ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اشوک گہلوت کےسرراجستھان کا کا تاج، سچن پائلٹ کونائب وزیراعلیٰ کی ذمہ داری،عوام کی امیدوں پرکھرا اترنے اوراچھی حکومت دینےکا وعدہ

کانگریس صدرکی منظوری ملنے کے بعد پارٹی کے آبزرورکے سی وینوگوپال نے آل انڈیا کانگریس کمیٹی میں پریس کانفرنس کے دوران باضابطہ طورپراعلان کردیا۔

  • Share this:
اشوک گہلوت کےسرراجستھان کا کا تاج، سچن پائلٹ کونائب وزیراعلیٰ کی ذمہ داری،عوام کی امیدوں پرکھرا اترنے اوراچھی حکومت دینےکا وعدہ
راہل گاندھی اشوک گہلوت اورسچن پائلٹ کے ساتھ پوز دیتے ہوئے۔

کئی روزکے انتظارکے بعد آخرکارراجستھان کو اس کا وزیراعلیٰ مل گیا ہے۔ اشوک گہولت کو راجستھان کا نیا وزیراعلیٰ بنانے کافیصلہ کیا گیا ہے۔ جبکہ سچن پائلٹ کو نائب وزیراعلیٰ کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔ اس کا باضابطہ طورپراعلان کردیا گیا ہے۔


آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے دفترمیں منعقدہ پریس کانفرنس کے دوران پارٹی کے سینئرلیڈر اورراجستھان کے آبزرور کے سی وینوگوپال نے باضابطہ طورپراعلان کیا۔ راجستھان میں وزیراعلیٰ اورنائب وزیراعلیٰ کے ناموں کا اعلان ہونے کے بعد کانگریس وفد آج شام 7 بجے گورنرکلیان سنگھ سے ملاقات کرکے حکومت سازی کا دعویٰ پیش کرے گا۔ گا۔ اس کے بعد کلیان سنگھ حکومت سازی کے لئے بلائیں گے۔


وزیراعلیٰ اورنائب وزیراعلیٰ کے اعلان کے بعد اشوک گہلوت نے کہا کہ "راجستھان میں اچھی حکمرانی کے لئے کام کریں گے اورعوام سے کئے گئے اپنے وعدوں کوپورا کریں گے"۔


وزیراعلیٰ اورنائب وزیراعلیٰ کے اعلان کے بعد سچن پائلٹ نے پریس کانفرنس میں کہا "عوام نے ہمیں جو بھی ذمہ داری ہے، اسے ہم پورا کریں گے۔ انتخابی منشورمیں جو بھی وعدے کئے گئے ہیں، ان کو فوری اثرسے نافذ کیا جائے گا"۔  انہوں نے یہ بھی کہا " میرا اوراشوک جی کا جادو پوری طرح چل گیا ہے۔ ہم اب حکومت بنانے جارہے ہیں۔ راہل گاندھی جی نے تینوں ریاستوں میں بی جے پی کی حکومت کو باہرکرنے کا کام کیا ہے"۔


سچن پائلٹ نے مزید کہا "کانگریس صدرراہل گاندھی اورممبران اسمبلی کو الیکشن کے لئے مبارکباد پیش کرنا چاہتا ہوں۔ اس الیکشن میں جو بھی مینڈیٹ کانگریس پارٹی کوملا ہے، وہ عوام کواطمینان دینے والا ہے"۔




کئی روز کی رسہ کشی کے بعد آج راہل گاندھی سے ملاقات کے بعد اشوک گہلوت اورسچن پائلٹ دونوں رضا مند ہوگئے۔ وہیں وزیراعلیٰ کی دوڑ میں چل رہے سچن پائلٹ پیچھے رہ گئے ہیں۔ وزیراعلیٰ کا نام فائنل کرنے کے لئے کانگریس صدرراہل گاندھی نے اشوک گہلوت اورسچن پائلٹ دونوں سے مسلسل ملاقات کی اوردونوں کورضامند کرنے کی پوری کوشش کی۔


واضح رہے کہ راجستھان اسمبلی میں مجموعی طورپر199 نشستیں ہیں، جس میں سے کانگریس کو100 سیٹوں پرجیت حاصل ہوئی ہے۔ اس سے قبل پانچ سالوں تک وسندھرا راجے ریاست کی وزیراعلیٰ تھیں، لیکن حالیہ انتخابات میں انہیں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ اب یہاں اشوک گہلوت حکومت قائم ہوگئی ہے۔ ساتھ ہی سچن پائلٹ ان کی نیابت کریں گے۔ اس سے قبل دونوں لیڈرراہل گاندھی سے ملاقات کرکے ان کی رہائش گاہ سے باہرآچکے ہیں۔ گزشتہ روزبھی راہل گاندھی نے الگ الگ دونوں لیڈروں سے ملاقات کی تھی۔ اس کے بعد خبریں آرہی تھیں کہ سچن پائلٹ کو نائب وزیراعلیٰ کی پیشکش کی ہے، جسے انہوں نے مسترد کردیا تھا۔ واضح رہے کہ راجستھان اسمبلی الیکشن میں جیت کا کا پرچم لہرانے اوراکثریت حاصل کرلینے کے باوجود کانگریس مشکل میں پھنسی ہوئی تھی۔ گزشتہ تین دنوں سے چل رہی رسہ کشی اوردرجنوں میٹنگ کے بعد بھی راجستھان کے وزیراعلیٰ کا نام طے نہیں ہوسکا تھا۔ سچن پائلٹ اوراشوک گہلوت دونوں ہی وزیراعلیٰ عہدے کے لئے دعویداری پیش کررہے تھے۔ ایسے میں کانگریس اعلیٰ کمان جمعرات کو بھی دیررات تک کوئی فیصلہ نہیں لے پایا۔ حالانکہ آج جمعہ کو اب اس کا باضابطہ اعلان کردیا جائے گا۔

Sources: Ashok Gehlot to be the next Chief Minister of Rajasthan. #RajasthanAssemblyelection2018 pic.twitter.com/ZAfDJ6QdMD

— ANI (@ANI) December 14, 2018

بدھ کو راجستھان کانگریس کے سینئرلیڈر اشوک گہلوت، سچن پائلٹ، کے سی وینوگوپال اوراویناش پانڈے نے گورنرسے ملاقات کی اورحکومت بنانے کا دعویٰ پیش کیا۔ حالانکہ وزیراعلیٰ کا نام طے نہیں ہوسکا تھا۔ اس کے لئے بدھ صبح 11 بجے کانگریس ممبران اسمبلی کی میٹنگ ہوئی۔ میٹنگ میں متفقہ طورپریہ تجویزمنظورکی گئی کہ وزیراعلیٰ کے نام کا حتمی اعلان کانگریس صدرراہل گاندھی کریں گے۔
First published: Dec 14, 2018 03:29 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading