ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اکھلیش یادو نےکہا 'اگرنہیں کیا یہ کام توپاکستان کا مقابلہ کرنا مشکل'۔

اترپردیش کے سابق وزیراعلیٰ نے کہا کہ حکومت پاکستان کوسبق سکھانا چاہتی ہے، لیکن وہ یہ نہیں بھولیں کہ چین بھی اس کے ساتھ ہے۔ 

  • Share this:
اکھلیش یادو نےکہا 'اگرنہیں کیا یہ کام توپاکستان کا مقابلہ کرنا مشکل'۔
سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو۔

اترپردیش کے سابق وزیراعلیٰ اورسماجوادی پارٹی کے صدراکھلیش یادو نے پاکستان اور چین کولے کربڑا بیان دیا ہے۔ اکھلیش یادونے کہا کہ حکومت کولانگ ٹرم اسٹریٹجی (طویل مدتی حکمت عملی) بنانے کی ضرورت ہے، ورنہ پاکستان جیسی طاقتوں کامقابلہ نہیں کرسکتے۔ مرکزی حکومت کویہ بھی دیکھنا ہوگا کہ کون سا ملک کس کے ساتھ کھڑا ہے۔


انہوں نے کہا کہ حکومت اگرپاکستان کوسبق سکھانا چاہتی ہے تویہ نہ بھولیں کہ چین بھی اس کے ساتھ کھڑا ہے۔ اناو میں وزیراعظم نریندرمودی پرنشانہ سادھتے ہوئے اکھلیش یادو نے کہا کہ مارکیٹنگ اوربرانڈنگ سے کام نہیں چلے گا۔ حکومت کوکچھ ٹھوس کام اورکچھ ٹھوس فیصلے لینے ہوں گے۔


وزیراعظم کے بیان 'اب مئی میں کروں گا من کی بات' کولےکراکھلیش یادونےکہا کہ ان لوگوں کولگتا ہے کہ ان کی سرکارپھرواپس آرہی ہے۔ ایسے میں وہ لوگ اسٹیج سے چیخ چیخ کرمارکیٹنگ - برانڈنگ کررہے ہیں۔ اکھلیش نے مودی حکومت پرطنزکستے ہوئے کہا کہ مارکیٹنگ برانڈنگ سے کام نہیں چلےگا۔ حکومت کوکچھ ٹھوس کام اورکچھ ٹھوس فیصلے لینے ہوں گے۔


سماجوادی پارٹی کے سربراہ نے دہشت گردی کے موضوع کولے کرکہا کہ ہم آج بھی کہہ رہے ہیں کہ اپوزیشن حکومت کے ساتھ ہے، لیکن حکومت کوسرحدوں کومحفوظ کرنےکے لئے طویل مدتی حکمت عملی  بنانی چاہئے۔ اکھلیش یادونے کہا کہ طویل مدتی حکمت عملی نہیں ہوگی توآپ پاکستان جیسی طاقتوں کامقابلہ نہیں کرسکتے۔

انہوں نے مثال دیتے ہوئے کہا کہ ابھی سعودی عرب سے ولی عہدآئے تھے، وہ پہلے پاکستان گئے، اس کی مدد کی اوراس کے بعد ہندوستان آئے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان آنےکے بعد وہ وزیراعظم سے گلے ملے اورہندوستان کی مدد کرنے کے بعد چین چلے گئے۔ وہاں اس کی بھی مدد کی، ایسے میں آس پاس کے جوملک ہیں، ان کا کردارکیا ہوگا، مرکزاس پرغورکرے۔ اکھلیش یادونے کہا کہ حکومت لوگوں کووہی بتائے، جوکررہی ہے۔
First published: Feb 25, 2019 12:30 PM IST