ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اقوام متحدہ کی حقوق انسانی رپورٹ کو فوجی سربراہ نے کیا مسترد، کہا اس پر بات کرنے کی ضرورت نہیں

فوجی سربراہ جنرل بپن راوت نے بدھ کو اقوام متحدہ کی اس رپورٹ کی سختی سے مذمت کی ہے جس میں کشمیر میں مبینہ حقوق انسانی کی خلاف ورزی کی بات کہی گئی تھی۔

  • Share this:
اقوام متحدہ کی حقوق انسانی رپورٹ کو فوجی سربراہ نے کیا مسترد، کہا اس پر بات کرنے کی ضرورت نہیں
فوجی سربراہ بپن راوت: فائل فوٹو

فوجی سربراہ جنرل بپن راوت نے بدھ کو اقوام متحدہ کی اس رپورٹ کی سختی سے مذمت کی ہے جس میں کشمیر میں مبینہ حقوق  انسانی کی  خلاف ورزی کی بات کہی گئی تھی۔ راوت نے کہا کہ یہ رپورٹ بد نیتی سے تیار کی گئی ہے۔ راوت نے کہا اس حقوق انسانی رپورٹ کے بارے میں بات کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ ہندوستانی فوج کا حقوق  انسانی میں ریکارڈ بہت اوپر ہے۔ ایسی رپورٹیں بدنیتی سے تیار کی جاتی ہیں۔


اس سے قبل وزارت خارجہ نےکہا تھا ، "ہندستان اس رپورٹ کو مسترد کرتا ہے ۔ یہ جانبدارانہ اور بد نیتی سے تیار کی گئی ہے۔ ہم ایسی رپورٹ کی منشا پر سوال اٹھاتے ہیں۔وزارت نے کہا تھا کہ اس رپورٹ کو کافی حد تک غیر تصدیق شدہ  معلومات کو چنندہ طریقے سے جمع کرکے تیار کیا گیا ہے۔ یہ رپورٹ ہندوستان کی حاکمیت اور علاقائی سالمیت کی خلاف ورزی کرتی ہے۔ پورا جموں و کشمیر ہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے۔ پاکستان نے ہندستان کی اس ریاست کے ایک حصے پر غیر قانونی اور جبرا قبضہ کر رکھا ہے"۔


اقوام متحدہ نے کشمیر اور پاکستان کے قبضے والے کشمیر دونوں میں مبینہ حقوق  انسانی کی خلاف ورزی پر اپنی طرح کی پہلی رپورٹ جمعرات کو جاری کی تھی اور ان خلاف ورزیوں کی اقوام متحدہ نے بین الاقوامی سطح پر جانچ کرانے کی مانگ کی تھی۔

First published: Jun 27, 2018 01:48 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading