உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    طاق اورجفت فارمولہ : دہلی والوں کو ہوسکتی ہے مزید پریشانی ، آٹو والوں کا پیر کو ہڑتال کا اعلان

    نئی دہلی : دارالحکومت میں طاق اور جفت فارمولہ کے دوسرے مرحلے کا نفاذ ہوچکا ہے، جبکہ اپلی کیشن پر مبنی کیب سروس کی مخالفت میں آٹو اور ٹیکسی تنظیم کے ایک گروپ نے پیر کو ہڑتال کا اعلان کیا ہے ۔

    نئی دہلی : دارالحکومت میں طاق اور جفت فارمولہ کے دوسرے مرحلے کا نفاذ ہوچکا ہے، جبکہ اپلی کیشن پر مبنی کیب سروس کی مخالفت میں آٹو اور ٹیکسی تنظیم کے ایک گروپ نے پیر کو ہڑتال کا اعلان کیا ہے ۔

    نئی دہلی : دارالحکومت میں طاق اور جفت فارمولہ کے دوسرے مرحلے کا نفاذ ہوچکا ہے، جبکہ اپلی کیشن پر مبنی کیب سروس کی مخالفت میں آٹو اور ٹیکسی تنظیم کے ایک گروپ نے پیر کو ہڑتال کا اعلان کیا ہے ۔

    • Agencies
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : دارالحکومت میں طاق اور جفت فارمولہ کے دوسرے مرحلے کا نفاذ ہوچکا ہے، جبکہ اپلی کیشن پر مبنی کیب سروس کی مخالفت میں آٹو اور ٹیکسی تنظیم کے ایک گروپ نے پیر کو ہڑتال کا اعلان کیا ہے ۔ ہڑتال سے قومی راجدھانی کے مسافروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ۔

      دہلی آٹوركشا یونین اور دہلی پردیش ٹیکسی یونین کے جنرل سکریٹری راجندر سونی نے بتایا کہ اپلی کیشن پر مبنی کیب سروس کی مخالفت میں پیر کو دارالحکومت کی سڑکوں پر آٹو اور کالی- پیلی ٹیكسیاں نہیں چلیں گی ۔ سونی نے کہا کہ عام آدمی پارٹی کی حکومت نے اب تک آٹوركشا کے 10000 نئے پرمٹ جاری نہیں کئے ہیں ، جنہیں پرمٹ کی تقسیم میں مبینہ بے ضابطگیوں کی وجہ سے ملتوی کردیا گیا تھا ۔

      انہوں نے کہا کہ حکومت ایک طرف تو پبلک ٹرانسپورٹ کو مضبوط کرنے کی بات کہہ رہی ہے، لیکن دوسری طرف اس نے ابھی تک اٹوركشا کے لئے 10000 نئے پرمٹ جاری نہیں کئے ہیں ۔ اس کے علاوہ ہم ایپ پر مبنی ٹیکسی بند کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں ، کیونکہ ان کا چلنا غیر قانونی ہے ۔ انہوں نے ہماری روزی روٹی چھین لی ہے ۔

      سونی نے کہا کہ جب ہم نے 14 مارچ کو دہلی کے وزیر ٹرانسپورٹ گوپال رائے سے ملاقات کی تھی ، تب انہوں نے 15 دنوں کے اندر ہمارا مطالبہ پورا کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی ، لیکن حکومت نے اس سلسلے میں ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے۔  غور طلب ہے کہ دارالحکومت میں فی الحال 13000 کالی پیلی ٹیکسیاں اور تقریبا 81000 آٹوركشا چل رہے ہیں ۔

      اگر اٹوركشا اور ٹیکسی والے اس ہڑتال پر جاتے ہیں ، تو دہلی کے مسافروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے، کیونکہ دارالحکومت میں اس دوران طاق اور جفت فارمولہ نافذ رہے گا ۔
      First published: