LIVE NOW

لائیو: سرکاری اعزاز، "واجپئی امر رہے" کے نعروں اورنم آنکھوں کے ساتھ سابق وزیراعظم اٹل بہاری واجپئی کی آخری رسوم ادا

سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کی جمعہ کے روزم شام پانچ آخری رسوم اسمرتی استھل پرسرکاری اعزاز کے ساتھ ادا کردی گئی۔

news18urdu.com | August 17, 2018, 6:25 PM IST
facebook Twitter Linkedin
Last Updated August 17, 2018
auto-refresh

Highlights

Load More
سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کی آخری رسوم پورے  سرکاری اعزاز کے ساتھ شام 4 بجے ادا کی جائیں گی۔ ان کے جسد خاکی کو آئی ٹی او ، دہلی گیٹ شانتی ون چوک ہوتے ہوئے اسمرتی استھل لا جا رہاہے۔ سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کی آخری رسوم میں ہزاروں کی تعدا میں لوگ شامل ہیں۔دین دیال مارگ سے ہوتے ہوئے ان کا جسد خاکی اسمرتی استھل لے جایا جارہا ہے۔ واجپئی کے اس آخری سفر میں جس گاڑی میں واجپئی کا جسد خاکی ہے اس کے پیچھے پیچھے پی ایم مودی اور امت شاہ بھی پیدل چل رہے ہیں۔  بی جے پی ہیڈ کوارٹر سے اسمرتی استھ کی دوری تقریبا 4 کلو میٹر ہے۔
ہندستانی سیاست کے قد آور لیڈروں میں شمار ہونے والے سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کا طویل علالت کے بعد جمعرات کو آل انڈیا انسٹیٹیوٹ (ایمس) میں انتقال ہو گیا۔واجپئی نے  93 سال کی عمر میں دنیا سے رخصت لے لی ۔ وہ کئی برسوں سے بیمار چل رہے تھے۔انہوں نے بحران کے کئی مواقع پر ملک کو قیادت بخشی  اور سیاست کو آگے بڑھاتے ہوئے بخوبی اتحادی حکومت چلائی۔سابق وزیر اعظم کی آخری رسوم کے مد نظردہلی راجسھانی کے کئی راستے جمعے کو بند رہیں گے۔واجپئی کی آخری رسوم آج ، دہلی کی 25 سڑکیں بند ، 20،000 سکیورٹی اہلکا ر تعینات جمعے کی شام چار بجے راشٹریہ اسمرتی استھل  پر ان کی آخری رسوم کو ادا کیا جائے گا۔جمعہ کی صبح 8 بجے سے کرشنا مینن مارگ ، سنہری باغ روڈ ، تغلق روڈ ، اکبر روڈ ، تیس جنوری مارگ ، مان سنگھ روڈ ، بھگوان داس روڈ ، شاہ جہاں روڈ اور سکندرا روڈ عام لوگوں کی آمدو رفت کیلئے بند رہیں گے۔ پولیس نے کہا کہ ڈی ڈی یو مارگ ، آئی پی مارگ ، ی ایس جی مارگ ( تلک برج سے دہلی گیٹ ) ، جے ایل این مارگ ، ( راج گھاٹ سے دہلی گیٹ ) بھی بند رہیں گے۔
ایمس کے مطابق سابق وزیر اعظم کا انتقال جمعرات کو شام پانچ بج  کر پانچ منٹ پر ہوا۔ اسپتال کے مطابق گزشتہ 36 گھنٹے سے ان کی حالت مسلسل بگڑتی جارہی تھی اور انہیں لائف سپورٹ سسٹم پر رکھا گیا تھا۔ تمام کوششوں کے باوجود انہیں بچایا نہیں جا سکا۔ انہیں گزشتہ 11 جون کو ایمس میں بھرتی کیا گیا تھا۔

اٹل بہاری واجپئی کے انتقال کی خبر سنتے ہی پورا ملک غم میں ڈوب گیا۔

 



corona virus btn
corona virus btn
Loading