ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

تین طلاق پرسپریم کورٹ کا فیصلہ غلط اورغیرآئینی: مسلم پرسنل لا بورڈ

مسلم پرسنل لا بورڈ کے جنرل سکریٹری مولانا محمد ولی رحمانی نے کہا کہ تین طلاق پرسپریم کورٹ کا فیصلہ غلط اورغیرآئینی ہے۔

  • Share this:
تین طلاق پرسپریم کورٹ کا فیصلہ غلط اورغیرآئینی: مسلم پرسنل لا بورڈ
مولانا محمد ولی رحمانی: تصویر نیوز 18 اردو

نئی دہلی: مسلم پرسنل لا بورڈ کے جنرل سکریٹری مولانا محمد ولی رحمانی نےتین طلاق پر بڑا بیان دیتے ہوئے سپریم کورٹ پرسوال اٹھایا ہے۔ مولانا ممد ولی رحمانی نے آج یہاں نیوز 18 اردو سے ایکسکلوزیو بات چیت  میں کہا کہ تین طلاق پرسپریم کورٹ کا فیصلہ غلط اورغیرآئینی ہے۔


مولانا محمد ولی رحمانی نے کہا کہ سپریم کورٹ نے ٹریڈیشن (روایت) کو بھی نہیں مانا ہے۔ تین طلاق کی روایت 1400 سال قدیم ہے، اس کو خارج نہیں کیا جاسکتا ہے۔ مرکزی حکومت کو جمہوریت کا احترام کرنا چاہئے۔ سپریم کورٹ نے کسٹم کو سپریم کورٹ نے 1000 سال پرانے ٹریڈیشن کو بھی آئین کی حیثیت دی ہے۔


انہوں نے یہ بھی کہا کہ تین طلاق شریعت کا حصہ ہے، تین طلاق کا ثبوت حدیث شریف میں موجود ہے۔ مرکزی حکومت اور سپریم کورٹ کو اس معاملے میں مداخلت نہیں کرنی چاہئے تھی، لیکن مسلم پرسنل لا کو نظر انداز کردیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا اس معاملے میں قانون بنانا غیر قانونی ہے۔


مسلم پرسنل لا بورڈ کے ذریعہ مرکزی حکومت کو جمہوریت کی آوازسننے کی نصیحت پر بی جے پی نے جواب دیا ہے۔ بی جے پی کی طرف سے مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے پرسنل لا بورڈ کو مشورہ دیا ہے کہ وہ خواتین کی آواز سنیں۔ حکومت جمہوریت کی آواز سن رہی ہے۔

 

 
First published: Jul 17, 2018 08:07 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading