اپنا ضلع منتخب کریں۔

    تاج محل کےاحاطےمیں نمازکی ادائیگی سے متعلق ویڈیو وائرل! آرکیالوجیکل سروےآف انڈیا کرےگاجانچ

    تاج محل (فائل فوٹو)

    تاج محل (فائل فوٹو)

    انھوں نے کہا کہ تاہم ویڈیو کی صداقت کے بارے میں کوئی یقین نہیں ہے، کیونکہ تاج محل میں ہمارے کسی بھی عملے نے ایسا ہوتا نہیں دیکھا۔ میں اتوار کے روز بھی تاج محل کے احاطے میں موجود تھا لیکن مجھے ایسا کوئی واقعہ دیکھنے کو نہیں ملا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Jammu | Hyderabad | Lucknow | Karnal
    • Share this:
      آرکیالوجیکل سروے آف انڈیا (ASI) اتوار یعنی 20 نومبر کو وائرل ہونے والے ایک ویڈیو کی صداقت کی تحقیقات کرے گا، جس میں مبینہ طور پر ایک شخص کو تاج محل کا احاطہ میں واقع باغیچے کے علاقے میں ایک خاتون کے ساتھ بیٹھ کر نماز پڑھتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ اے ایس آئی کے آگرہ سرکل کے سپرنٹنڈنگ ماہر آثار قدیمہ راج کمار پٹیل نے کہا کہ ایک مبینہ ویڈیو وائرل ہو رہی ہے جس میں ایک شخص کو اس علاقے میں نماز پڑھتے ہوئے دیکھا گیا ہے جسے تاج محل کا احاطہ کہا جاتا ہے۔ تاہم ویڈیو کی صداقت کے بارے میں کوئی یقین نہیں ہے، کیونکہ تاج محل میں ہمارے کسی بھی عملے نے ایسا ہوتا نہیں دیکھا۔ میں اتوار کے روز بھی تاج محل کے احاطے میں موجود تھا لیکن مجھے ایسا کوئی واقعہ دیکھنے کو نہیں ملا۔

      اس کے باوجود ہم اس معاملے کی جانچ کر رہے ہیں کیونکہ تاج محل میں نماز ادا کرنے پر پابندی ہے اور یہ صرف تاج محل کے احاطے میں موجود مسجد کے احاطے میں ہے جہاں ہر جمعہ کو نماز ادا کی جاتی ہے اور وہ بھی تاج محل کے آس پاس کے مقامی لوگوں کے لیے مختص ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 


      انہوں نے مزید کہا کہ ہم اپنی سیکورٹی چیک کو بھی مضبوط کر رہے ہیں خاص طور پر ان دنوں جب مہمانوں کا ٹرن آؤٹ معمول سے کہیں زیادہ ہوتا ہے تاکہ تاج محل کے احاطے میں اس طرح کے واقعات کو روکا جا سکے۔ دائیں بازو کے ہندو کارکنان اس طرح کے واقعات کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں کیونکہ ان کا دعویٰ ہے کہ تاج محل اصل میں تیجو محلیا نامی شیو مندر تھا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: