ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اقلیتی کردار کا معاملہ : علی گڑھ مسلم یونیورسٹی نے جواب داخل کیا ، مرکزی حکومت کے فیصلہ کو بتایا سیاست سے حوصلہ افزا

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی نے اقلیتی درجہ سے متعلق مودی حکومت کے فیصلہ کو سیاست سے حوصلہ افزا قرار دیا ہے۔ اقلیتی درجہ سے متعلق مرکزی حکومت کے حلف نامہ کا جواب داخل کرتے ہوئے اے ایم یو نے یہ دعوی کیا ہے

  • Pradesh18
  • Last Updated: Aug 17, 2016 06:31 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اقلیتی کردار کا معاملہ : علی گڑھ مسلم یونیورسٹی نے جواب داخل کیا ، مرکزی حکومت کے فیصلہ کو بتایا سیاست سے حوصلہ افزا
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی نے اقلیتی درجہ سے متعلق مودی حکومت کے فیصلہ کو سیاست سے حوصلہ افزا قرار دیا ہے۔ اقلیتی درجہ سے متعلق مرکزی حکومت کے حلف نامہ کا جواب داخل کرتے ہوئے اے ایم یو نے یہ دعوی کیا ہے

علی گڑھ : علی گڑھ مسلم یونیورسٹی نے اقلیتی درجہ سے متعلق مودی حکومت کے فیصلہ کو سیاست سے حوصلہ افزا قرار دیا ہے۔ اقلیتی درجہ سے متعلق مرکزی حکومت کے حلف نامہ کا جواب داخل کرتے ہوئے اے ایم یو نے یہ دعوی کیا ہے۔

دی فائنانشیل ایکسپریس میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق مرکزی حکومت نے دعوی کیا ہے کہ مسلم یونیورسٹی کو اقلیتی درجہ دینا آئین کی خلاف ورزی ہوگا۔ آئین کسی بھی ادارہ کو مذہبی بنیاد پر فنڈ دینے کی اجازت نہیں دیتا ہے۔

سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی کا حوالہ دیتے ہوئے مرکزی حکومت نے کہا ہے کہ اگر اس نے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے مطالبہ کو منظور کرلیا تو دیگر اقلیتیں بھی اسی طرح کا مطالبہ کریں گی۔ علاوہ ازیں حلف نامہ میں کہا گیا ہے کہ اے ایم یو مرکزی حکومت کا قائم کردہ ادارہ ہے اور اس کے اقلیتی ہونے کا کوئی آئین نہیں ہے۔

First published: Aug 16, 2016 07:23 PM IST