ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

لیفٹیننٹ جنرل کا بڑا دعویٰ: پکڑے گئے 83 فیصد مبینہ دہشت گرد پہلےکشمیرمیں کرتے تھے پتھربازی

فوج کی 15 ویں کورکے کمانڈرلیفٹیننٹ جنرل کے جے ایس ڈھلوں نے ایک پریس کانفرنس میں یہ اطلاع دی۔

  • Share this:
لیفٹیننٹ جنرل کا بڑا دعویٰ: پکڑے گئے 83 فیصد مبینہ دہشت گرد پہلےکشمیرمیں کرتے تھے پتھربازی
واضح رہے کہ جموں کشمیر کودو یونین ٹریٹریز میں تبدیل کرنے کا فیصلہ اکتیس اکتوبر سےنافذ ہوگا۔

کشمیروادی کے پتھربازوں اورمبینہ دہشت گردوں کا بڑا کنکشن ہے۔ یہ اطلاع ہندوستانی فوج نے جمعہ کوایک پریس کانفرنس میں دی۔ فوج کی 15 ویں کورکے کمانڈرلیفٹیننٹ جنرل کے جے ایس ڈھلوں نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ 83 فیصد دہشت گردوں کی تاریخ پتھرباز کی رہی ہے۔


اس سے قبل انہوں نے کہا کہ کنٹرول بارڈر (ایل اوسی) کے پاس واقع کنٹرول میں ہے اورکافی حدتک پرامن ہے۔ فوج نےکہا کہ وہ پاکستان کوکشمیرمیں امن وامان خراب نہیں کرنے دے گی۔ ڈھلوں نے سری نگرمیں سیکورٹی اہلکاروں کے ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ وادی میں آئی ای ڈی دھماکوں کا خطرہ زیادہ ہے، لیکن مستقل طورسےتلاشی مہم چلا کر سیکورٹی اہلکاراس سے موثرطریقےسے نمٹ رہے ہیں۔


شوپیاں میں چل رہی ہے تلاشی مہم


کمانڈرلیفٹیننٹ جنرل کے جے ایس ڈھلوں نے بتایا کہ شوپیاں میں تلاشی مہم چل رہی ہے، جہاں جمعرات کی رات سیکورٹی اہلکاروں پرحملہ کرنے کی کوشش کی گئی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ مہم کے دوران، پاکستان پاکستان اوور فیکٹری کی تعمیرمیں ایک بارودی سرنگ کو ضبط کرلیا گیا۔ بارودی سرنگ پرپاکستانی اوورفیکٹری کا نشان بنا ہوا ہے۔

فوج کےافسرنےکہا کہ امرناتھ یاترا شاہراہ پرفوج کوبڑی تعداد میں ہتھیاروں کا ذخیرہ ملا ہے، جس میں امریکی ایم -24 اسپائپررائفل بھی شامل ہے۔ کشمیرکےآئی جی ایس پی پانی نےکہا کہ وادی میں زیادہ ترپلوامہ اورشوپیاں کےعلاقوں میں آئی ای ڈی دھماکہ کرنےکے 10 سے زیادہ خطرناک کوشش کی گئی تھی۔
First published: Aug 02, 2019 07:43 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading