உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اکھلیش یادو میرے سیاسی دشمن ، موقع ملا تو چھوڑوں گا نہیں : امر سنگھ

    امر سنگھ ۔ فائل فوٹو

    دو بار دودھ کا جلا ہوں ، اس لئے سماجوادی پارٹی سے میرا اب دور دور تک بھی کوئی تعلق نہیں رہے گا، جہاں تک اکھلیش یادو کی بات ہے تو وہ میرے سیاسی دشمن ہیں ، موقع ملے گا تو انہیں چھوڑوں گا نہیں ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : دو بار دودھ کا جلا ہوں ، اس لئے سماجوادی پارٹی سے میرا اب دور دور تک بھی کوئی تعلق نہیں رہے گا، جہاں تک اکھلیش یادو کی بات ہے تو وہ میرے سیاسی دشمن ہیں ، موقع ملے گا تو انہیں چھوڑوں گا نہیں ۔ یہ کہنا ہے راجیہ سبھا کے رکن اور سماجوادی پارٹی کے سابق جنرل سکریٹری امر سنگھ کا ۔ نیوز 18 کو دئے ایک خاص انٹرویو میں انہیں یہ باتیں کہیں۔
      اس سوال کے جواب میں کہ کیا امر سنگھ 2019 کے لوک سبھا انتخابات کیلئے پھر ایس پی کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے ، تو جواب میں اپنے درد دل کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس کا تو اب سوال ہی نہیں اٹھتا ، جب میری تصویروں پر پیشاب کیا گیا ، مجھے گالی دی گئی ، مجھے باہری بھی کہا گیا تو اب گنجائش ہی کہاں بچ جاتی ہے، جب بات گھر کے اندر رہتی ہے تو ٹھیک ہے ، لیکن باہر آنے پر کوئی گنجائش باقی نہیں رہ جاتی۔
      امرسنگھ کی ناراضگی اکھلیش یادو سے ہے یا رام گوپال یادو سے ، اس سلسلہ میں ان کا کہنا ہے کہ میری ناراضگی ملائم سنگھ یادو سے ہے ، کیونکہ مجھے اور شیوپال سنگھ یادو کو ملائم پر اعتماد تھا ، ہم دونوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ، لیکن آخر کار بیٹے کی محبت میں سب کو نمٹانے والے ملائم خود بیٹے سے ہی نمٹ گئے ۔
      انہوں نے کہا کہ شیوپال سے میرے تعلقات کل تھے ، آج ہیں اور آنے والے کل میں بھی رہیں گے، لیکن ملائم سنگھ سے میں اب بات نہیں کرتا ہوں ، کیونکہ انہوں نے خود مجھ سے کہا تھا کہ امر سنگھ ہمارے بیٹے اکھلیش ، رام گوپال یادو اور اعظم خان کو تم سے پریشانی ہے ، اس لئے تم ہم سے مت ملا کرو ، تو سچ مانئے اس دن کا دن ہے اور آج کا ، میں کبھی نہ تو ملائم سنگھ سے ملا اور نہ ہی ان سے بات کی۔
      First published: