ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

علامہ مفتی اختررضا خاں قادری بریلوی لاکھوں سوگواروں کی موجودگی میں بریلی شریف میں سپرد خاک

سنی بریلوی مسلک کے ممتاز مذہبی رہنما حضور الشریعہ مفتی اختررضا خاں کو اتواربریلی میں لاکھوں سوگواروں کی موجودگی میں سپردخاک کردیا گیا۔

  • UNI
  • Last Updated: Jul 22, 2018 08:03 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
علامہ مفتی اختررضا خاں قادری بریلوی لاکھوں سوگواروں کی موجودگی میں بریلی شریف میں سپرد خاک
علامہ مفتی اختررضا خان بریلوی کی نماز جنازہ میں لاکھوں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی

بریلی:  اترپردیش کے شہر بریلی میں سنی بریلوی مسلک کے ممتاز مذہبی رہنما حضور الشریعہ مفتی اختر رضا خاں عرف ازهري میاں کو اتوار کو سپردخاک کردیا گیا۔ طویل وقت کی بیماری کے بعد جمعہ کے روز ان کا انتقال ہو گیا تھا۔ ان کی عمر شریف 75 سال  تھی۔

اس موقع پر لاکھوں کی تعداد میں مختلف اضلاع سے آئے لوگوں نے ان کے جنازے میں شرکت کی۔ ازہری میاں کا نام مسلمانوں میں ایک خاص مقام رکھتا ہے ان کا تعلق مسلک بریلوی کے بانی علامہ احمد رضا خاں بریلوی کے خانوادے سے تھا۔ ایمرجنسی کے دوران انہوں نے نسبندی کے خلاف فتوی بھی دیا تھا، جس کی وجہ سے وہ سرخیوں میں رہے تھے ۔

عالم دین ازهري میاں نے جامعہ ازہر مصر میں تعلیم حاصل کرنے کے بعد بہت سی مذہبی کتابیں بھی لکھی تھیں۔ بریلی میں واقع محلہ سوداگراں کے رہنے والے ازهري میاں کو ان کی رہائش گاہ کے پاس ہی سپرد خاک کیا گیا۔

عالم دین کے انتقال پر بریلی حلقہ سے ممبرپارلیمنٹ اور مرکزی وزیر سنتوش گنگوار سمیت کئی اہم رہنماؤں نے خراج عقیدت پیش کی ہے۔ سنتوش گنگوار نے کہا کہ ان کی موت سے سماجی نقصان ہوا ہے۔

حضور تاج الشریعہ مفتی اختر رضا خان کے انتقال کی خبر ملتے ہی سوشل میڈیا پر تعزیتی پیغامات کا لامتناہی سلسلہ شروع ہوگیا تھا۔ حضرت کی نماز جنازہ میں ملک کے مختلف خطوں سے لاکھوں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی اور سپرد خاک کیا گیا۔ 

First published: Jul 22, 2018 07:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading