ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

یو پی: سنی سینٹرل وقف بورڈ کے چیئرمین ظفر فاروقی کی مدت کار میں توسیع کو ہائی کورٹ نے غیر قانونی قرار دیا

واضح رہے کہ گذشتہ ۳۰ ؍ ستمبر کو ریاست کی گورنر کی جانب سے سنی سینٹرل وقف بورڈ کے چیئرمین ظفر فاروقی کی مدت کار میں دوسری بار توسیع کرنے کا حکم نامہ جاری کیا گیا تھا۔ ظفر فاروقی کی مدت کار میں توسیع کے خلاف لکھنؤ کے ضمیر نقوی اور الہ آباد کے جاوید محمد کی جانب سے ہائی کورٹ میں عرضی داخل کی گئی تھی۔

  • Share this:
یو پی: سنی سینٹرل وقف بورڈ کے چیئرمین ظفر فاروقی کی مدت کار میں توسیع کو ہائی کورٹ نے غیر قانونی قرار دیا
سنی سینٹرل وقف بورڈ کے چیئرمین ظفر فاروقی

الہ آباد۔ یوپی سنی سینٹرل وقف بورڈ کے چیئرمین ظفر فاروقی کو الہ آباد ہائی کورٹ سے زبردست جھٹکا لگا ہے۔ ہائی کورٹ نے یوگی حکومت کی طرف سے ظفر فاروقی کی مدت کار میں توسیع کئے جانے کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا ہے ۔ الہ آباد ہائی کورٹ نے سنی  وقف بورڈ کے چیئرمین کی توسیع کو وقف ضابطوں کی سخت خلاف ورزی قرار دیا ہے۔ ساتھ ہی الہ آباد ہائی کورٹ نے ریاستی حکومت کو حکم دیا ہے کہ وہ ۲۸؍ فرروی سے پہلے سنی سینٹرل  وقف بورڈ کا چناؤ کرائے۔ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں یہ بھی کہا ہے کہ وقف بورڈ کا چناؤ ریاست کے ایڈیشنل پرنسپل سکریٹری ( اقلیتی بہبود ) کی نگرانی میں کرایا جائے۔


واضح رہے کہ گذشتہ ۳۰ ؍ ستمبر کو ریاست کی گورنر کی جانب سے سنی سینٹرل وقف بورڈ کے چیئرمین ظفر فاروقی کی مدت کار میں دوسری بار توسیع کرنے کا حکم نامہ جاری کیا گیا تھا۔ ظفر فاروقی کی مدت کار میں توسیع کے خلاف لکھنؤ کے ضمیر نقوی اور الہ آباد کے جاوید محمد کی جانب سے ہائی کورٹ میں عرضی داخل کی گئی تھی۔ عرضی گذار کا کہنا تھا کہ ظفر فاروقی کی مدت کار پوری ہو جانے کے بعد بھی حکومت کی طرف سے ان کو توسیع دیا جانا وقف ایکٹ کے ضابطوں کی صریح خلاف ورزی ہے۔


فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے ہائی کورٹ کے سینئر ایڈو کیٹ اور وقف معاملوں کے ماہر سید فرمان احمد نقوی کا کہنا ہے کہ سنی سینٹرل وقف بورڈ کے چیئرمین ظفر فاروقی کی مدت کار میں  توسیع  کرکے  ریاستی حکومت نے ایک غلط روایت کی  بنیاد ڈالنے کی کوشش کی ہے۔ فرمان نقوی کا کہنا ہے کہ سنی سیٹرل وقف بورڈ میں پانچ سو سے زیادہ افراد ہیں جن کو ووٹ کے ذریعے چیئرمین منتخب کرنے کا اختیار ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ کسی بھی وقف بورڈ کے  چیئرمین کی مدت کار میں تو سیع کرنے کا اختیارصرف وقف بورڈ ممبران کو ہی حاصل ہے نہ کہ حکومت کو۔ فرمان نقوی کا کہنا ہے کہ ہائی کورٹ کا یہ فیصلہ آنے والے دنوں میں میل کا پتھر ثابت ہو گا۔


 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jan 25, 2021 07:07 PM IST