ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سونیا گاندھی تک پہنچی ہیلی کاپٹر گھوٹالہ کی آنچ، طلب کی اعلیٰ سطحی میٹنگ

نئی دہلی۔ اگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے پر بی جے پی کے حملے کا جواب دینے کے لئے آج صبح کانگریس کی اعلی سطحی میٹنگ ہوئی۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Apr 27, 2016 12:01 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سونیا گاندھی تک پہنچی ہیلی کاپٹر گھوٹالہ کی آنچ، طلب کی اعلیٰ سطحی میٹنگ
نئی دہلی۔ اگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے پر بی جے پی کے حملے کا جواب دینے کے لئے آج صبح کانگریس کی اعلی سطحی میٹنگ ہوئی۔

نئی دہلی۔ اگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے پر بی جے پی کے حملے کا جواب دینے کے لئے آج صبح کانگریس کی اعلی سطحی میٹنگ ہوئی۔ 10 جن پتھ پر سونیا گاندھی کی قیادت میں ہوئی اس میٹنگ میں ملكا ارجن کھڑگے، جيوترادتيہ سندھیا اور آنند شرما سمیت کانگریس کے کئی سینئر رہنما شامل ہوئے۔ ذرائع کے مطابق میٹنگ میں سونیا نے کہا کہ کسی نے کوئی غلط اور غیر قانونی کام نہیں کیا ہے، ہم پارلیمنٹ میں حکومت کو جواب دینے کو تیار ہیں۔


چھ سال پہلے ہوئے آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے میں بدعنوانی کی آنچ اب کانگریس صدر سونیا گاندھی تک پہنچ گئی ہے۔ اس سودے میں اٹلی کی عدالت کے فیصلے کی کاپی سامنے آنے کے بعد کانگریس پر سنگین الزام لگ رہے ہیں۔ 225 صفحات کے اس فیصلے کی کاپی میں کانگریس صدر سونیا گاندھی اور سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کے نام شامل ہیں۔ فیصلے میں 2008 کا ایک خط بھی دکھایا گیا ہے جس میں سودے کے پیچھے کانگریس صدر سونیا گاندھی کو مین ڈرائیونگ فورس بتایا گیا ہے۔ یہ خط سودا کرا رہے دلال كرشچن مائیکل نے ہندستان میں ہیلی کاپٹر کمپنی کے سیلزصدر پیٹر ہلیٹ کو لکھا تھا۔


دو سو پچیس صفحات کے فیصلے میں عدالت نے اس بات کا بھی انکشاف کیا ہے کہ کس طرح 30 ملین یورو کی رشوت ہندستان میں سیاسی لوگوں، ایئر فورس اور نوکرشاہوں کے درمیان بانٹی گئی۔ فیصلے کے مطابق 30 ملین یورو میں 15.6 ملین سیاسی لوگوں کو، 6 ملین ایئر فورس کو اور 8.4 ملین نوکر شاہوں کو تقسیم کیا گیا۔ فیصلے میں کانگریس لیڈر آسکر فرنانڈیز اور سابق این ایس اے ایم کے نارائنن کے نام کا بھی ذکر کیا گیا ہے۔ فیصلے میں یہ بھی مانا گیا ہے کہ فضائیہ کے سابق سربراہ ایس پی تیاگی اور ان کے خاندان کو سودے کے لئے پیسے دیئے گئے تھے۔ اٹلی کی عدالت نے اگسٹا ویسٹ لینڈ کمپنی کے اورسی کو ہندوستان میں رشوت دینے کا مجرم سمجھتے ہوئے ساڑھے چار سال کی سزا سنائی ہے۔


کیا ہے آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملہ؟

دو ہزار دس میں جب یو پی اے کی حکومت تھی، تب آگسٹا ویسٹ لینڈ سے 12 ہیلی کاپٹروں کی خریداری کی ڈیل ہوئی تھی۔ ڈیل کے تحت ملے 3 ہیلی کاپٹر آج بھی دہلی کے پالم ائیر بیس پر کھڑے ہیں۔ انہیں استعمال میں نہیں لایا گیا۔ یہ سودا 3 ہزار چھ سو کروڑ روپے کا تھا۔ پورے سودے کا 10 فیصد حصہ رشوت میں دینے کی بات سامنے آئی تھی۔

اس کے بعد یو پی اے حکومت نے ڈیل منسوخ کر دی تھی۔ تب ایئر فورس چیف رہے ایس پی تیاگی سمیت 13 لوگوں پر کیس درج کیا گیا تھا۔ جس میٹنگ میں ہیلی کاپٹر کی قیمت طے کی گئی تھی، اس میں یو پی اے حکومت کے کچھ وزیر بھی موجود تھے۔ اس وجہ سے کانگریس پر بھی سوال اٹھے تھے۔

اٹلی کی عدالت نے فیصلہ دیا ہے کہ ہیلی کاپٹر سودے میں بدعنوانی ہوئی ہے اور اس میں ہندستانی فضائیہ کے سابق چیف ایس پی تیاگی شامل تھے۔ فیصلے میں یہ نہیں بتایا گیا تھا کہ سونیا، منموہن اور باقی کانگریس لیڈروں کا کردار کیا تھا۔
First published: Apr 27, 2016 12:01 PM IST