ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پرانی دہلی کے تقی محمد نے پتنگوں کی روایت کو بنایا کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں ہتھیار ، جانئے کیسے

عام لوگوں کے ذریعہ 15 اگست یعنی یوم آزادی کے موقع پر دہلی میں بڑی تعداد میں پتنگ بازی کی جاتی ہے ۔ یہ دہلی کی روایت ہے کہ نوجوانوں اور بچوں کے ساتھ ساتھ ہر عمر کے لوگ پتنگ بازی میں شریک ہوتے ہیں ۔

  • Share this:
پرانی دہلی کے تقی محمد نے پتنگوں کی روایت کو بنایا کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں ہتھیار ، جانئے کیسے
پرانی دہلی کے تقی محمد نے پتنگوں کی روایت کو بنایا کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں ہتھیار ، جانئے کیسے

ملک ابھی بھی کورونا وبا کی زد میں ہے ، ایسی صورتحال میں عام لوگ مضبوطی سے اس جنگ کا مقابلہ کرنے کے لئے آگے آرہے ہیں ۔ دہلی کے تقی محمد پتنگ کے ذریعہ عام لوگوں میں بیداری پیدا کرنے میں مصروف ہیں ۔ وہ پتنگ کے ذریعہ معاشرے کو کورونا کے خطرہ سے آگاہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ پرانی دہلی کے کوچہ پنڈت میں رہنے والے تقی محمد نے لوگوں کو بیدار کرنے کے لیے اپنے خرچ پر اسٹیکر بنوائے ہیں اور اسٹیکروں کو یوم آزادی پر اڑنے والی پتنگوں میں لگایا ہے ۔


دراصل عام لوگوں کے ذریعہ 15 اگست یعنی یوم آزادی کے موقع پر دہلی میں بڑی تعداد میں پتنگ بازی کی جاتی ہے ۔ یہ دہلی کی روایت ہے کہ نوجوانوں اور بچوں کے ساتھ ساتھ ہر عمر کے لوگ پتنگ بازی میں شریک ہوتے ہیں ۔ تقی محمد بتاتے ہیں کہ یوم آزادی کے جشن اور دہلی کی روایت کو دیکھتے ہوئے انھوں نے ان پتنگوں کے ذریعہ عام لوگوں کو کورونا وبا سے آگاہ کرنے کا فیصلہ کیا اور اس کے لئے کورونا سے بچنے کی تدابیر اور احتیاط پر مبنی اسٹیکر چھپوائے اور پھر ان کو پتنگوں پر چسپاں کر کے لوگوں تک پہنچایا جا رہا ہے ۔ تقی محمد کہتے ہیں کہ وہ اپنا کام کر رہے ہیں اور اور وہ اپنے مقصد کی خاطر 5000 پتنگیں مفت تقسیم کریں گے ۔


رانی دہلی کے کوچہ پنڈت میں رہنے والے تقی محمد نے لوگوں کو بیدار کرنے کے لیے اپنے خرچ پر اسٹیکر بنوائے ہیں اور اسٹیکروں کو یوم آزادی پر اڑنے والی پتنگوں میں لگایا ہے ۔
رانی دہلی کے کوچہ پنڈت میں رہنے والے تقی محمد نے لوگوں کو بیدار کرنے کے لیے اپنے خرچ پر اسٹیکر بنوائے ہیں اور اسٹیکروں کو یوم آزادی پر اڑنے والی پتنگوں میں لگایا ہے ۔


دہلی میں کورونا کی صورتحال سنگین

دہلی میں روزانہ بڑی تعداد میں کورونا وائرس متاثرین سامنے رہے ہیں ۔ روزانہ ایک ہزار سے زیادہ کیسیز سامنے آ رہے ہیں ۔ تاہم دہلی کے لوگوں میں کورونا وائرس کو لے کر احتیاط کی کمی دیکھنے میں آرہی ہے ۔ تقی محمد کہتے ہیں کہ پرانی دہلی کا جس طرح کا علاقہ ہے اور جس طرح آبادی بہت زیادہ ہے ، ایسے حالات میں لوگوں کو بہت زیادہ احتیاط برتنے کی ضرورت ہے ۔ دہلی میں ایک لاکھ چالیس ہزار سے زیادہ کورونا کے کیسیز سامنے آ چکے ہیں ۔ پوری دنیا میں 3 کروڑ سے زیادہ افراد کرونا سے متاثر ہو چکے ہیں ۔ دہلی حکومت اور مرکزی حکومت دونوں کافی کوششیں کر رہی ہیں ، ایسے میں لوگوں کو بھی آگے آنے کی  ضرورت ہے ۔

پتنگوں پر لگے اسٹیکر پر احتیاطی تدابیر

تقی محمد کا کہنا ہے وہ چاہتے ہیں آسمان میں اونچی اڑنے والی پتنگ جہاں بھی کٹ کر پہنچے وہاں پر کورونا بیداری کا پیغام پہنچے ۔ ایک اسٹیکر پر لکھا گیا کورونا میں کس طرح کی علامات سامنے آتی ہیں ۔ کھانسی نزلہ بخار اور سانس لینے میں پریشانی کورونا کی علامات ہیں ۔ ایک اسٹیکر پر لکھا گیا ہے کورونا سے بچنے کے لیے لئے ماسک اور سماجی دوری اختیار کریں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Aug 13, 2020 06:49 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading