உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مرکزی حکومت کشمیر پالیسی پر فوری نظر ثانی کیلئے اقدامات کرے : شاہی امام احمد بخاری

    جامع مسجد دہلی کے شاہی امام سید احمد بخاری: فائل فوٹو

    جامع مسجد دہلی کے شاہی امام سید احمد بخاری: فائل فوٹو

    نئی دہلی : وادئ کشمیر میں بدترین خون خرابے میں ایک درجن سے زائد مسلم نوجوانوں کی سیکوریٹی فورسیز کی فائرنگ میں ہلاکت پر شدید تشویس کا اظہارکرتے ہوئے شاہی امام مولاناسیداحمدبخاری نے کہاکہ کشمیر میں حالات دن بدن بد سے بدتر ہوتے جارہے ہیں۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : وادئ کشمیر میں بدترین خون خرابے میں ایک درجن سے زائد مسلم نوجوانوں کی سیکوریٹی فورسیز کی فائرنگ میں ہلاکت پر شدید تشویس کا اظہارکرتے ہوئے شاہی امام مولاناسیداحمدبخاری نے کہاکہ کشمیر میں حالات دن بدن بد سے بدتر ہوتے جارہے ہیں۔ریاستی حکومت قانون وانتظام کو برقراررکھنے میں پوری طرح ناکام ہوچکی ہے، ا سلئے مرکزی حکومت کو کشمیر پالیسی پر فوری طورپرنظر ثانی کیلئے اقدامات کرنی چاہئے کیونکہ تشدد کے ذریعہ تشدد کو نہیں دبایاجاسکتا۔ہمیں بالآخر اختلافات کو ختم کرکے بات چیت کیلئے بیٹھناہوگا۔انہوں نے کہاکہ ہم ہمیشہ یہ کہتے رہے ہیں کہ کشمیر ہمارا ہے لیکن کشمیریوں کے تعلق سے بھی یہ کہناہوگا کہ وہ بھی ہمارے ہیں اور ہمیں کشمیری عوام کوبھی اعتماد میں لیناہوگا۔
      گزشتہ روز کشمیر میں برہان وانی نامی ایک نوجوان اور اس کے دوساتھیوں کی سیکوریٹی فورسیز کے ساتھ تصادم میں ہلاکت کے بعد سرینگر سمیت وادی کے کئی علاقوں میں تشد د پھیل گیا تھا اور سیکوریٹی فورسیز کی کارروائی میں تقریبا ایک درجن کشمیری مسلم نوجوانوں کو اپنی جان سے ہاتھ دھوناپڑا۔ وادئ کشمیر میں سیکوریٹی فورسیز اور انتظامیہ کے ظلم وستم کی داستان بہت طویل ہے سابق میر واعظ مولوی فاروق مرحوم کے جنازے میں شرکاء پر اسی طرح فائرنگ کی گئی تھی اور متعدد افراد کو اپنی جان سے ہاتھ دھونا پڑاتھا۔
      اخباری اطلاعات کے مطابق برہان وانی کے جنازہ میں شریک نوجوان سیکوریٹی فورسیز اور انتظامیہ کے خلاف زبردست احتجاج کررہے تھے ، نہتے کشمیری نوجوانوں پر سیکوریٹی فورسیز کی فائرنگ سے صورت حال نہایت تشویسناک ہوگئی ہے۔ مولانابخاری نے کہاکہ سیکوریٹی فورسیز جس انداز سے نہتے کشمیری نوجوانوں پر فائرنگ کررہی تھی اس سے اندازہ ہوتاہے کہ ہماری فورسیز اسرائیلی فورسیز سے تربیت حاصل کرکے ظلم کے پہاڑ توڑ رہی ہے۔
      انہوں نے کہاکہ فلسطین میں اسرائیل نے 60 سال کے دوران بے گناہ نہتے فلسطینیوں کا جو خون بہایاہے کشمیر میں کل کی واردات اس کا نقطۂ آغاز ہے لیکن حکومت نے اگر اپنی کشمیر پالیسی پر فوری طور نظر ثانی نہیں کی تو کشمیر میں صورت حال دھماکہ خیز ہوسکتی ہے اور اس کا ملک بھر میں قانون وانتظام کی صورت حال پر منفی اثر پڑسکتاہے۔
      First published: