உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اروند کیجریوال نے ایتھلیٹ لوکیش کمار کی تین لاکھ روپے سے کی مدد 

    دہلی کے نند نگری علاقہ کے لوکیش کمار آر کے پورم میں واقع دہلی گورنمنٹ کے اسکول میں 10ویں کلاس میں پڑھتے ہیں۔ وہ مالی طور پر بہت غریب خاندان سے آتے ہیں ۔ مالی مجبوریوں کے باوجود لوکیش کا عالمی معیار کا کھلاڑی بننے کا جذبہ برقرار ہے۔ تمام رکاوٹوں سے لڑنے کے باوجود وہ ایتھلیٹکس میں بہتر کارکردگی کرتے رہے ہیں ان کو لے کر سوشل میڈیا پر پوسٹ وائرل ہو گئی

    دہلی کے نند نگری علاقہ کے لوکیش کمار آر کے پورم میں واقع دہلی گورنمنٹ کے اسکول میں 10ویں کلاس میں پڑھتے ہیں۔ وہ مالی طور پر بہت غریب خاندان سے آتے ہیں ۔ مالی مجبوریوں کے باوجود لوکیش کا عالمی معیار کا کھلاڑی بننے کا جذبہ برقرار ہے۔ تمام رکاوٹوں سے لڑنے کے باوجود وہ ایتھلیٹکس میں بہتر کارکردگی کرتے رہے ہیں ان کو لے کر سوشل میڈیا پر پوسٹ وائرل ہو گئی

    دہلی کے نند نگری علاقہ کے لوکیش کمار آر کے پورم میں واقع دہلی گورنمنٹ کے اسکول میں 10ویں کلاس میں پڑھتے ہیں۔ وہ مالی طور پر بہت غریب خاندان سے آتے ہیں ۔ مالی مجبوریوں کے باوجود لوکیش کا عالمی معیار کا کھلاڑی بننے کا جذبہ برقرار ہے۔ تمام رکاوٹوں سے لڑنے کے باوجود وہ ایتھلیٹکس میں بہتر کارکردگی کرتے رہے ہیں ان کو لے کر سوشل میڈیا پر پوسٹ وائرل ہو گئی

    • Share this:
    نئی دہلی: وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ہونہار ایتھلیٹ لوکیش کمار کی طرف اپنی مدد کا ہاتھ بڑھایا ہے جنہوں نے مالی مجبوریوں کے باوجود اپنی صلاحیتوں سے عوام کی توجہ مبذول کرائی ہے۔ جیسے ہی وزیر اعلی اروند کیجریوال نے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والے اس ہونہار کھلاڑی کو دیکھا، وہ خود ہر سطح پر مدد کے لیے آگے آئے۔ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے ایتھلیٹ لوکیش کمار کو آج اپنی رہائش گاہ پر بلایا اور ان کی صلاحیتوں کو نکھارنے کے لیے 'پلے اینڈ پروگریس' اسکیم کے تحت 3 لاکھ روپے کی مالی امداد کا چیک پیش کیا۔ اس کے ساتھ ہی لوکیش کمار خود بھی حیران رہ گئے جب اچانک انہیں چیف منسٹر کے دفتر سے مالی مدد کا فون آیا۔ وزیر اعلی اروند کیجریوال کے ہاتھ میں تین لاکھ روپے کا چیک ملنے کے بعد اب ان کے خوابوں کی پرواز میں سب سے بڑی رکاوٹ دور ہو گئی ہے۔ اگر لوکیش کمار کی کارکردگی اسی طرح جاری رہی تو دہلی حکومت مالی مدد فراہم کرتی رہے گی۔وزیر اعلی اروند کیجریوال نے چیک حوالے کرتے ہوئے کہا کہ مجھے دو دن پہلے لوکیش کے بارے میں پتہ چلا۔ آج میں نے لوکیش سے ملاقات کی اور 3 لاکھ روپے کا چیک حوالے کیا۔ ٹیلنٹ کی راہ میں پیسے کی کمی نہیں آنے دیں گے۔ لوکیش کو مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ انہیں اس طرح محنت کرنی چاہیے اور ملک کا نام روشن کرنا چاہیے۔دہلی کے نند نگری علاقے میں رہنے والے لوکیش کمار آر کے پورم میں واقع دہلی گورنمنٹ کے اسکول میں 10ویں کلاس میں پڑھتے ہیں۔ وہ ایک ہونہار ایتھلیٹ ہے لیکن مالی طور پر بہت غریب خاندان سے آتا ہے۔ مالی مجبوریوں کے باوجود لوکیش کا عالمی معیار کا کھلاڑی بننے کا جذبہ برقرار ہے۔ تمام رکاوٹوں سے لڑنے کے باوجود، وہ ایتھلیٹ میں مستقل کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے ہیں۔ بہت سے لوگ ان کی کارکردگی کے قائل ہیں لیکن کوئی بھی مالی مدد کے لیے آگے نہیں آیا، تاکہ وہ اپنی صلاحیتوں کو نکھار سکیں۔ دو دن پہلے لوکیش کمار کے ٹیلنٹ اور ان کے معاشی پس منظر کے بارے میں ایک پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی، جس نے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کی آنکھ نے پکڑ لیا اور مدد کے لئے اپنا ہاتھ بڑا دیا۔

    وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال لوکیش کے ٹیلنٹ کے بارے میں جان کر بہت متاثر ہوئے اور انہوں نے نائب وزیر اعلیٰ اور وزیر کھیل منیش سسودیا سے بات کی اور لوکیش کو مالی امداد پر غور کرنے کی ہدایت دی۔ اس کے ساتھ ہی وزیر اعلیٰ نے متعلقہ محکمے کو یہ بھی ہدایت دی کہ دہلی حکومت کی طرف سے جو بھی مالی مدد دی جا سکتی ہے، وہ جلد از جلد فراہم کی جائے۔ وزیر اعلی اروند کیجریوال کی طرف سے ملنے والی ہدایات کے بعد محکمہ نے مالی امداد فراہم کرنے کا عمل شروع کر دیا۔ نتیجے کے طور پر، وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے آج لوکیش کو اپنی رہائش گاہ پر بلایا اور 3 لاکھ روپے کا چیک پیش کیا۔ وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ٹویٹ کیا، "دو دن پہلے مجھے لوکیش کے بارے میں پتہ چلا۔ آج میں نے لوکیش سے ملاقات کی اور 3 لاکھ روپے کا چیک حوالے کیا۔ ٹیلنٹ کی راہ میں پیسے کی کمی نہیں آنے دیں گے۔ لوکیش کو مستقبل کے لیے نیک خواہشات۔ اس طرح محنت کریں اور ملک کا نام روشن کریں۔
    ایتھلیٹ لوکیش کمار نے انڈر 16 کیٹیگری میں 100 میٹر میں چاندی کا تمغہ جیتا ہے
    15 سالہ لوکیش کمار دہلی کے ایک بہت ہی ہونہار کھلاڑی ہیں۔ وہ دہلی گورنمنٹ کے سرودے کو-ایڈ اسکول، سیکٹر-2، آر کے پورم میں 10ویں کلاس کا طالب علم ہے۔ لوکیش کمار اپنے خاندان کے ساتھ نند نگری میں ایک بہت ہی چھوٹے سے مکان میں رہ رہے ہیں۔ ان کے والد رکشہ چلاتے ہیں اور ماں نوکرانی کا کام کرتی ہے۔ لوکیش کمار انڈر 16 زمرے میں مسلسل 100 میٹر، 300 میٹر اور 400 میٹر کی انفرادی ریس میں پہنچ رہے ہیں۔ ایتھلیٹ لوکیش کمار نے حال ہی میں ختم ہونے والی دہلی اسٹیٹ میٹ میں انڈر 16 زمرے میں 100 میٹر میں چاندی کا تمغہ جیتا ہے۔
    کیجریوال حکومت 'پلے اینڈ پروگریس' اسکیم کے تحت مالی امداد دیتی ہے
    دہلی حکومت نے کھلاڑیوں کی صلاحیتوں کو نکھارنے کے لیے 'پلے اینڈ پروگریس' کے نام سے ایک اسکیم شروع کی ہے، جس کے تحت اسکول کے کھلاڑیوں کو تربیت حاصل کرنے اور اعلیٰ سطح کے مقابلے میں حصہ لینے کے لیے ان کی صلاحیتوں کو نکھارنے کے لیے مالی مدد فراہم کی جاتی ہے۔ لوکیش کمار کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے دہلی حکومت نے انہیں مالی امداد دینے پر غور کیا۔ 'پلے اینڈ پروگریس' اسکیم کے مطابق کھلاڑیوں کو 3 لاکھ روپے دیے جاتے ہیں، تاکہ ان کی غذائیت، کھیلوں کا سامان اور کٹس وغیرہ کی ضروریات پوری کی جاسکیں۔ اس کے ساتھ ہی، کھلاڑی کا سالانہ بنیادوں پر جائزہ لیا جاتا ہے اور اگر کھلاڑی کی کارکردگی بہتر ہوتی ہے تو اسے اگلے سالوں میں مالی مدد فراہم کی جا سکتی ہے۔ دہلی حکومت ہونہار ایتھلیٹ لوکیش کمار کو نیک خواہشات کے ساتھ ساتھ ان کے روشن مستقبل کی خواہش کرتی ہے۔

    کیجریوال حکومت نے عالمی معیار کے کھلاڑی تیار کرنے کے لیے اسپورٹس یونیورسٹی کھولی ہے
    کیجریوال حکومت نے عالمی معیار کے کھلاڑی پیدا کرنے کے مقصد سے ایک اسپورٹس یونیورسٹی قائم کی ہے۔ دہلی حکومت کو یقین ہے کہ جب یہ یونیورسٹی پوری طرح سے تیار ہو جائے گی تو ملک بھر سے کھلاڑی دہلی آئیں گے اور وہ دہلی کا حصہ بن جائیں گے۔ دہلی اور ملک میں ایسے بہت سے بچے ہیں، جو اچھی طرح سے کھیل کھیلتے ہیں۔ اس کے والدین اسے کھیل کھیلنے کے ساتھ ساتھ گریجویشن مکمل کرنے کو کہتے ہیں۔ ایسے میں دہلی حکومت کا مقصد یہ ہے کہ ایسا بچہ اسپورٹس یونیورسٹی میں صرف اپنی پسند کا کھیل ہی کھیلے گا، لیکن اسے گریجویشن کی ڈگری ملے گی۔ اگر وہ 12ویں کے بعد کرکٹ کھیلنا چاہتا ہے تو صرف کرکٹ کھیلے گا لیکن کرکٹ میں گریجویشن کی ڈگری حاصل کرے گا۔ یہ ڈگری گریجویشن اور پوسٹ گریجویشن کے برابر ہوگی۔ کھلاڑیوں کو تمام سہولیات فراہم کی جائیں گی تاکہ انہیں اپنے ٹیلنٹ کو نکھارنے میں کسی قسم کی رکاوٹ کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ یونیورسٹی میں تیار ہونے والے یہ کھلاڑی عالمی سطح کے کھیلوں میں تمغے جیت کر پوری دنیا میں دہلی اور ملک کا نام روشن کر سکیں گے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: