے ہوئے اور ہر موسم میں گزرنے کو یقینی بنایا جائے گا۔ اس سرنگ کی تعمیر تقریباً 3,720 کروڑ روپے کی لاگت سے کی گئی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: WhatsAppنے22لاکھ سے زیادہ اکاؤنٹس پر لگائی پابندی، جانیے کیا ہے وجہ

      یہ بھی پڑھیں:
      امیت شاہ نے کہا’احتیاطی خوراک‘کا کام پورا ہونے کے بعد بنیں گے شہریت قوانین کے Rules

      وہ نیشنل ہائی وے 244 پر آئیں گے، جو سری نگر اور جموں و کشمیر کے سرحدی علاقوں کو جواہر ٹنل کے ذریعے جموں سری نگر ہائی وے پر ٹریفک کے حجم کو کم کرنے کے لیے ایک ہمہ موسمی اسٹریٹجک سڑک کے ساتھ جوڑنے کا ایک متبادل راستہ ہے۔ سرنگوں کے یہ منصوبے ایک دہائی قبل تجویز کیے گئے تھے۔ نیشنل ہائی وے 244 چنانی سے خانابل تک جموں و کشمیر میں 274 کلومیٹر کا ایک اسٹریٹجک منصوبہ ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: