ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سالانہ امرناتھ یاترا: سخت ترین سیکورٹی انتظامات کے درمیان یاتریوں کا پہلا قافلہ جموں سے کشمیرکی طرف روانہ

سخت حفاظتی انتظامات کے بیچ امرناتھ یاتریوں کا پہلا قافلہ بدھ کی علی الصبح یہاں بھگوتی نگرمیں واقع یاتری نواسن بیس کیمپ جموں سے ’بم بم بولے‘،’ہرہرمہادیو‘ اور ’جے با با برفانی‘ کے نعرے بلند کرتے ہوئے وادی کشمیر کی طرف روانہ ہوا۔

  • UNI
  • Last Updated: Jun 27, 2018 02:58 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سالانہ امرناتھ یاترا: سخت ترین سیکورٹی انتظامات کے درمیان یاتریوں کا پہلا قافلہ جموں سے کشمیرکی طرف روانہ
امرناتھ یاترا: فائل فوٹو

جموں:  سخت حفاظتی انتظامات کے بیچ امرناتھ یاتریوں کا پہلا قافلہ بدھ کی علی الصبح یہاں بھگوتی نگرمیں واقع یاتری نواسن بیس کیمپ جموں سے ’بم بم بولے‘،’ہرہرمہادیو‘ اور ’جے با با برفانی‘ کے نعرے بلند کرتے ہوئے وادی کشمیر کی طرف روانہ ہوا۔ وادی میں دو مہینوں تک جاری رہنے والی سالانہ امرناتھ یاترا کا باقاعدہ آغاز جمعرات کو یاتریوں کی ننون پہلگام اوربال تل بیس کیمپوں سے جنوبی کشمیر میں سطح سمندرسے 13 ہزار 500 فٹ بلندی پرواقع امرناتھ گپھا کی طرف روانگی کے ساتھ ہوگا۔


سالانہ امرناتھ یاترا 26اگست کو رکشا بندھن کے تہوار کے موقع پرخصوصی پوجا کے ساتھ اختتام پذیرہوگی۔ واضح رہے کہ جنوبی کشمیرکے مشہورسیاحتی مقام پہلگام سے قریب 40 کلومیٹردورپہاڑی گپھا میں بھگوان شو سے منسوب برفانی عکس (شیولنگ)کے درشن کے لئے ہر سال لاکھوں کی تعداد میں شردھالو کشمیر آتے ہیں۔

جموں وکشمیر کے چیف سکریٹری بی وی آرسبھرامنیم اور گورنرنریندرناتھ ووہرا کے دو مشیروں بی بی ویاس اوروجے کمارنے بدھ کی علی الصبح یاتری نواسن بیس کیمپ جموں سے یاتریوں کے پہلے قافلے کو جھنڈی دکھا کروادی کی طرف روانہ کیا۔

سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ سخت ترین حفاظتی انتظامات کے بیچ 2975 یاتریوں پرمشتمل پہلا قافلہ بدھ کی علی الصبح وادی کے لئے روانہ ہوا۔ انہوں نے بتایا ’پہلا قافلہ 2334 مرد، 520 خواتین، 21 بچے اور 120 سادھوؤں پر مشتمل ہے۔ یاتری 57 بسوں، 52 ہلکی گاڑیوں اور4 موٹرسائیکلوں کے سمیت 113 گاڑیوں میں سوارہوکر وادی کی طرف روانہ ہوئے‘۔

سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ یاترا قافلے کی نگرانی کا کام سپیشل بائیکرس سکواڈ اور سی آر پی ایف کی کوئیک ایکشن ٹیمیں کریں گی۔ انہوں نے بتایا ’سیکورٹی فورسز کی متعدد بلٹ پروف گاڑیاں بھی یاتریوں کے قافلے کے ساتھ وادی کے لئے روانہ ہوئی ہیں۔ یاتریوں کی مدد اور انہیں ہر ممکن مدد فراہم کرنے کے لئے موٹر سائیکل سکواڈ بھی تشکیل دیا گیا ہے‘۔
گورنر کے مشیر بی بی ویاس نے اس موقع پر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ یاتریوں کی حفاظت کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا ’اس مقدس یاترا کے لئے سیکورٹی کے معقول انتظامات کئے گئے ہیں۔ سیکورٹی ایجنسیوں اوردیگرمتعلقہ سرکاری محکموں کی طرف سے وقت وقت پرسیکورٹی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ ہم یقین دلانا چاہتے ہیں کہ ہم نے یاترا کے پرامن انعقاد کو یقینی بنانے کے لئے ہرممکن اقدامات اٹھائے ہیں‘۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سالانہ امرناتھ یاترا رسمی طور پرجمعرات کو روایتی پہلگام اور مختصر بال تل راستوں سے بہ یک وقت شروع ہوگی, جس کے پرامن اور خوشگوار ماحول میں انعقاد کو یقینی بنانے کے لئے جموں کے بیس کیمپ سے لیکرامرناتھ گپھا تک فقیدالمثال حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ہزاروں کی تعداد میں سیکورٹی فورس اہلکار تعینات کئے گئے ہیں۔ مہاراشٹرسے تعلق رکھنے والے یاتریوں کے ایک گروپ نے وادی کے لئے روانہ ہونے سے قبل نامہ نگاروں کو بتایا کہ وہ خوش نصیب ہیں کہ پہلے ہی دن بابا برفانی کے درشن کریں گے۔ اُن کا کہنا تھا ’ہم بہت خوش ہیں کہ ہم بابا برفانی کے درشن کے لئے یہاں ہیں۔ ہمیں کسی قسم کا خوف نہیں ہے۔ ہمارے حوصلے بلند ہیں۔ یہاں ہمارے لئے تمام انتظامات کئے گئے ہیں۔ ہم خوش نصیب ہیں کہ یاترا کے آغاز کے پہلے ہی دن بابا کے درشن کریں گے۔ ہم مہاراشٹر سے آئے ہیں۔ ہمارے گروپ میں تقریباً 20 لوگ شامل ہیں‘۔ میرٹھ سے تعلق رکھنے والے ایک گروپ نے کہا ’ہم چاہتے ہیں کہ ملک بھرسے لوگ بابا برفانی کے درشن کے لئے کشمیرآئیں۔ ہم ہرسال آتے ہیں اورہرسال آتے رہیں گے‘۔
ہماچل سے تعلق رکھنے والے ایک یاتری نے کہا ’ہمیں بڑی خوش ہورہی ہے کہ بابا برفانی کے درشن کے لئے جارہے ہیں۔ ہمیں کسی قسم کا کوئی ڈر نہیں ہے۔ میں یہاں پہلی بار آیا ہوں‘۔
سرکاری ذرائع نے بتایا کہ 26 جون تک تقریباً 2 لاکھ 11 ہزار 994 یاتریوں نے یاترا پر آنے کے لئے پیشگی رجسٹریشن کی تھی۔ انہوں نے بتایا ’گورنر نے 26 جون کو ایک میٹنگ میں یاترا کی رجسٹریشن کے عمل کا جائزہ لیا۔ گورنرکو میٹنگ میں بتایا گیا کہ آج کی تاریخ تک 211994 یاتریوں کی پیشگی رجسٹریشن مقرر شدہ بنک شاخوں، گروپ رجسٹریشن فیسلٹی اورہیلی کاپٹر ٹکٹوں کی بکنگ کے ذریعے عمل میں لائی گئی۔ یہ رجسٹریشن پنجاب نیشنل بنک، جے اینڈ کے بنک اوریس بنک کے 440 مقررشدہ بنک شاخوں کے ذریعے یکم مارچ 2018 سے شروع کی گئی اورملک کی 32 ریاستوں اورمرکزکے زیراہتمام ریاستوں میں جاری ہے ۔ موجودہ رجسٹریشن کے عمل سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ روزانہ 1200 لوگ اپنی رجسٹریشن یاترا کے لئے مختلف مراکز کے ذریعے انجام دلاتے ہیں اورسب سے زیادہ یاتری اُتر پردیش، مہاراشٹر، پنجاب، ایم پی، گجرات، دہلی، راجستھان اورہریانہ ریاستوں سے متوقع ہیں۔
First published: Jun 27, 2018 02:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading