ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

فوج کے لئے مدارس کے بچوں کو تیار کرے گی ملک کی یہ یونیورسیٹی

مدارس میں پڑھنے والے طلبہ بھی اب براہ راست طور پر فوج میں جا سکیں گے۔ انہیں سپاہی اور حولدار بننے کے بجائے نائب صوبیدار کی رینک پر تعیناتی ملے گی۔

  • Share this:
فوج کے لئے مدارس کے بچوں کو تیار کرے گی ملک کی یہ یونیورسیٹی
اے ایم یو: فائل فوٹو

مدارس میں پڑھنے والے طلبہ بھی اب براہ راست طور پر فوج میں جا سکیں گے۔ انہیں سپاہی اور حولدار بننے کے بجائے نائب صوبیدار کی رینک پر تعیناتی ملے گی۔ اس کے بعد وہ جونیئر کمیشن افسر (جے سی او) کہلائیں گے۔ لیکن اس کے لئے انہیں اسلامک چیپلن کورس کرنا ہو گا۔ ملک کی سینٹرل علی گڑھ مسلم يونیورسیٹی (اے ایم یو) انہیں یہ موقع دے گی۔


اے ایم یو کے پی آر او عمر پیرزادہ نے بتایا، ’’جولائی سے شروع ہونے والے نئے سیشن میں اے ایم یو اسلامک چیپلن کے نام سے ایک سال کا کورس شروع کرنے جا رہا ہے۔ یہ کورس کرنے کے بعد طلبہ فوج میں مولوی کے عہدے پر بھرتی ہو سکیں گے۔ اس کورس کو کرنے کے لئے یہ ضروری ہو گا کہ مدرسے سے آنے والے طلبہ کے پاس ادیب کامل یا ادیب ماہر مطلب بی اے کے برابر مدرسے کی کوئی ڈگری ہو۔


اس کورس میں 10 سیٹیں رکھی گئی ہیں۔ لڑکیوں کے لئے 5 سیٹیں اور لڑکوں کے لئے 5 سیٹیں ہیں۔ ہندوستانی فوج میں ہر سال مذہبی استاد (پنڈت، مولوی، پادری، گرنتھی، بودھ سنیاسی وغیرہ) کے عہدے پر تقرری ہوتی ہے۔ اسی کو دھیان میں رکھتے ہوئے اے ایم یو کے پروفیسر كے اے نظامی سینٹر فار قرآنک اسٹڈیز میں پی جی ڈپلوما ان اسلامک چیپلن کورس شروع کیا جا رہا ہے۔ نئے کورس کو بورڈ آف اسٹڈیز اور ایڈمیشن کمیٹی وغیرہ سے منظوری مل چکی ہے‘‘۔


ناصر حسین کی رپورٹ
First published: Jan 19, 2019 04:04 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading