உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کس طرح ایک الرٹ نے انٹیلی جنس اور سیکورٹی ایجنسیوں کا بنا دیا مذاق؟

    نئی دہلی : پاکستانی دہشت گردوں نے ہندوستانی سیکورٹی اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کو دھوکہ دے کر ان کا مذاق بنا دیا ہے ۔ اس کی وجہ سے اب ملک کی سیکورٹی کے نظام پر بھی سوالات اٹھنے لگے ہیں۔

    نئی دہلی : پاکستانی دہشت گردوں نے ہندوستانی سیکورٹی اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کو دھوکہ دے کر ان کا مذاق بنا دیا ہے ۔ اس کی وجہ سے اب ملک کی سیکورٹی کے نظام پر بھی سوالات اٹھنے لگے ہیں۔

    نئی دہلی : پاکستانی دہشت گردوں نے ہندوستانی سیکورٹی اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کو دھوکہ دے کر ان کا مذاق بنا دیا ہے ۔ اس کی وجہ سے اب ملک کی سیکورٹی کے نظام پر بھی سوالات اٹھنے لگے ہیں۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی : پاکستانی دہشت گردوں نے ہندوستانی سیکورٹی اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کو دھوکہ دے کر ان کا مذاق بنا دیا ہے ۔ اس کی وجہ سے اب ملک کی سیکورٹی کے نظام پر بھی سوالات اٹھنے لگے ہیں۔
      انٹیلی جنس ایجنسیوں کی طرف سے پاکستان کے مشتبہ دہشت گردوں کی بات چیت کی بنیاد پر جمعہ کو گجرات سمیت ملک بھر میں ہائی الرٹ جاری کیا گیا تھا۔ تاہم سرکاری ذرائع سے ملنے والی معلومات کے مطابق مشتبہ دہشت گردوں کی بات چیت میں شاید پنجاب کے پٹھان کوٹ کے نزدیک واقع ایک چھوٹے سے گاؤں 'گجرات کا ذکر کیا تھا، ریاست گجرات کا نہیں۔ لیکن انٹیلی جنس ایجنسیوں کے الرٹ کے بعد گجرات کے کئی شہروں میں پیر کو دن بھر تلاشی مہم چلائی گئی ۔ تاہم اس مہم میں کوئی کامیابی ہاتھ نہیں لگ سکی۔
      نوبھارت ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق جمعہ کی رات کو انٹیلی جنس ایجنسیوں نے 10 مشتبہ خودکش دہشت گردوں کے گجرات میں داخل ہونے کا الرٹ جاری کیا تھا۔ الرٹ میں خدشہ ظاہر کیا گیا تھا کہ یہ دہشت گرد 26/11 کی طرح ہی کسی بڑے حملے کو انجام دے سکتے ہیں۔
      انٹیلی جنس ایجنسیوں کے الرٹ کے بعد وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے فوری طور پر داخلہ سکریٹری راجیو مہرشی اور انٹیلی جنس محکمہ کے سربراہ دنیشور شرما کے ساتھ ملاقات میں سیکورٹی انتظامات کا جائزہ لیا اور ساتھ ہی ساتھ دہلی، اتر پردیش، چندی گڑھ، راجستھان، آندھرا پردیش، تلنگانہ اور مدھیہ پردیش میں سیکورٹی بڑھا دی گئی تھی۔
      الرٹ کے پیش نظر آنا فانا میں این ایس جی کی ایک ٹیم گجرات کے لئے روانہ کردی گئی۔ لیکن دہشت گردوں کے ٹھکانے کا کچھ پتہ نہیں چل سکا۔ ایک سینئر افسر نے بتایا کہ اس بات کا خدشہ ہے کہ ان کا منصوبہ گجرات گاؤں کے مشہور شیو مندر پر حملہ کرنے کا تھا۔ اس مندر میں ہر سال شیوراتری کے موقع پر بڑی تعداد میں عقیدت مند آتے ہیں۔ یہ مندر پٹھان کوٹ میں دینا نگر کے کافی قریب ہے ، جہاں گزشتہ ایک سال میں دراندازی میں اضافہ ہواہے۔
      واضح رہے کہ گزشتہ سال گرداس پور میں حملہ کرنے والے دہشت گردوں نے اسی راستے کا استعمال کیا تھا۔ اب پنجاب سیکورٹی فورسز کو اس مندر کی سیکورٹی کے لئے تعینات کیا گیا ہے۔

      First published: