ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ میں کورونا سے مرنے والے افراد کی لاشوں کے ساتھ مبینہ اہانت کا معاملہ الہ آباد ہائی کورٹ پہنچا

عرضی میں کہا گیا ہے کہ میرٹھ میں کورونا سے متاثر مریضوں کے علاج میں سنگین کوتاہی برتی جا رہی ہے اور کورونا وائرس سے مرنے والے افراد کی لاشوں کے ساتھ اہانت امیز رویہ اپنایا جا رہا ہے۔

  • Share this:
میرٹھ میں کورونا سے مرنے  والے افراد کی لاشوں کے ساتھ مبینہ اہانت کا معاملہ الہ آباد ہائی کورٹ پہنچا
ادھر آج دو مزید مریضوں کی موت واقع ہوئی۔ ان میں سے ایک 55 سالہ شخص کی موت گورنمنٹ میڈیکل کالج اننت ناگ میں کل رات ہوئی اور دوسرے مریض کی موت چسٹ ڈیزیز اسپتال سرینگر میں ہوئی۔

الہ آباد۔ یو پی کے میرٹھ میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے مریضوں کے  علاج میں  سنگین کوتاہی برتنے اور کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کی آخری رسوم میں انتظامیہ کی طرف سے  مشکلات پیدا کئے جانے کا معاملہ اب الہ آباد ہائی کورٹ میں پہنچ گیا ہے۔ عدالت سے درخواست کی گئی ہے کہ میرٹھ  کے   غربت زدہ علاقوں میں پھیلتے کورونا وائرس اور اس کے نتیجے میں ہونے والی اموات کے معاملے کی عدالتی جانچ کرائی جائے ۔


میرٹھ کے سماجی کارکن لوکیش کمار کھرانہ کی طرف سے الہ آباد ہائی کورٹ میں مفاد عامہ کی عرضی داخل کی گئی ہے۔ عرضی  میں میرٹھ کے سرکاری اسپتالوں کی بدحالی اور ناقص علاج کی تفصیلات پیش کی گئی ہیں ۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ میرٹھ میں کورونا سے متاثر مریضوں کے علاج میں سنگین  کوتاہی برتی جا رہی ہے اور  کورونا وائرس سے مرنے والے افراد کی لاشوں کے ساتھ اہانت امیز رویہ اپنایا جا رہا ہے۔  لوکیش کمار کھرانہ کی طرف سے داخل عرضی میں ہائی کورٹ سے درخواست کی گئی ہے کہ کورونا مریضوں کے مناسب علاج   اور اس مرض  سے فوت ہونے والے افراد کی ڈیڈ باڈی کے ساتھ با وقار طریقہ اپنایا جائے ۔یو پی میں آگرہ کے بعد میرٹھ میں کورونا وائرس سے سب سے زیادہ اموات درج کی جا رہی  ہیں ۔میرٹھ میں کورونا وائرس سے اب تک ۱۴؍ افراد کی موت واقع  ہو چکی ہے ۔


عرضی گزار کے وکیل سید فرمان احمد نقوی نے نیوز ۱۸؍ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میرٹھ کے سر کاری اسپتالوں میں علاج کی صور ت حال نہایت تشویش ناک ہے۔


عرضی گزار کے وکیل  سید فرمان احمد نقوی  نے نیوز ۱۸؍ سے بات کرتے ہوئے کہا  کہ میرٹھ کے سر کاری اسپتالوں میں  علاج کی صور ت حال نہایت تشویش ناک ہے۔ فرمان احمد نقوی کا کہنا ہے کہ کورونا سے مرنے والے افراد کی لاشوں کے ساتھ انتظامیہ کی طرف سے  اہانت آمیز رویہ اختیار کیا جا رہا ہے ۔خاص طور سے کورونا کے مشتبہ مریضوں کے ساتھ اسپتال کے ڈاکٹروں کا رویہ  غیر انسانی ہوتا جا رہا ہے ۔فرمان احمد نقوی کا کہنا ہے کہ میرٹھ کے پسماندہ اور غربت زدہ علاقوں میں کورونا وائرس کے تیزی سے پھیلنے کے معاملے میں بھی عدالت کو آگاہ کیا گیا ہے ۔میرٹھ کے سر کاری اسپتالوں میں کورونا مریضوں کے ساتھ غیر انسانی سلوک کے معاملوں کی عدالتی جانچ کی درخواست کی گئی ہے ۔ہائی کورٹ میں داخل عرضی میں کہا گیا ہے کہ مشتبہ مریضوں کو اسپتال میں بھرتی کرنے اور ان کی رپورٹ اہل خانہ کو بتانے میں اسپتال کی طرف سے غیر معمولی تاخیر کا  مظاہرہ کیا جا رہا ہے ۔
First published: May 13, 2020 05:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading