ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دوبارہ بی جے پی کے صدر بنے امت شاہ ، تاہم ندارد رہا پارٹی کا سینئر بریگیڈ

ئي دہلی: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے قومی صدر مسٹر امت شاہ آج پھر سے پارٹی کے سربراہ منتخب ہونے والے ہیں، جنہيں اس بار مکمل میعاد کے اس عہدے پر فائز کیا جائے گا۔

  • News18
  • Last Updated: Jan 24, 2016 03:12 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
دوبارہ بی جے پی کے صدر بنے امت شاہ ، تاہم ندارد رہا پارٹی کا سینئر بریگیڈ
ئي دہلی: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے قومی صدر مسٹر امت شاہ آج پھر سے پارٹی کے سربراہ منتخب ہونے والے ہیں، جنہيں اس بار مکمل میعاد کے اس عہدے پر فائز کیا جائے گا۔

نئی دہلی : امت شاہ کو بلامقابلہ دوسری مرتبہ بی جے پی کا صدر منتخب کر لیا گیا ہے۔ امت شاہ کے صدر منتخب ہونے کے بعد دہلی کے بی جے پی دفتر میں جشن کا ماحول شروع ہو گیا۔ پارٹی کے لیڈروں نے شاہ کا پھول مالاؤں سے استقبال کیا۔ بی جے پی کے سابق صدر وینکیا نائیڈو نے پریس کو اس کی اطلاع دی۔


خیال رہے کہ وزیر اعظم مودی نے شاہ کو قومی صدر بنانے کے لئے پہلی تجویز پیش کی ۔ راج ناتھ سنگھ، جے پی نڈا، مختار عباس نقوی اور وینكيا نائیڈو نے بھی امت شاہ کے نام کی تجویز پیش کی ۔ بی جے پی حکمراں والی تمام ریاستوں کے وزیر اعلی بھی اس فہرست میں شامل ہیں۔ تاہم اس موقع پر بی جے پی کے سینئر بریگیڈ لال کرشن اڈوانی ، مرلی منوہر جوشی اور شانتا کمار جیسے لیڈران موجود نہیں تھے ، جس سے ایک مرتبہ پھر ان لیڈروں کی پارٹی سے ناراضگی کی بات سامنے آگئی ۔ 


اس قبل پارٹی دفتر پہنچ کر امت شاہ نے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا۔ کسی دوسرے لیڈر نے قومی صدر کے عہدے کے لئے پرچہ نامزدگی داخل نہیں کیا ہے ۔ لہذا شاہ کا بلامقابلہ انتخاب جیتنا طے ہے۔ تاہم اس کا باضابطہ اعلان تھوڑی دیر میں کی جائے گا۔


وزیر اعظم نریندر مودی کے قریبی معتمد مسٹر امت شاہ نے اس وقت پارٹی کی کمان سنبھالی تھی جب وسط میعاد میں سابق صدر مسٹر راجناتھ سنگھ کو 2014 میں مرکزی کابینہ میں شامل کرلیا گیا تھا۔


تاہم، دہلی اور بہار اسمبلی انتخابات میں پارٹی کی شرمناک شکست کے بعد ان کی قیادت پر پارٹی کے سینئرلیڈروں ایل کے اڈوانی، مرلی منوہر جوشی اور دیگر کی طرف سے سوال اٹھائے گئے ہيں، لیکن وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے اطمینان اور ٹھوس حمایت کے سبب ان کے حق میں حتمی فیصلہ تقریبا ہوچکا ہے۔


حالیہ شکستوں کے پس منظر میں مسٹر امت شاہ کو اس بار مشکل چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑے گا جب مغربی بنگال، آسام، تمل ناڈو، پڈوچیری اور کیرالہ میں امسال انتخابات ہونے والے ہیں، جبکہ آئندہ سال اترپردیش اسمبلی الیکشن ہونے والا ہے۔

First published: Jan 24, 2016 12:25 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading