اپنا ضلع منتخب کریں۔

    دہلی میں شردھا جیسا ایک اور معاملہ،بیوی اور بیٹے نے کیے لاش کے ٹکرے اور  فریج میں رکھ کر یہ حشر

    ملزم کے مالک مکان نے پولیس کو بتایا کہ جوڑا اکثر لڑتا رہتا تھا

    ملزم کے مالک مکان نے پولیس کو بتایا کہ جوڑا اکثر لڑتا رہتا تھا

    پولیس نے تصدیق کی کہ دونوں نے لاش کو ٹکڑے ٹکڑے کر کے اسے فریج میں رکھا اور آخر کار اسے پانڈو نگر علاقے میں پھینک دیا۔ ملزمہ پونم نے کہا کہ انجن داس میرے بچوں کے بارے میں برا ارادہ رکھتا تھا اور اسی لیے میں نے ایسا کیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Delhi | Lucknow | Jammu | Hyderabad
    • Share this:
      شردھا والکر (Shraddha Walkar) جیسے ایک اور معاملے میں دہلی کے پانڈو نگر (Pandav Nagar) میں ایک شخص کی بیوی اور بیٹے کے ہاتھوں قتل کرنے کے بعد اس کی لاش کو کاٹ کر فریج میں رکھا گیا۔ اس کے بعد لاش کے حصوں کو پانڈو نگر اور مشرقی دہلی میں اور اس کے آس پاس ضائع کردیا گیا۔ مرنے والے کی شناخت انجن داس (Anjan Das) کے طور پر کی گئی ہے۔

      نیوز 18 کو معلوم ہوا ہے کہ ملزم اس کی بیوی پونم اور بیٹے دیپک نے داس کو اس کے ناجائز تعلقات کے سبب منشیات دے کر قتل کیا اور پھر اس کی لاش کو ان کے ترلوک پوری کے گھر کے فریج میں محفوظ کر دیا۔ یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب دہلی پولیس کو پانڈو نگر علاقے میں جسم کے اعضاء بکھرے ہوئے ملے۔ پولیس کے مطابق داس کی لاش کے ٹکڑے روزانہ پانڈو نگر اور مشرقی دہلی کے مختلف علاقوں میں پھینکے جاتے تھے۔

      پولیس نے تصدیق کی کہ دونوں نے لاش کو ٹکڑے ٹکڑے کر کے اسے فریج میں رکھا اور آخر کار اسے پانڈو نگر علاقے میں پھینک دیا۔ ملزمہ پونم نے کہا کہ انجن داس میرے بچوں کے بارے میں برا ارادہ رکھتا تھا اور اسی لیے میں نے ایسا کیا۔ میرے بیٹے نے اسے چاقو سے مارا، میں نے ایسا نہیں کیا۔ ایک سی سی ٹی وی فوٹیج کی تصدیق پولیس والوں نے کی، اس میں دیپک کو رات دیر گئے ہاتھ میں بیگ لے کر چلتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔ پولیس والوں نے کہا کہ یہ ایک وقت ہو سکتا ہے، جب بیٹا ٹکڑوں کو ضائع کرنے گھر سے نکلا ہو۔ اس کی ماں پونم کو بھی اس کے پیچھے دیکھا جا سکتا ہے۔



      ملزم کے مالک مکان نے پولیس کو بتایا کہ جوڑا اکثر لڑتا رہتا تھا اور اس نے بار بار ان سے کہا کہ وہ اسے کہیں اور رکھیں۔ تاہم ملزم نے بتایا کہ اس کا شوہر شرابی تھا۔ دونوں اس گھر میں تقریباً چھ سال سے رہ رہے ہیں۔ پولیس نے کہا کہ پچھلے سات آٹھ مہینوں میں کسی نے میت کو نہیں دیکھا۔ پونم نے دوسروں کو بتایا تھا کہ وہ اپنے آبائی گاؤں چلا گیا ہے۔

      پولیس کے مطابق داس کے جسم کے اعضاء کی برآمدگی کے بعد پانڈو نگر پولیس اسٹیشن میں تعزیرات ہند (آئی پی سی) کی دفعہ 302 (قتل) اور 201 (ثبوت کو غائب کرنے اور غلط معلومات فراہم کرنے) کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: