ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کیا آگسٹا سودے میں کسی کانگریسی نے بھی لی ہے رشوت؟ بی جے پی

نئی دہلی۔ آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودا معاملے میں اٹلی کی عدالت کے فیصلے کے مدنظر کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے آج اس وقت کے وزیر دفاع اے کے انٹونی سے پوچھا کہ کیا رشوت لینے والوں میں کانگریس کا کوئی لیڈر بھی شامل ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Apr 26, 2016 08:17 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کیا آگسٹا سودے میں کسی کانگریسی نے بھی لی ہے رشوت؟ بی جے پی
نئی دہلی۔ آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودا معاملے میں اٹلی کی عدالت کے فیصلے کے مدنظر کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے آج اس وقت کے وزیر دفاع اے کے انٹونی سے پوچھا کہ کیا رشوت لینے والوں میں کانگریس کا کوئی لیڈر بھی شامل ہے۔

نئی دہلی۔  آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودا معاملے میں اٹلی کی عدالت کے فیصلے کے مدنظر کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے آج اس وقت کے وزیر دفاع اے کے انٹونی سے پوچھا کہ کیا رشوت لینے والوں میں کانگریس کا کوئی لیڈر بھی شامل ہے۔ بی جے پی کے سینئر لیڈر روی شنکر پرساد نے یہاں پارٹی کی معمول کی بریفنگ میں کہا کہ مسٹر انٹونی نے مارچ 2013 میں وزیر دفاع رہتے ہوئے خود کہا تھا کہ آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے میں بدعنوانی ہوئی ہے اور اس میں رشوت بھی لی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اب اٹلی کی عدالت نے اپنے فیصلے میں اس سودے میں بدعنوانی کی تصدیق کی ہے اور ساتھ ہی یہ بھی کہا ہے کہ ہندوستانی افسران کے پاس بھی پیسہ پہنچا ہے ۔ اس معاملے میں فضائیہ کے سابق سربراہ ایس پی تیاگی کا نام بھی آیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ عدالت نے آگسٹا ویسٹ لینڈ اور فنمیکونیکا کے افسران کو سزا بھی سنائی ہے۔


انہوں نے کہا کہ رشوت دینے والوں کو تو سزا مل گئی لیکن رشوت لینے والے خاموش کیوں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب مسٹر انٹونی نے خود ہی کہا ہے کہ اس معاملے میں بدعنوانی ہوئی ہے اور رشوت بھی لی گئی ہے تو ان سے سیدھا سوال ہے کہ کیا رشوت لینے والوں میں کوئی کانگریسی لیڈر بھی شامل ہے ۔ بی جے پی نے مطالبہ کیا کہ مسٹر انٹونی اس معاملے میں پوزیشن واضح کریں۔ یہ پوچھے جانے پر کہ رشوت لینے والوں کے نام عدالت کے فیصلے میں ہیں تو بی جے پی یہ نام کیوں نہیں لے رہی ہے، مسٹر پرساد نے کہا کہ بات نکلے گی تو دور تک جائے گی۔


بی جے پی لیڈر نے کہا کہ سی بی آئی اس معاملے کی انکوائری کررہی ہے۔ کچھ لوگوں کے خلاف غیر ضمانتی وارنٹ بھی جاری کئے گئے ہیں لیکن اس وقت کی کانگریس کی قیادت والی حکومت نے رازداری کے نام پر رکاوٹ ڈالی ۔ انہوں نے کہا کہ اب سی بی آئی اور انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ دونوں ہی اپنی سطح پر اس کی جانچ تیزی سے کررہے ہیں۔

First published: Apr 26, 2016 08:15 PM IST