உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    راجیہ سبھا میں پاریکر اور سبرامنیم سوامی کو گھیرنے کی تیاری میں کانگریس

    نئی دہلی : آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے میں راجیہ سبھا میں بحث کے دوران بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی اور وزیر دفاع منوہر پاریکر پر سفید جھوٹ بولنے کا الزام لگاتے ہوئے کانگریس آج راجیہ سبھا میں ان کے خلاف استحقاق کی خلاف ورزی کا نوٹس دے گی ۔

    نئی دہلی : آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے میں راجیہ سبھا میں بحث کے دوران بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی اور وزیر دفاع منوہر پاریکر پر سفید جھوٹ بولنے کا الزام لگاتے ہوئے کانگریس آج راجیہ سبھا میں ان کے خلاف استحقاق کی خلاف ورزی کا نوٹس دے گی ۔

    نئی دہلی : آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے میں راجیہ سبھا میں بحث کے دوران بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی اور وزیر دفاع منوہر پاریکر پر سفید جھوٹ بولنے کا الزام لگاتے ہوئے کانگریس آج راجیہ سبھا میں ان کے خلاف استحقاق کی خلاف ورزی کا نوٹس دے گی ۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے میں راجیہ سبھا میں بحث کے دوران بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی اور وزیر دفاع منوہر پاریکر پر سفید جھوٹ بولنے کا الزام لگاتے ہوئے کانگریس آج راجیہ سبھا میں ان کے خلاف استحقاق شکنی کا نوٹس دے گی ۔ اے آئی سی سی نے یہ اعلان بھی کیا کہ پارٹی امریکی ویب سائٹ ڈبليوڈبليوڈبليو ڈاٹ پی جی یو آر یو ڈاٹ کام  کے خلاف بھی ہتک عزت کا مقدمہ درج کرائے گی ، جس کے مواد کا استعمال سوامی نے راجیہ سبھا کی بحث میں کیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ یہ ویب سائٹ سنگھ پریوار سے وابستہ ہے۔

      موجودہ پارلیمنٹ سیشن میں آج راجیہ سبھا کی کارروائی کا آخری دن ہے ۔ کانگریس کے ترجمان جے رام رمیش نے کہا کہ سوامی اور پاریکر نے لوگوں کے سامنے فریب کا جال بن کر پارلیمنٹ میں مکمل طور جھوٹ بولا ۔ انہوں نے دعوی کیا کہ وزیر دفاع نے لوک سبھا میں جن دستاویزات کی حوالہ دیا ، وہ اٹلی کی عدالت کا فیصلہ نہیں تھا ۔

      اٹلی کی عدالت کے فیصلے میں کچھ بھی نہیں ہونے کا دعوی کرتے ہوئے رمیش نے دعوی کیا کہ فیصلے میں کانگریس قیادت کے خلاف کوئی الزام نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ جھوٹ ہے کہ اطالوی عدالت کے فیصلے میں کانگریس قیادت کی جانب اشارہ کیا گیا ہے ۔ رمیش نے کہا کہ سوامی نے بے بنیاد الزامات لگائے ہیں ۔ انہوں نے کہا تھا کہ وہ اٹلی کے فیصلے کا بغور مطالعہ کر رہے ہیں۔
      First published: