ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مسلمانوں کو ہندؤں کے مذہبی جذبات کا احترا م کرنا چاہئے: احمد بخاری

نئی دہلی: دہلی کی شاہی جامع مسجد کے امام مولانا سید احمد بخاری نے مسلمانوں سے اپنے مذہب پر عمل کرنے کے ساتھ ساتھ ہندوؤں کے مذہبی جذبات کا احترام کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ملک سے مذہبی منافرت ختم کرنے کا واحد راستہ یہ ہے کہ تمام مذاہب کا احترام کیا جائے۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 09, 2015 06:55 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
مسلمانوں کو ہندؤں کے مذہبی جذبات کا احترا م کرنا چاہئے: احمد بخاری
نئی دہلی: دہلی کی شاہی جامع مسجد کے امام مولانا سید احمد بخاری نے مسلمانوں سے اپنے مذہب پر عمل کرنے کے ساتھ ساتھ ہندوؤں کے مذہبی جذبات کا احترام کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ملک سے مذہبی منافرت ختم کرنے کا واحد راستہ یہ ہے کہ تمام مذاہب کا احترام کیا جائے۔

نئی دہلی: دہلی کی شاہی جامع مسجد کے امام مولانا سید احمد بخاری نے مسلمانوں سے اپنے مذہب پر عمل کرنے کے ساتھ ساتھ ہندوؤں کے مذہبی جذبات کا احترام کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ملک سے مذہبی منافرت ختم کرنے کا واحد راستہ یہ ہے کہ تمام مذاہب کا احترام کیا جائے۔


اترپردیش میں دادری کے بساہڑا گاوں میں گائے کے گوشت کی موجودگی کی افواہ پھیلنے کے بعد محمد اخلاق کے قتل بعد کے بعد مختلف پارٹیوں کی طرف سے سیاسی اور نفر ت آمیز بیانوں کے دوران انہوں نے کہا کہ اترپردیش کی حکومت کو مقتول اخلاق اور ان کے گھر والوں کو انصاف دلانا چاہئے۔ محض 45 لاکھ روپے کا معاوضہ دے دینے سے انہیں انصاف نہیں مل سکتا۔


امام بخاری نے قانون و انتظام کی صورتحال پر قابو نہ پانے کے لئے علاقے کے ڈی ایم اور ایس ایس پی کو ذمہ دار ٹہراتے ہوئے اترپردیش حکومت سے ان دونوں کی فوری معطلی کا انہوں نے مطالبہ کیا تاکہ محمد اخلاق کے گھر والوں کو انصاف کی طرف پہل کا احساس اور علاقے کی صورتحال بھی معمول پر واپس آسکے۔


امام بخاری نے دادری معاملے کو اقوام متحدہ لیجانے کی بات کرنے والے اترپردیش کے ایک وزیر کا نام لئے بغیر کہا کہ ان کے پاس اقوام متحدہ جانے کا کوئی جواز نہیں ہے۔ بحیثیت وزیر پہلے انہیں دادری کا دورہ کرنا چاہئے جہاں ریاستی حکومت کا کوئی اہم لیڈر اب تک نہیں گیا ہے۔


انہوں نے چند ممبران اسمبلی کی طر ف سے بیف پارٹی کرنے کے عمل کو شرمناک اور نفرت انگیز قرار دیتے ہوئے اس کی شدید مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ اس حرکت سے پورے ہندستان میں نفرت کا ماحول پیدا ہوگیا۔ اس لئے ایسی منافرت پھیلانے والوں کے خلاف سخت کارروائی ہونی چاہئے۔


امام بخاری نے بساہڑا گاوں واقعہ کے بعد وہاں جاکر نفرت انگیز اور ’تن من دھن اور گن‘ جیسے بیان دینے والوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کرنے کا اترپردیش حکومت سے مطالبہ کیا ہے تاکہ ایسی نفرت انگیز بیان بازی پر روک لگائی جاسکے۔ خیال رہے کہ امام بخاری نے اس سے قبل پورے ہندستان میں گائے کے ذبیحہ پر پابندی لگانے کا بھی حکومت سے مطالبہ کیا تھا۔

First published: Oct 09, 2015 06:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading