உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بڑھتی عدالتی مداخلت سے مرکز پریشان، ارون جیٹلی نے لوک سبھا میں دیا یہ بیان

    نئی دہلی۔ اتراکھنڈ معاملے میں عدلیہ کے دخل دینے کے فورا بعد مرکزی وزیر خزانہ نے عدلیہ کے دائرہ اختیار پر سوال اٹھایا ہے۔

    نئی دہلی۔ اتراکھنڈ معاملے میں عدلیہ کے دخل دینے کے فورا بعد مرکزی وزیر خزانہ نے عدلیہ کے دائرہ اختیار پر سوال اٹھایا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی۔ اتراکھنڈ معاملے میں عدلیہ کے دخل دینے کے فورا بعد مرکزی وزیر خزانہ نے عدلیہ کے دائرہ اختیار پر سوال اٹھایا ہے۔ راجیہ سبھا میں جیٹلی نے کہا کہ سیاسی مسائل کا حل عدلیہ کو نہیں کرنا چاہئے۔

      جیٹلی نے کہا ہے کہ سیاسی مسائل کو ختم کرنا سیاسی طریقے سے ہی ہونا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ عدلیہ نے عاملہ اور مقننہ سے تجاوز کیا ہے۔ وزیر خزانہ نے کہا کہ ایسے میں اب حکومت کے پاس بجٹ بنانا اور ٹیکس لینے کا کام ہی رہ گیا ہے۔ عدلیہ کو یہ کام بھی لے لینا چاہئے۔

      غور طلب ہے کہ اتراکھنڈ میں صدر راج لگانے پر عدلیہ نے پوری سرگرمی دکھاتے ہوئے اس پر فیصلہ لیا۔ یہ فیصلہ کانگریس کی حمایت میں گیا۔ یہاں گزشتہ ڈیڑھ ماہ سے سیاسی اتھل پتھل مچی ہوئی تھی۔
      First published: