ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی تشدد کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ کے وکلاء کا زبردست احتجاجی مظاہرہ

الہ آباد ہائی کورٹ کے وکلا ء نے نہ صرف دہلی میں ہونے والے تشدد کی پر زور مذمت کی ہے بلکہ حکومت سے تشدد پر آمادہ شر پسندوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ بھی کیا

  • Share this:
دہلی تشدد کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ کے وکلاء کا زبردست احتجاجی مظاہرہ
دہلی تشدد کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ کے وکلاء کا زبردست احتجاجی مظاہرہ

الہ آباد۔ دہلی میں ہوئے فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ کے وکلاء نے اپنی  آواز بلند کی ہے ۔ہائی کورٹ  کے وکلا ء نے نہ صرف دہلی میں ہونے والے تشدد کی پر زور مذمت کی ہے بلکہ حکومت سے تشدد پر آمادہ شر پسندوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ بھی کیا ہے۔


دہلی میں ہوئے فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف وکلاء نے الہ آباد ہائی کورٹ کے سامنے واقع امبیڈکر چوراہے پر  زبردست  احتجاجی مظاہرہ کیا۔ احتجاجی وکلا ءاپنے ہاتھوں میں بینر اٹھائے ہوئے تھے جس پر دہلی میں ہونے والے تشدد کے خلاف نعرے لکھے گئے تھے ۔وکلاء نے دہلی میں ہوئے تشدد کے خلاف اپنی یکجہتی کا مظاہرہ کیا اور لوگوں سے امن و سلامتی اور تحمل برتنے کی اپیل کی۔


دہلی میں ہوئے فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف وکلاء نے الہ آباد ہائی کورٹ کے سامنے واقع امبیڈکر چوراہے پر زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا۔


احتجاجی مظاہرے کی قیادت انسانی حقو ق کے معروف کارکن اور قانون داں کمل کرشن رائے نے کی۔ اس موقع پر انہوں نے وکلا ءکو خطاب کرتے ہوئے ملک میں اقلیتوں پر ہونے والے پر تشدد حملوں کا ذکر کیا ۔کمل کرشن رائے نے کہا کہ اقلیتوں پر ہونے والے حملوں میں حکمراں بی جے پی اور آر ایس ایس کے افراد شامل پائے گئے ہیں۔ کمل کرشن رائےکا کہنا تھا کہ اگر اقلیتوں کے خلاف ہونے والے پرتشدد حملوں پر قابو نہ پایا گیا تو ملک کا سماجی تانا بانا  ٹوٹ سکتا ہے۔

احتجاجی جلسے کو خطاب کرتے ہوئے ایڈوکیٹ محمد نسیم نے دہلی میں ہونے والے فرقہ وارانہ تشدد کے لئے بی جے پی لیڈر کپل مشرا  اور دہلی پولیس کو سیدھے طور پر ذمہ دار ٹھہرایا۔ ایڈو کیٹ نسیم کا کہنا تھا کہ دہلی میں فرقہ وارانہ تشدد پھیلا کر ملک میں ہندو مسلم اتحاد کو توڑنے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔جلسے میں شامل احتجاجی وکلاء کا کہنا تھا کہ شہریت قانون کی حمایت کی آڑ میں شر پسند عناصر بے قصور شہریوں کو نشانہ بنا رہے ہیں ۔ وکلا ءنے تشدد میں شامل افراد کے خلاف سخت کارروائی کرنے اور دہلی پولیس کمشنر کو معطل کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔
First published: Feb 27, 2020 08:07 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading