உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    راہل گاندھی کو وزیراعظم کے طور پر دیکھنے کا فیصلہ وقت پر کیاجائے گا: اکھلیش یادو

    اکھلیش یادو۔ فائل فوٹو

    اکھلیش یادو۔ فائل فوٹو

    اکھلیش یادو نے بندیل کھنڈ میں خودکشی کرنے والے متوفی کسانوں کے اہل خانہ کو 25-25 ہزار روپئے نقد اور ایک ایک لاکھ پارٹی فنڈ سے دیئے جانے کی بات کہی۔

    • Share this:
      مہوبہ: راحت یا سیست، جی ہاں بندیل کھنڈ کے مہوبہ میں سابق وزیراعلیٰ اکھلیش یادو کے پہنچتے ہی سیاسی گلیاروں میں بحث شروع ہوگئی ہے۔ دراصل کرناٹک میں بی جے پی کی ڈھائی دن کی حکومت گرتے ہی پورا اپوزیشن جیت سے لبریز بی جے پی کو گھیرنے کی تیاری میں ہے۔

      بندیل کھنڈ دورہ پر آئے سابق وزیراعلیٰ اکھلیش یادو کے اتوار کو فیڈرز سے ملاقات  کرتے ہی سیاست تیز ہونے کے آثار بڑھنے لگے ہیں۔ اکھلیش یادو نے خودکشی کرنے والے متوفی کسانوں کے اہل خانہ کو 25-25 ہزار روپئے نقد اور ایک ایک لاکھ پارٹی فنڈ سے دیئے جانے کی بات کہی۔ اس دوران اکھلیش یادو نے بی جے پی حکومت پر جم کر تنقید کی۔

      مدھیہ پردیش کے دورہ سے سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو سیدھے مہوبہ کے کرہرا گائوں پہنچے۔ یہاں انہوں نے آگ لگاکر جان دینے والے کسان ٹھاکرداس اہروار اور راج بہادر شریواس کے اہل خانہ سے ملاقات کرکے ان کے مسائل کو بغور سنا۔ اس کے بعد اکھلیش یادو نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے مرکز اور ریاستی حکومت کی اسکیموں پر سوال کھڑے کئے۔

      انہوں نے کہاکہ کسانوں کے گھروالوں کی مدد کی جائے گی۔ ایک ایک لاکھ روپئے انہیں پارٹی فنڈسے دیا جائے گا۔ ابھی 25-25 ہزار روپئے دیئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ سماجوادی نے ہمیشہ کسانوں کی مدد کی ہے۔ حکومت کو بھی ایسے کسان خاندانوں کی کسان بیمہ سے مدد کرنی چاہئے۔ مرکز کی بی جے پی حکومت کسانوں کی آمدنی دوگنی کرنے کا دعویٰ کررہی ہے، لیکن 2014 سے ضلع میں قحط سالی کے سبب کسانوں کی اموات کا سلسلہ نہیں رک رہا ہے۔ البتہ کسان کریڈٹ کارڈ سے بینک ملازمین کی پرسنل کریڈٹ خوب بڑھ رہی ہے۔

      وہیں کرناٹک کے موضوع پر اکھلیش نے کہا کہ وہاں اپوزیشن کی جیت سے جمہوریت کی حفاظت ہوئی ہے اور بی جے پی کو منہ کی کھانی پڑی ہے۔

      انہوں نے کہا کہ آئندہ 2019 الیکشن میں بی جے پی کی الٹی گنتی شروع ہوجائے گی اور ہمارے اتحاد کی حکومت ملک میں چلے گی۔ اکھلیش یادو نے سپریم کورٹ کو مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ سپریم کورٹ نے جمہوریت کی حفاظت کی ہے۔

      کانگریس کے ساتھ اتحاد پر انہوں نے 2019 کا انتظار کرنے کی بات کہی۔ اکھلیش نے کہا کہ 2019 میں اگراتحاد ہوگا تو آپ کو پتہ چل جائے گا، ہم سب مل کر بی جے پی کو روکیں گے۔

      راہل گاندھی کے خود کو وزیراعظم بننے کی خواہش پر اکھلیش نے کہاکہ راہل گاندھی کو وزیراعظم کے طور پر دیکھنا، یہ وقت طے کرے گا۔ کانگریس سے ہمارے تعلقات اچھے ہیں، وہ بنے رہیں گے۔ بی ایس پی بھی ہمارے ساتھ آرہی ہے۔ اب کی بار عوام باہر نکل کر ووٹ کرکے بی جے پی کو جواب دے گی۔

      انہوں نے کہاکہ بی جے پی کی حکومت کتوں سے بچوں کو نہیں بچاپارہی ہے۔ حکومت اور جانوں کے نام پر حکومت بنالی اور کسانوں کو دھوکہ دیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ سماجوادی پارٹی سبھی پارٹیوں کو ساتھ لے کر چل رہی ہے۔ سبھی چھوٹی جماعتیں ساتھ آچکی ہیں۔ بی جے پی نے تو ملک میں 45 اتحاد کئے، ہم تو8-7 ہی کررہے ہیں۔

       

       
      First published: